پاکستانتازہ ترین

میرے کہنے کے باوجود تحریک انصاف نے گارنٹر کی لاج نہ رکھی: جاوید ہاشمی

ملتان (نمائندہ خصوصی) سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ قوم آج پوچھتی ہے کہ آخر وہ کون سی قوتیں تھیں جن کے اشارے پر تحریک انصاف نے پارلیمنٹ اور پی ٹی وی پر حملہ کیا۔ سینئر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مخدوم شاہ محمود قریشی، جہانگیر ترین اور دیگر قائدین کی موجودگی میں عمران خان سے کنٹینر پر بیٹھ کر کہا تھا کہ ہمیں پارلیمنٹ کی طرف نہیں جانا چاہیے مگر تحریک انصاف کا ریلہ آگے کیوں بڑھا اور توڑ پھوڑ اور حملے میں کیوں شریک ہوئے۔ قوم آج بھی اس کا جواب مانگتی ہے انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی کور کمیٹی کے اجلاس میں اس بات کی مخالفت کی تھی کہ ہمیں فوج کی شکل میں کوئی گارنٹر درمیان میں نہیں لانا چاہیے کیونکہ گارنٹی دینے والے کل کو حساب مانگیں گے لیکن جب گارنٹر مل گئے اور یقین دہانی کرادی گئی کہ 2013ءکی انتخابی دھاندلی کرانے کا جائزہ لینے کیلئے جوڈیشل کمشن بنایا جائے گا تو میں نے کہا اب گارنٹر کی لاج رکھی جائے اور پارلیمنٹ کی طرف نہ بڑھا جائے لیکن جب تحریک انصاف کے کارکنوں نے پارلیمنٹ پر حملہ کردیا تو گارنٹر پیچھے ہٹ گئے۔ مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ گارنٹنر کو پی ٹی آئی کی طرف سے یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ عمران خان کے دھرنے میں چار سے پانچ لاکھ لوگ ہوں گے لیکن پی ٹی آئی کے ایک اہم رکن نے اعتراف کیا ہے کہ دھرنے میں زیادہ سے زیادہ 36 ہزار لوگ شریک ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ 2013ءکے الیکشن میں کسی بھی حلقے میں 20 ہزار جعلی ووٹ ڈالنا ممکن نہیں تھا کیونکہ عوام باشعور ہیں البتہ یہ ہوسکتا ہے کہ کسی حلقے میں دھونس اور دھاندلی کے ذریعے پانچ سو جعلی ووٹ ڈال دئیے ہوں۔

یہ بھی پڑھیں  ینگ ڈاکٹرزکا ہڑتال ختم کرنے کا اعلان

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker