تازہ ترینعلاقائی

جعفرآباد: بگٹی قبائل کے مسلح گروپوں میں خونی جھڑپ،دو خواتین,بچوں سمیت 11افراد جاں بحق

ڈیرہ مرادجمالی(نامہ نگار)جعفرآباد میں بگٹی قبائل کے مسلح گروپوں میں خونی جھڑپ،دو خواتین اور بچوں سمیت 11افراد جاں بحق جبکہ 8افراد زخمی ہوگئے،جاں بحق ہونے والوں میں کالعدم تنظیم کے دو افراد بھی شامل ہیں وزیر داخلہ نے تصدیق کردی،علاقے میں شدید کشیدگی کے باعث عام دیہاتی محصور ہوکر رہ گئے۔جعفرآباد کے تھانہ آر ڈی 238کے نواحی گاؤں درمحمد ہوتکانی میں اتوار کی درمیانی شب دیر سے نامعلوم مسلح افراد نے ایک گھر پر دھاوا بول کر جدید اور خودکار اسلحہ سے فائرنگ کرنے کیساتھ گھر پر راکٹ لانچر کے گولے بھی فائر کیے جسکے نتیجے میں مالک مکان امام بخش ،خواتین میں میر زادی ،امیراں اور کمسن بچوں 6سالہ زرینہ اور 14سالہ عزیز موقع پر جاں بحق ہوگئے۔حملہ آوروں کے حملے کے بعد بگٹی قبیلے کے مسلح افراد نے دودا ٹبہ کے نواحی گاؤں عبداللہ ہوتکانی کے مقام پر حملہ آوروں کا راستہ روک کر جوابی کارروائی کی جس میں بھی خودکار اسلحہ سمیت مارٹر گولے بھی فائر کیے گئے جسکے باعث گزی خان،اسماعیل،خلیفہ ،بھورا،شیرو اور مدد علی بھی جاں بحق ہوگئے جبکہ آٹھ افراد زخمی ہوئے ہیں دونوں مسلح گروپوں کے مابین کئی گھنٹوں تک فائرنگ کا تبادلہ ہوا جسکے باعث علاقے میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا اور عام دیہاتی اپنے گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے۔بگٹی قبیلے کے دو مسلح گروپوں میں خونی جھڑوپوں کی اطلاع کے باوجود جعفرآباد کی پولیس اور سیکیورٹی فورسز جائے وقوع پر نہیں پہنچی دو طرفہ فائرنگ کے دوران جاں بحق ہونے والوں کی لاشیں اور زخمی جائے وقوع پر پڑے رہے تاہم فائر بندی کے بعد دونوں فرقین اپنے زخمی ساتھیوں اور جاں بحق ہونے والوں کی لاشیں اٹھا کر لے گئے۔واقعہ کے بارے میں وزیر داخلہ بلوچستان میر سرفراز بگٹی نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ کالعدم تنظیم بی آر اے کے افراد نے مقامی دیہاتیوں کے گاؤں پر دھاوا بول کر فائرنگ کی اور راکٹ لانچر کے گولے فائر کیے جس میں ایک ہی خاندان کے پانچ افراد جاں بحق ہوئے اور جوابی کارروائی میں کالعدم تنظیم کے دو افراد سمیت دیگر دیہاتی بھی ہلاک ہوئے ہیں ۔بتایا جارہا ہے کہ ہلاک ہونے والے شیرو اور مدد علی کا تعلق کالعدم تنظیم بی آر اے سے ہے۔اتوار کی دوپہر کو پولیس اور سیکیورٹی فورسز نے علاقے کا محاصرہ کر لیا تاہم کسی قسم کی گرفتاری عمل میں آنے کی تصدیق نہیں ہوئی

یہ بھی پڑھیں  وزیراعظم کو اپنے ہی مشورے پر عمل کرتے ہوئے استعفیٰ دے دینا چاہیے۔ بلاول بھٹو

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker