تازہ ترینعلاقائی

اوکاڑہ:نظریات کو تعصب پسند جنون سے نہیں ہرایا جاسکتا، بیگم شفیقہ سکندر

shafiqa skindarاوکاڑہ (نمائندہ خصوصی) حلقہ این اے 144 سے پی پی پی کی امیدوار برائے قومی اسمبلی بیگم شفیقہ سکندر اقبال نے کہا ہے کہ نظریات کو تعصب پسند جنون سے نہیں ہرایا جاسکتا، پیپلز پارٹی کے کارکن ہردور میں اپنی پارٹی سے مخلص رہے ہیں اِس لئے کوئی مائی کا لال اِسے توڑ نہیں سکا، آئیندہ عام اِنتخابات میں اوکاڑہ ایک بار پھر منی لاڑکانہ ثابت ہوگا۔جیت اور شکست میں قدرت کا بڑا ہاتھ ہے جس نے خلق خدا کی خدمت کو اپنا وطیرہ بنا لیااُسے کوئی نہیں ہرا سکتا۔ اِن خیالات کا اِظہاراُنہوں نے بے نظیر ڈگری کالج روڈ پر ایک بہت بڑے عوامی جلسہ سے خطاب کے دوران کیا۔بیگم شفقیہ سکندر اقبال نے کہا کہ پیپلز پارٹی کوئی حادثاتی جماعت نہیں ، یہ نظریاتی جماعت ہے جس کے چاہنے والے ذوالفقار علی بھٹو شہید کے فلسفے پر عمل کررہے ہیں اور جولوگ کسی نظریہ کے تحت جدوجہد کرتے ہیں کامیابی اُن کا مقدر بن جاتی ہے ۔ پیپلز پارٹی ہربار عوام کی بھرپور تائید سے جیتی ہے مگر اِسے بعض مواقع پر چمک اور دھاندلی کے بل بوتے پرعوام سے دُور رکھ کر جعلی فتح کے شادیانے بجائے گئے ہیں ۔ اَصغر خاں کیس کا فیصلہ سب کے سامنے ہیں ، اس کے حقائق قوم کے سامنے آچکے ہیں ۔ اگراس کے کرداروں کو قانون کی گرفت میں لیا جاتاتو دُودھ کا دُودھ اور پانی کا پانی ہوجاتا مگر اَفسوس سے کہنا پڑتاہے کہ یہاں پر اِنصاف کا دوہرا معیار قائم ہوچکاہے ۔ ہم عوام کی خدمت کا جذبہ لے کر ایک بار پھر میدان میں آئے ہیں اور میں اپنے خاوند راؤ سکندر اقبال مرحوم کے اُس مشن کو جاری رکھنا چاہتی ہوں جس کے تحت اُنہوں نے اپنی پوری زندگی عوامی اور فلاحی کاموں کے لئے سرف کردی ۔ میری یہ خوش قسمتی ہے کہ میں اُس شخص کی بیوہ ہوں جس کے احسان کا تذکرہ اوکاڑہ کی عوام زدوعام کررہی ہے ۔ اِس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پی پی حلقہ 190 سے صوبائی اسمبلی کے امیدوار و سابق صوبائی وزیر محنت وافرادی قوت پنجاب محمد اشرف خاں سوہنا نے کہا کہ ہم نے اوکاڑہ کی تعمیر وترقی میں مثبت کردار ادا کرتے ہوئے نئی تاریخ رقم کی ہے ، اوکاڑہ ہمیشہ پیپلز پارٹی کا گڑھ رہا ہے اور اِس بار بھی لوگ اُنہیں تیسری بار کامیابی سے ہمکنار کرکے ایک نیا ریکارڈ قائم کرینگے

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ : مچھر اور مکھیوں کی بہتات نے عوام کی زندگی اجیرن بنارکھی ہے . صدر "ماڈا" (رجسٹرڈ) محمد مظہر رشید چوہدری

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker