پاکستانتازہ ترین

ہتھیارڈالنے،آئین ماننےوالوں سےہی مذاکرات ہونگے،وزیراعظم کادوٹوک بیان

اسلام آباد (بیوروچیف) وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کا کہنا ہے کہ پاکستان فوج اور عوام پر حملے کرنے والے اسلام اور ملک کے دشمن ہیں، مذاکرات اور بات چیت صرف ہتھیار پھیکنے والوں اور آئین پاکستان تسلیم کرنے والوں سے ہی ہونگے۔ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کے زیر صدارت مسلم لیگ ن کی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس جاری ہے، اجلاس سے خطاب میں وزیراعظم نے دو ٹوک الفاظ میں اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان فوج اور عوام پر حملے کرنے والے ملک اور اسلام کے دشمن ہیں، قانون کی حکمرانی حکومت کی اولین ترجیح ہے، مذاکرات صرف ان لوگوں سے کیے جائیں گے، جو آئین پاکستان کو تسلیم کریں گے اور ہتھیار پھیکنیں گے۔ وزیراعظم نوازشریف کا مزید کہنا تھا کہ حکومت عوام کے جان و مال کے تحفظ کی ذمہ داری پوری کرے گی، ملک کو اس وقت شدید سیکیورٹی خطرات کا سامنا ہے، ملکی آئین کو تسلیم کرنے والوں کیساتھ بات چیت کیلئے تیار ہیں۔ وزیراعظم نے اراکین کو کالعدم طالبان سے مذاکرات یا آپریشن کے حوالے سے اعتماد میں لیا،اجلاس میں تمام وفاقی وزراء،اراکین قومی اسمبلی شریک ہوئے۔ واضح رہے کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کی جانب سے آج قومی اسمبلی میں اہم اعلان متوقع ہے، جس میں وزیراعظم دہشت گردی کے حوالے سے ایوان کو اعتماد میں لیں گے، ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ کالعدم طالبان سے مذاکرات یا آپریشن کا فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی، جب کہ پارلیمنٹ کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف متفقہ قرارداد بھی منظور کئے جانے کا امکان ہے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!