تازہ ترینعلاقائی

رائیونڈ: پاک ترک سکول کے زیر انتظام ISMOریاضی کے مضمون کا مقابلہ،پرچہ آؤٹ آف سلیبس -طلبہ مایوس

رائے ونڈ ( محمد افضل شاغف سے) پاک ترک سکو ل کے زیر انتظام ریاضی کے مضمون کے مقابلہ ISMO(Inter School Maths Olympiad)کے سوالیہ پرچے مکمل طور پر آؤٹ آف سلیبس ہونے کی وجہ سے طلبہ مایوسی کا شکار ۔ تفصیلات کے مطابق پاک ترک سکول کے دسویں ISMOریاضی کے مقابلہ میں لاہور کیمپس الرحمان چوک رائے ونڈ روڈ ٹھوکر نیاز بیگ جہاں رائے ونڈ اور گردو نواح کے بیشتر سکولوں کے ہزاروں بچوں نے مقابلہ میں حصہ لیا ۔مقابلہ میں شرکت کی شرائط کے مطابق طلبہ سے 600روپے فی طالب علم کے حساب سے انٹری فیس وصول کی گئی اور ہر سکول میں ایک باقاعدہ پرنٹ شدہ سلیبس مہیا کیا گیا ۔ سکولوں کے اساتذہ کرام نے عرق ریزیوں کے ساتھ سلیبس کے مطابق اپنے اپنے طلبہ کی تیاری کروائی اور دن رات ایک کر کے انہیں مقابلے کے قابل کیا ۔مورخہ 23نومبر 10بجے پیپر شروع ہوا ۔تمام کا تمام پیپر آؤٹ آف سلیبس دیا گیا ۔پانچویں جماعت کے طلبہ کو چھٹی جماعت کے سوالات دیے گئے اور چھٹی کے طلبا کو ساتویں کے ریاضی سے سوالات دیئے گئے ۔ ساتوں اور آٹھویں جماعتوں کے ساتھ بھی یہی سلوک کیا گیا ۔ علاوہ ازیں، دیہاتی علاقوں کے طلبہ کو آکسفورڈ جیسے مشکل ریاضی میں سے سوالات دے کر سنگین مذاق کیا گیا۔ سوالیہ پرچے دیکھنے پر طلبہ میں مایوسی کی لہر دوڑ گئی اور نتیجتاً وہ ان پرچوں کو حل کرنے میں ناکام رہے ۔امتحان کے دوران طلبا سے جیومیٹری باکس اور رف ورک کرنے والی خالی شیٹیں چھین لی گئیں جس کی وجہ سے انہیں جیومیٹری کا پورشن حل کرنے میں کافی دشواری پیش آئی۔ سوالیہ پرچے پر ہر سوال کے نیچے رف ورک کی غرض سے دی گئی خالی جگہ انتہائی کم ہونے کی وجہ سے طلبہ سوال کو مکمل حل نہ کر سکے جس سے ان کا کافی نقصان ہوا۔
مزید برآں امتحان میں کیلکو لیٹروغیرہ استعمال کرنے کی اجازت نہ ہونے کی وجہ سے طلبہ اپنے ساتھ کیلکولیٹر نہ لے کر گئے ۔لیکن جو طلبہ کیلکولیٹر لے گئے تھے وہ اسکا استعمال کر تے رہے جنہیں کسی نے منع نہ کیا۔ اسطرح دوسرے طلبہ کی حق تلفی ہوتی رہی۔ کمر�ۂ امتحان کاعملہ جن میں خصوصاً کیمرہ مین بچوں کو بار بار ڈسٹرب کرتا رہا جس سے ان کا کافی وقت ضائع ہوا ۔یاد رہے کہ یہ مقابلہ باقاعدہ حکومتِ پنجاب کی اجازت سے منعقد کیا گیا ہے ۔ بچوں کے والدین اور اساتذہ نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ یا تو ان کے بچوں کا دوبارہ سے سلیبس میں سے امتحان لیا جائے یا600روپے فی کس انٹری فیس واپس کی جائے کیونکہ یہ امتحان سراسر پیسے بٹورنے کا ایک فارمولہ ثابت ہوا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں  دیپالپور: ٹیوب ویل میں نہاتے ہوئے کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker