تازہ ترینعلاقائی

پھولنگر:فیکٹریوں اینٹوں کے بھٹوں سے اُٹھنے والے دھویں سے لوگ ٹی بی میں مبتلا ہیں۔ عوامی سروے

بھائی پھیرو(نامہ نگار) ٹی بی کے عالمی دن کے موقع پر صحافیوں کی ٹیم کا سروے ۔فیکٹریوں اینٹوں کے بھٹوں سے اُٹھنے والے دھویں سڑکو ں پر مٹی کی ٹرالیوں سے اُٹھنے والے گردو غبار اور ٹیکسٹائل ملوں سے اُڑنے والی روئی کی وجہ سے علاقے بھر میں سینکڑوں لوگ ٹی بی میں مبتلا ۔تفصیلات کے مطابق چوبیس مارچ ٹی بی کے عالمی دنکے موقع پر صحافیوں کی ایک ٹیم نے علاقے بھر میں ٹی بی کی بیماری کے پھیلنے کے لئے سروے کیا جس کے مطابق علاقے بھر میں جگہ جگہ قائم بھٹہ خشت کی چمنیوں سے اُٹھنے والے دھویں کے ارد گرد کی آ بادیوں میں درجنوں لوگ ٹی بی دمہ اور سانس کی بیماریوں میں مبتلا ہیں ۔ اس کے علاوہ علاقے میں قائم فیکٹریوں کی چمنیوں سے نکلنے والے دھویں اور سڑک پر مٹی کی ٹرالیوں سے اُڑنے والے مٹی کے گرد و غبار کی وجہ سے بھی لوگوں میں ٹی بی کی بیماری عام ہے ٹیکسٹائل ملوں کے اندر کام کرنے والی خواتین اور مردوں میں بھی ٹی بی کی بیماری عام ہو چکی ہے جبکہ علاقے میں ٹی بی کے علاج کے لئے کوئی مناسب انتطام بھی نہیں ہے ۔ شباب ملی کے صدر ملک محمد عثمان اور الخدمت فاؤنڈیشن کے صدر محمد اکرم بوٹا ، سماجی راہنماؤں ملک خلیل احمد اور ریاست علی نے بتایا کہ اگر اس علاقے کی فیکٹریوں سے اُٹھنے والے دھویں ،ٹریکٹر ٹرالیوں سے اڑنے والی مٹی کو کنٹرول نہ کیا گیا تو علاقے میں ٹی بی کی بیماری عام ہو جائے گی انہوں نے مطالبہ کیا کہ محکمہ ماحولیات کے افسروں کو پابندکیا جائے کہ وہ ماحول خراب کرنے والی فیکٹریوں اور بھٹوں کے خلاف سخت کاروائی کریں اور رشوت لے کر سب اچھا کی رپورٹ دینے والے متعلقہ محکموں کے راشی ملازمین کے خلاف بھی سخت کاروائی کی جائے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button