تازہ ترینعلاقائی

داؤدخیل:ہر جگہ مزدورں کااستحصال کیا جارہا ہے،پاک نیوز میڈیا سروے

داؤدخیل(ضیانیازی سے )مقامی فیکٹریوں میں ٹھیکدار مزدوروں کا خون چوسنے کے باوجود اجرت نہ ہو نے کے برابر دیتے ہیں ،پرائیویٹ کاموں میں بمشکل 3سو روپے دیہاڑی ملتی ہے،ہر جگہ مزدورں کااستحصال کیا جارہا ہے ،حکومت بجٹ میں مزدور کی یومیہ صر ف کاغذ کالے کر نے کے لئے مقر ر کر تی ہے لوڈشیڈنگ کی وجہ مزدور خود کشی پر مجبور ہیں۔مزدوروں کا میڈیا سروے میں اظہار خیال،تفصیلات کے مطابق میڈیا سروے کے دوران گلن خیل ، ماڑی شہر اور گردونواح کے مزدوروں ہنرمندوں ظفر عباس ،ریاض حسین،عمران کاکا نے کہاکہ مزدور سارسار ا دن اپنے خون پسینے نکال کر انتہائی سخت محنت مزدوری کر تا ہے ۔ مگر جب اجرت کا وقت آتا ہے تو کل پہ ٹال دیا جاتا ہے ،دوسر ے دن مزدوری نہ ہو نے کے برابر دی جاتی ہے ۔فضل عباس ، صدیق نے کہا کہ مزدورں کا کو ئی مستقبل نہیں ہے ،کئی مزدور سارا دن گدھا ریڑھی چلاتے ہیں ، شام کو ایک وقت کی روٹی بمشکل نصیب ہو تی ہے ،مزدور اپنے بچوں کا پیٹ پالنے سے قاصر ہیں ،تعلیم دلانے کا سوچ بھی نہیں سکتے ۔تجمل ، نیاز حسین ،محمد شفیع نے کہا کہ ہر حکومتی بجٹ میں مزدوروں کی فلاح وبہبود کے لئے بڑے بڑے دعوے کئے جاتے ہیں۔اور قانون سازی کی جاتی ہے۔مگر عملی طور پر مزدوروں کو حقوق نہیں دیئے جاتے ۔گلن خیل ، اسکندر آباد اور دیگر ٹھیکدار مزدورں کے ساتھ اپنی مر ضی سے پیش آتے ہیں مقامی فیکٹریوں میں ٹھیکدار انتہائی کم اجرت پر مزدوروں سے انتہائی سخت مشقت کر اتے ہیں ،بعض ٹھیکدار کئی کئی ہفتوں ، مہینوں ،مزدوروں کو مزدوری نہیں دیتے ،بعض کام کر نے کے بعد غائب ہو جاتے ہیں۔گلن خیل میں مزدورں سے انتہائی کم ریٹ پر لوڈنگ کرائی جاتی ہے۔مزدور ہو ٹل پہ ہو یا فیکٹری میں ہر جگہ ناانصافی اور ظلم کا شکار ہے ۔لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے مزدورں کے ساتھ ساتھ ہنر مند فاقہ کشی اور خود کشی پر مجبور ہیں

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ : سانحہ لاہور کے بعد ضلع بھرمیں سیکورٹی ہائی الرٹ ۔ترجمان پولیس

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker