تازہ ترینعلاقائی

سرائے عالمگیر:حکومت اوراپوزیشن افراتفری کی بجائے پاک فوج کی پشت پناہی کریں،پیرتبسم اویسی

سرائے عالمگیر(حافظ عرفان سے)استحکام پاکستان کیلئے تعلیمات صوفیاء کا فروغ ضروری ہے ۔بدامن، دہشت گردی ،قتل و لاقانونیت، ملک و ملت کو شدت پسندی کی طرف دھکیلنا قرآن و سنت اور افکار اولیاء کے منافی ہے ۔ تمام صوفیاء کے افکار و نظریات کا مرکز و محور عشقِ رسول ﷺ ہے ۔دنیا ، قبر و حشر میں کامیابی بھی محبت رسول ﷺ کو دل میں بسانے اور سنتِ رسول ﷺ کو اپنے کردار پر نافذ کرنے میں ہی ہے ۔ بزرگان موہڑہ شریف نے امن کے چراغ روشن کر کے صفائے قلب پر خصوصی توجہ دی ۔ دنیا میں سب سے زیادہ صدائے اللہ ھو کی بازگشت فیضان موہڑہ شریف کا واضح ثبوت ہے ۔حکومت او راپوزیشن افراتفری کی بجائے پاک فوج کی پشت پناہی کریں تاکہ وطن عزیز امن کا گہوارہ بنے ۔پاکستان بنانے والے علماء و مشائخ پاک فوج کے آپریشن ضرب و عضب کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور ہمیشہ پاک فوج کی حمایت کرتے رہیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار قائد تحریک اویسیہ پاکستان علامہ پیر محمد تبسم بشیر اویسی نے آستانہ عالیہ گہیال شریف پر خواجگان گہیال شریف کے سالانہ قدیمی عرس مبارک کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔عرس مبارک کی صدارت والئ موہڑہ شریف شہزادہ پیر عمر زیب نقشبندی نے فرمائی جبکہ سر پرستی پیر فضل حسین مجددی، ڈاکٹر محمد عرفان بادشاہ اور صاحبزادہ اویس بادشا ہ نے کی ۔ صدارتی خطاب کرتے ہوئے شہزادہ پیر عمر زیب والئ موہڑہ شریف نے کہا جذبۂ عشقِ مصطفےٰ یء قرب خدا کی منازل طے کرواتا ہے ۔ عبادات کا مرکزی مقصد اور تصوف کا محور بھی جذبہ عشق مصطفےٰ ہے ۔اولیاء اللہ نے ہمیشہ عوام الناس کا رشتۂ غلامئ رسول ﷺ مضبوط بنایا ۔ خواجگانِ موہڑہ شریف اور خواجگان گہیال شریف نے شریعت و طریقت کو عمل و کردار پر نافذ رکھا ۔ آج خانقاہوں سے دروس عشقِ رسول ﷺ جاری ہونے کی اشد ضرورت ہے ۔ اس موقعہ پر صاحبزادہ محمدعاصم بشیر اویسی ،مولانا محمد صدیق، مولانا حافظ محمد عرفان اسلام اویسی ، محمد شہباز،حافظ محمد دلشاد اویسی او ر دیگر نے بھی خطاب و ہدیہ نعت پیش کیا

یہ بھی پڑھیں  حکومت نے سعد رضوی کی نظر بندی میں توسیع کی درخواست واپس لے لی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker