تازہ ترینعلاقائی

حکومت ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو پاکستان کی خدمت کرنے کا موقعہ دیں۔عابدحسین بودلہ

اوکاڑہ(پریس ریلیز)ڈاکٹر عبدالقدیر خان موومنٹ پاکستان کے مرکزی چیئرمین عابد حسین بودلہ اور سیکرٹری انفارمیشن قاسم علی نے کہا ہے کہ ہمارا پاکستان کی سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہم پاکستان کی ترقی وخوشحالی چاہتے ہیں اور ہم محسنِ پاکستان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی راہ نمائی میں ملک و قوم کو تعمیروترقی ممکن ہے ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے محسوس کیا کہ بھارت نے پانچ ایٹمی دھماکے کئے اور اس کے ساتھ ہی اس کے وزراء اور میڈیا یوں چیخ و پکار کرررہے تھے جیسے وہ پاکستان کو چند لمحوں میں چیر پھاڑ کے رکھ دیں گے اور آزاد کشمیر تو پکے ہوئے پھل کی طرح ان کی گود میں آن گرے گا مگر دنیا نے کھلی آنکھوں سے یہ منظر دیکھا کہ صرف دو ہی ہفتوں کے بعد پاکستان نے 6ایٹمی دھماکے کر کے نہ صرف بھارتی نیتاؤں کی نیندیں اڑادیں بلکہ ایٹم بم رکھنے والی اسلامی پہلی مملکت بننے پر پورے عالم اسلام میں خوشی کی لہر دوڑ گئی یہی وہ عظیم الشان کارنامہ تھا جس پر قوم نے اپنے محب وطن سپوت ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو \’\’محسنِ پاکستان\’\’کے لقب سے نوازا۔مگر عالم کفر کو پاکستان جیسے ملک کا ایٹمی طاقت بننا اور اس ایٹم بم کے خالق جناب ڈاکٹر عبدالقدیر خان کا ہیرو بننا کہاں گوارا تھا اسی لئے انہوں نے پہلے پاکستان پر حکمرانی کرنے والی اپنی کٹھ پتلیوں کے ذریعے اس عظیم انسان اور قوم کے محسن کو زلیل و رسوا کرنے اور اس کو گمنامی کے اندھیروں میں دھکیلنے کی کوشش کی اور اس کے بعد پاکستان میں ایک منصوبے کے تحت دہشتگردی کا عفریت پھیلا کر اس کو کمزور سے کمزور تر کرنے اور آخر کار اسے ناکام ریاست قراردلوا کر اس کے ایٹم بم کا کانٹا نکالنے کے در پے ہیں مگر تاحال اس کی یہ دونوں مکروہ سازشیں بری طرح ناکامی سے دوچار ہوچکی ہیں کہ ہماری پاک فوج اور آئی ایس آئی نے دشمن کی ہر سازش کو ناکامی سے دوچار کیا ہے اور دوسری جانب باوجود ڈاکٹر صاحب کے خلاف منفی پروپیگنڈے کے اے کیو خان اب بھی کروڑوں پاکستانیوں کے دلوں کی دھڑکن ہیں اور آج بھی جبکہ پاکستان غربت،بیروزگاری ،بدامنی اورخصوصاََ بدترین توانائی بحران سے دوچار ہے تو قوم کی نظریں ایک بار پھر اپنے قومی ہیروڈاکٹر عبدالقدیر خان پر مرکوز ہیں کہ وہ پاکستان کو ان تمام مسائل سے نکالنے میں بہترین کردار اداکر سکتے ہیں اے کیو خان موومنٹ کا مقصد یہی ہے کہ پاکستان کی اصل قوت یعنی نوجوان طبقہ کسی بھی قسم کی لسانی ،نسلی یا صوبائی تفریق کی بجائے صرف پاکستان کی ترقی کیلئے سوچیں اور برسراقتدار حکومت کو مجبور کریں کہ وہ ڈاکٹر صاحب کی خداد صلاحیتوں سے فائدہ اٹھائے خصوصاََڈاکٹر صاحب کو توانائی شعبے کا انچارج بنا کر انہیں توانائی بحران ختم کرنے کا ٹاسک دے کر اس مسئلے سے ہمیشہ کیلئے چھٹکارا حاصل کیا جاسکتا ہے جس کا ڈاکٹر صاحب نے اظہار بھی کیا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker