تازہ ترینعلاقائی

حکومت بھارتی ہٹ دھرمی اورغنڈا گردی کا فوری نوٹس لے،کسان بورڈ پاکستان

لاہور (پریس ریلیز) مرکزی صدر کسان بورڈ پاکستان سردار ظفر حسین خان نے بھارت کی طرف سے دریائے چناب کے پانی کو روکنے اور پاکستانی زراعت کو پہنچنے والے ممکنہ نقصانات پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بھارت کو آبی جارحیت سے روکا جائے اور اسے بین الاقوامی معاہدوں کی پابندی پر مجبور کیا جائے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت مذاکرات کے ذریعے متنازعہ معاملات کا حل ضرور ڈھونڈے کیوں کہ دنیا بھر میں یہی طریقہ قابل ستائش جانا جاتا ہے۔ جنگ و جدل سے مسائل نہ پہلے حل ہوئے اور نہ ہی آئندہ حل ہوں گے مگر اس بیماری کا کیا علاج کیا جائے جس میں ہمارا ہمسایہ ملک مبتلا ہے، اس نے پاکستانی دریاؤں کو ندی نالوں میں تبدیل کر دیا اور ہماری زراعت جو پہلے ہی نامساعد حالات کی وجہ سے زبوں حالی کا شکار ہے اسے مزید تباہی سے ہمکنار کرنے کے لیے کبھی جہلم اور کبھی چناب کا پانی روک کر ناقابل تلافی نقصان پہنچایا جا رہا ہے۔ زراعت اور پانی کی اہمیت کیا ہے یہ دنیا کے اس امیر ترین ملک سے پوچھیں جس نے حال ہی میں پاکستان سے ایک لاکھ ایکڑ زرعی زمین لیز پر لینے کے لیے درخواست کی ہے اور اس کے عوض اڑھائی کروڑ بیرل تیل یومیہ دینے کا وعدہ کیا ہے۔ ایک ہم ہیں کہ اللہ تعالیٰ کی عطا کردہ اس نعمت سے بھرپور استفادہ نہیں کر رہے، کہیں ایسا نہ ہو اس ناشکری پر ہمارے اوپر عذاب نازل کر دیا جائے۔ مرکزی صدر کسان بورڈ نے چیف جسٹس پاکستان سے اپیل کی کہ وہ اس اہم قومی اہمیت کے مسئلے پر سوموٹو ایکشن لیں اور حکومت پاکستان کو مجبور کیا جائے کہ وہ بھارتی آبی جارحیت کے حوالے سے سفارتی اور عدالتی کارروائی کرے اور زراعت جس سے پاکستان کی بقا ہے اسے تباہ ہونے سے بچایا جائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button