تازہ ترینعلاقائی

پاکستان غیرسنجیدہ اوردھرنا سیاست کامتحمل نہیں ہوسکتا۔خواجہ سعد رفیق

saad rafiqلاہور( پریس ریلیز )پاکستان مسلم لیگ (ن) کے نومنتخب ارکان پنجاب اسمبلی سیّدزعیم حسین قادری ، میاں نصیراحمداور چودھری یٰسین سوہل نے کہا ہے کہ آزاد عدلیہ نے این اے125سے پی ٹی آئی کے ناکام امیدوار حامدخان کی انتخابی نتائج کیخلاف دائرکی جانیوالی بوگس درخواست مستردکردی ہے لہٰذاء ان کے بعد اخلاقی طورپر غازی چوک میں دھرنامزیدجاری رکھنے کاکوئی جوازباقی نہیں رہ جاتا ۔ان کادھرنامقامی افراد کیلئے ایک مصیبت اورعذاب بناہوا ہے ،مقامی بچے اپنے اپنے تعلیمی اداروں اوربڑے اپنے دفاترنہیں جاسکتے، پی ٹی آئی کا اس قسم کا تشددپسندانہ سیاسی کلچرقابل قبول نہیں ہے ۔تاریک انصاف والے ان بیچاروں کے بنیادی انسانی حقوق کی دھجیاں کیوں بکھیر رہے ہیں۔اس وقت پاکستان غیرسنجیدہ اوردھرنا سیاست کامتحمل نہیں ہوسکتا۔ پاکستان کی ایک مخصوص کلاس نے پی ٹی آئی کومینڈیٹ دیا ہے لہٰذا ء اب عمران خان بچپناچھوڑدیں اوربڑے پن کامظاہرہ کریں ۔وہ اپنی شکست کاغصہ غازی چوک سے ملحقہ مکینوں پرکیوں اتار رہے ہیں ۔تاریک انصاف کودھونس دھرنے اوردھاندلی سے عوام کے مینڈیٹ کامذاق اڑانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔پی ٹی آئی والے شکست کی خفت مٹانے کیلئے نفاق اورنفرت کے بیج بو رہے ہیں ،ان کی یہ روش قابل مذمت ہے ۔ہمارے مینڈیٹ کااحترام کرنے کی بجائے پی ٹی آئی کی مقامی قیادت الزام اورانتقام پراترآئی ہے۔وہ والٹن روڈپرایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ارکان پنجاب اسمبلی نے مزید کہا کہ خادم عوام میاں شہبازشریف نے 2008ء میں وزیراعلیٰ پنجاب منتخب ہونے کے بعدوسائل کارخ معاشرے کے عام طبقات کی طرف موڑدیا تھا۔انہوں نے براہ راست دلچسپی کامظاہرہ کرتے ہوئے ہروہ کام کیا جس سے عام آدمی کامعیارزندگی بلندہو اوراس کی دہلیز تک جمہوریت کے ثمرات پہنچائے ۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت نے پوش اورسفیدپوش آبادیوں میں کسی امتیاز کے بغیر ترقیاتی کام کرائے جس کاجواب عوام نے حالیہ انتخابات میں ووٹوں کی صورت میں دیا اورمسلم لیگ (ن) پنجاب سمیت پورے ملک سے کامیابی سے ہمکنار ہوئی۔این اے125کاحلقہ صرف ڈی ایچ اے تک محدود نہیں ہے بلکہ اس میں بیسیوں دیہات اورسینکڑوں پسماندہ آبادیاں بھی آتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ خواجہ سعد رفیق نے بہت دلچسپی کے ساتھ والٹن روڈپرطلبہ وطالبات کیلئے الگ الگ دوڈگری کالج تعمیرجبکہ پچاس سے زائدسکینڈری سکول اپ گریڈکرائے ۔ووٹرز نے ہماری خدمت ،نیک نیتی اورکمٹمنٹ کی بنیاد پرہمیں ووٹ دیا ۔انہوں نے کہا کہ "تاریک نا انصاف” والے دھونس اوردھرنے سے ہاری ہوئی سیٹ ووٹرز سے نہیں چھین سکتے۔اگرانہیں عوام کا نہیں توٹھوس شواہد لے کرآئینی طریقہ کار کے مطابق قانونی راستہ اختیار کریں۔وہ طلبہ وطالبات کودھرنے پربٹھانے کی بجائے ان کے تعلیمی اداروں میں جانے دیں۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button