تازہ ترینعلاقائی

نارووال: بغاوت کا خاتمہ بزور قوت کرنا اسلام کا طریقہ ہے ۔پیرتبسم اویسی

نارووال (پریس ریلیز)آل رسول ﷺ کی خدمات اسلام تا قیامت یاد رکھی جائیں گی ۔محبت آل محمد ﷺ عین ایمان ہے ۔ پنجتن پاک کے فضائل کو تمام صحابہ کرام رضی اللہ عنہم نے تسلیم فرمایا ۔ درِ فاطمہ رضی اللہ عنہا سے درویش و صوفی کو آج بھی ولایت کی خیرات ملتی ہے ۔نبی کریم ﷺ کا آیتِ تطہیر کے نزول کے بعد مسلسل 40روز تک کاشانۂ فاطمہ رضی اللہ عنہا پر تشریف لے جا کر سلام و نماز کا کہنا عظیم عظمت کا اظہار ہے ۔آج صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کا نام لے کر محبینِ آل رسول ﷺ کو قتل کرنے کی روش خارجیوں کی ہے ۔صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اور اہل بیت نبوت میں کمال درجہ کی الفت و احترام کا رشتہ تھا۔ پاکستان میں قیام امن و فروغِ رواداری کے لئے بھی اُسی جذبہ کو فروغ دینا ہو گا۔ طالبان کی طرف سے جنگ بندی کا اعلان اور حکومت کا اُن کے خلاف کاروائی معطل کرنا بہتر فیصلہ ہے ۔مگر جو طالبان مذاکرات کرنا چاہیں اُن سے کئے جائیں اور جو ہتھیار اٹھائیں اُن سے اُنہی کی زبان میں بات کی جائے ۔ حکومت تحفظ ناموسِ صحابہ رضی اللہ عنہم و آل رسول آرڈیننس منظور کر کے قیام امن کی راہ ہموار کرے ۔ ان خیالات کا اظہار قائد تحریک اویسیہ پاکستان علامہ پیر محمد تبسم بشیر اویسی نے جوشن جٹاں میں 8ویں سالانہ عظمت پنجتن پاک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا حضرت علی المرتضیٰ رضی اللہ عنہ باب مدینۃ العلم ہیں ۔ حضرت فاطمۃ الزہراہ رضی اللہ عنہا نبی کریم ﷺ کے جگر کا ٹکڑا ہیں ۔ حضرت امام حسن و حسین رضی اللہ عنہما جتنی نوجوانوں کے سردار ہیں ۔ ملتِ اسلامیہ کا فریضہ ہے کہ جن کا جیسا درجہ ہمارے نبی کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا مانا جائے ۔انہوں نے ملکی حالات پر گفتگو کرتے ہوئے کہا بغاوت کا خاتمہ بزور قوت کرنا اسلام کا طریقہ ہے ۔طالبان نے ملک و قوم کو لاشوں کا تحفہ دیا مگر حکمران ابھی بھی حلم و صبر سے کام لے کر امن کی کاوشیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔طالبان کے جنگ بندی کے اعلان پر بھی کڑی نظر رکھی جائے ۔ اس موقعہ پر چوہدری محمد بابر بنک مینجر ، قاری محمد ارشد اویسی، حافظ محمد ذیشان ،ڈاکٹر محمد سجاد ،سید سعادت شاہ ،عبد المجید شاہ ،حافظ دلشاد اویسی اور دیگر نے بھی ہدیہ عقیدت پیش کیا ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!