پاکستانتازہ ترین

طالبان طالبان نہیں ظالمان ہیں،الطاف حسین

کراچی(نمائندہ خصوصی)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے کہاہے کہ ایک اللہ، ایک رسول اور ایک قرآن کو ماننے والے آج تقسیم ہیں، آج فیصلہ ہو جانا چاہیے کہ عبادت گاہوں، بازاروں، مساجد اور فوجی تنصیبات پر حملہ کرنے والے مسلمان نہیں ہوسکتے۔ کراچی میں علما و مشائخ کے اجلاس سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کا مزید کہنا تھا کہ ملت اسلامیہ تباہی کا شکارہے،الله کاپیغام اورنبی صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات کوعام کرناہے،سرکاردوعالم نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیشہ امن کا پیغام دیا ہے۔ انہو نے کہا کہ عبادت گاہوں، بازاروں، مساجد اور فوجی تنصیبات پر حملہ کرنے والے مسلمان نہیں ہوسکتے، آج فیصلہ ہوجانا چاہیے کہ طالبان کو طالبان ہی کہہ کر پکارا جائے، دہشت گردی کرنے والےطالبان کوکوئی دہشت گرد نہیں کہتا،طالبان طالبان نہیں ظالمان ہیں،معصوموں کاقتل کرنے والےطالبان کے خلاف آواز اٹھائی جاسکتی ہے،ظالم کوظالم کہا جائے،طالبان کی کھل کر مخالفت کی جائے۔الطاف حسین نے کہا کہ پراناحاجی کیمپ میں جب آگ لگی میں پوری رات ایک ایک منٹ کی خبرلیتارہا،اب تک وزیراعلیٰ سندھ نےٹمبرمارکیٹ کادورہ نہیں کیا،آصف زرداری کابھی ٹمبرمارکیٹ متاثرین کیلئے اب تک افسوس کاپیغام نہیں آیا،ٹمبرمارکیٹ واقعےکی تحقیقات کرائی جائےکہ آگ لگی ہےیالگائی گئی ہے؟آج کل ایسےپاؤڈرمل رہےہیں جنھیں تیلی دکھائی جائےتوبہت تیزی سےآگ پھیلتی ہے،دیکھنا چاہیے کہ انارکلی یا ٹمبر مارکیٹ میں ایساکوئی کیمیکل تو استعمال نہیں ہوا، ابھی تک حیرت میں ہوں انارکلی پلازا کی ہر منزل میں 4سے 5منٹ میں آگ لگی۔ انہوں نے کہا کہ اللہ کےرسول صلی اللہ علیو وسلم نے اپنے آخری خطبے میں ہرطرح کا فرق مٹادیا،فوقیت پنجابی، سندھی، مہاجر ہونا نہیں۔ قائد متحدہ کا کہنا تھا کہ جنرل راحیل شریف کی قیادت میں بہادر افواج دہشت گردوں کاخاتمہ کررہی ہیں،ایک انتہا پسند گروپ کہتا ہے کہ لڑکیوں کااسکول جانامنع ہے،یہ انتہاپسندگروپ معصوم بچوں کوخون میں نہلاتاہےیہ کیسادین ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button