تازہ ترینعلاقائی

راولپنڈی اسلام آباد اور بین الاضلاع کے درمیان چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ میں \”کوائف رجسٹرڈ \” لازمی قرار

راولپنڈی (ڈپٹی بیورو چیف)راولپنڈی ٹریفک پولیس نے راولپنڈی اسلام آباد اور بین الاضلاع کے درمیان چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ میں \”کوائف رجسٹرڈ \” لازمی قرار دیدیا ہے ‘رجسٹرڈ میں پبلک سروس وہیکلز کی تفصیلات ‘ فٹنس سرٹیفکیٹ ‘چالان کی شرح ‘تاریخ ‘وجوہات چالان ‘روٹ مکمل کرنے کے بارے میں ہر چکر میں تفصیلات درج کرنا ضروری ہونگی ‘ٹریفک پولیس کے سیکٹر انچارج یومیہ کی بنیاد پر رجسٹرڈ چیک کریں گے نامکمل کوائف درج ہونے پر بھاری جرمانے عائد کیئے جائیں گے اس حوالے سے چیف ٹریفک آفیسر راولپنڈی ایس ایس پی شعیب خرم جانباز نے بتا یا کہ پبلک سروس گاڑیوں کے لیے ایک کوائف رجسٹرڈ لازمی قرار دیا گیا ہے ‘ہر ڈرائیور کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اس رجسٹرڈ میں یومیہ کی بنیاد پر لگائے جانے والے ہر چکر کی تفصیلات ‘ گاڑی کا ماڈل‘ انجن نمبر ‘چیسس نمبر ‘ ڈرائیور کا نام ‘ولدیت ‘ایڈریس ‘گاڑی کے فٹنس سرٹیفکیٹ کے اجراء اور اختتام کی تاریخ ‘ چالان کی تاریخ ‘شرح ‘وجوہات ‘روٹ کے آغاز اور اختتام کا وقت درج کریں سی ٹی او راولپنڈی نے بتا یا کہ اس اقدام کا مقصد دور ان سفر کسی بھی قسم کی چیکنگ کے دوران ڈرائیوروں کے ساتھ بحث کی بجائے رجسٹرڈ سے معلومات چیک کرنا ‘روٹ مکمل کرانا ‘ کسی بھی حادثے کی صورت میں ڈرائیور اور کنڈیکٹر کے فرار ہونے پر فوری طور پر ناموں اور ایڈریس تک رسائی حاصل کرنا ہے انہوں نے کہ بتایا کہ یہ کوائف رجسٹرڈ یکم جنوری 2015سے ہر پبلک سروس وہیکلز کے پاس ہوں گے ‘متعلقہ ٹریفک پولیس سیکٹر کا انچارج کسی بھی وقت کوائف رجسٹرڈ چیک کرے گا ‘عدم موجودگی کی صورت میں پبلک ٹرانسپورٹ کے ڈرائیور اور مالکان کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی انہوں نے بتایا کہ پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر مری روڈ‘ مال روڈ ‘کچہری روڈ‘ ائیر پورٹ روڈ اور دیگر چھوٹے بڑے اندرون شہر کی پبلک ٹرانسپورٹ کے لیے یہ سسٹم نافذ ہوگا اس کے بعد اس کا دائر کار تحصیلوں اور اضلاع کے درمیان چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ تک بڑھا دیا جائے گا

یہ بھی پڑھیں  بلند وبانگ دعوے ۔۔۔۔۔۔ اوربدعنوانیوں کی بھرمار

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker