پاکستانتازہ ترین

جوڈیشل کمیشن کی شواہد جمع کرانے کے لیےتمام جماعتوں کو 25 اپریل تک مہلت

اسلام آباد(بیوروچیف)مبینہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لیے قائم جوڈیشل کمیشن نے ن لیگ اور ایم کیو ایم کو موقف پیش کرنے کیلئے نوٹس جاری کرتے ہوئے دیگر تمام جماعتوں کو شواہد جمع کرانے کیلئے ہفتہ 25 اپریل تک مہلت دے دی۔چیف جسٹس ناصرالملک کی سربراہی میں 3 رکنی جوڈیشل کمیشن نے کھلی عدالت میں سماعت کی۔ پی ٹی آئی کے وکیل عبدالحفیظ پیرزادہ نے دلائل دیے کہ نادرا رپورٹ کے مطابق کئی حلقوں میں بے ضابطگیاں ہوئیں۔ الیکشن والی رات 11بجے ہی ن لیگ نے کامیابی کا اعلان کر دیا۔ حفیظ پیرزادہ نے کہا کہ نتائج آنے سے پہلے نوازشریف کو جیت کا علم کیسے ہوا۔ کمیشن طے کرے کہ کیا ن لیگ کو ملنے والا مینڈیٹ حقیقی ہے۔ نمائندہ موجود نہ ہونے پر کمیشن نے ن لیگ کو نوٹس جاری کر دیا۔  پی ٹی آئی نے 38حلقوں سے متعلق نادرا رپورٹ سیل کرنے کی استدعا کی، وکیل کا موقف تھا کہ صوبائی حکومت کی رپورٹ کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ہے۔ الیکشن کمیشن انتخابی ریکارڈ تباہ نہ کرنے کی یقین دہانی کرائے ۔الیکشن کمیشن نے جوڈیشل کمیشن کو ریکارڈ میں ردوبدل نہ کرنے کی یقین دہانی کرا دی۔ کمیشن نے جماعت اسلامی کی درخواست پرایم کیو ایم کو بھی نوٹس جاری کردیا۔   پیپلز پارٹی کے وکیل اعتزاز احسن نے70 حلقوں کا انتخاب کرکے جائزہ لینے کی تجویز دی۔ اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ انتخابی ریکارڈ کا جائزہ آر اوز، ڈی آر اوز اور سیشن جج کی نگرانی میں کرایا جائے۔ جوڈیشل کمیشن نے اعتزاز احسن کی پیش کردہ تجاویز کی نقل تمام جماعتوں کو دینے کی ہدایت کی۔ کمیشن نے تحریک انصاف کی گواہان کو طلب کرنے کی درخواست پر فیصلہ موخر کر دیا۔ چیف جسٹس ناصر المک نے کہا کہ پہلے دیگر جماعتوں کی جانب سے بھی گواہوٕں کی فہرست آنا ضروری ہے،25 اپریل تک تمام جماعتیں دستاویزات و گواہوں کی فہرست جمع کرائیں پھر کمیشن طے کرے گا کہ ٹرم آف ریفرنسز کی روشنی میں کس گواہ کو طلب کرنا ہے۔ کمیشن نے طریقہ کار کے معاملے پر بھی تمام سیاسی جماعتوں سے معاونت طلب کرلی

یہ بھی پڑھیں  کہاں ہے قانون ؟

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker