پاکستانتازہ ترین

ایم کیو ایم کا گورنر سندھ سے لاتعلقی کا اعلان،استعفی کا مطالبہ

کراچی(نمائندہ خصوصی)متحدہ قومی موومنٹ نے گورنر سندھ عشرت العباد سے استعفے کا مطالبہ کردیا۔ رابطہ کمیٹی نے ان کے خلاف چارج شیٹ بھی پیش کردی، کہا کہ گورنر عشرت العباد نے پہلے اچھا کام کیا، بعد میں ان کا رویہ تبدیل ہوگیا،ان کا بھرم ہمیشہ قائم رکھا پر اب پانی سر سے اونچا ہوگیا ہے۔ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کا کراچی و لندن میں اہم اجلاس ہوا جس میں ایم کیو ایم نے گورنر سندھ سے استعفیٰ طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی، سینٹرل ایگزیکٹیوکونسل اور مختلف شعبہ جات کے ذمے داروں کے اجلاس کے بعد ایم کیوایم رابطہ کمیٹی نے پریس کانفرنس میں اس بات کا اعلان کیا کہ ایم کیو ایم نے گورنر سندھ سے استعفیٰ طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ اس حوالے سے ڈاکٹرفاروق ستار کا کہنا تھا کہگورنر سندھ عشرت العباد نے شروع میں اچھا کام کیا، لیکن پھر ان کا طرز عمل بدل گیا، گورنرکا بھرم قائم رکھا جو آج تک قائم ہے، پر اب پانی سرسے بہت اونچا ہوچکا ہے،ایم کیو ایم کی تاریخ رہی ہےکہ عہدوں کو ہمیشہ جوتیوں کی نوک پر رکھا، گورنر سندھ کے رویے میں تبدیلی کو نظر انداز نہیں کرسکتے، عشرت العباد کارکنوں کا قتل عام روکنے میں ناکام رہے۔ انہوں نے کہا کہ 2002ء میں ایم کیوایم کو گورنرشپ آفرکی گئی،عشرت العباد نے ابتدا میں سندھ کے لیے بہتراندار میں کام کیا،الطاف حسین کا وژن سامنے رکھ کر اپنی توانائی اور وقت صرف کیا، ڈاکٹر عشرت العباد نے عوامی مسائل کے حل کیلئے اپنی توانائیاں صرف کیں، کچھ عرصہ کے بعد جوطرزعمل عشرت العباد کا رہا،اسے نظراندازنہیں کرسکتے،ہم نے گورنرکا بھرم قائم رکھا جو آج تک قائم ہے۔ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا تھا کہ 2008ء میں پیپلزپارٹی کی حکومت آئی،ایم کیو ایم کے کارکنوں کا قتل عام شروع ہوا،ہمدردوں کا قتل عام جاری رہا،بستیوں پر حملے ہوتے رہے،کچھ عرصہ امن قائم ہونے کے بعد حالات پھرخراب ہوجاتے ہیں،گورنرسندھ عشرت العباد حملے رکوانے میں ناکام رہے،آپریشن کے نام پرمہاجربستیوں کے محاصرے کیے جارہے ہیں،عشرت العباد کو توجہ دلائی آپریشن کے نام پر مہاجر بستیوں کے محاصرے ہو رہے ہیں،پانی سرسے بہت اونچا ہوچکا ہے،آپریشن کے لیے ہمارا غیر مشروط تعاون تھا۔فاروق ستار کا کہنا تھا کہ گورنرسندھ نے پارٹی رکنیت سے استعفیٰ بھی دیا،مگروہ ایم کیو ایم کے ہمدرد رہے، گورنرسندھ کو الطاف حسین کی مکمل حمایت رہی، ہمیں شوق نہیں تھا کہ نمائشی گورنر شپ اپنے پاس رکھیں،کارکنوں کی جبری گمشدگی پر وزیراعظم سے مطالبہ کیا کہ مانیٹرنگ کمیٹی بنائی جائے، ایم کیو ایم کی تاریخ رہی ہےکہ عہدوں کو ہمیشہ جوتیوں کی نوک پر رکھا، گورنر سندھ کے رویے میں تبدیلی کو نظر انداز نہیں کرسکتے، عشرت العباد کارکنوں کا قتل عام روکنے میں ناکام رہے، تھوڑی دیر پہلے ایم کیو ایم کے سیکٹر انچارج شاہد بھائی کو گرفتار کرلیا گیا ہے، ایم کیوایم کے سیاسی کردارکو ختم کرنے کیلئے آپریشن کا رخ موڑدیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرعشرت العباد خان تمام معاملات میں خاموش رہے،چاہتےہیں ایم کیوایم پاکستان اورلندن نےجوفیصلہ کیاہےوہ آپ کےسامنےلایاجائے،کئی بارعشرت العباد کو تمام معاملات سے متعلق آگاہ کرتے رہے، ہماری بستیوں میں ہی ملزم تلاش کیا گیا اوراسے مجرم بنادیا گیا، ایم کیوایم کے سیاسی کردارکو ختم کرنے کیلئے آپریشن کو موڑدیا گیا ہے،ہمارے 1200کارکنوں کے قاتل آج تک دندناتے پھررہے ہیں،ایم کیو ایم کے دفاتر پر چھاپے مارے جا رہے ہیں،آج کراچی میں پانی کے معاملے پرقیامت صغریٰ ہے،بجلی گیس نکاسی آب کے مسائل پربھی وہ توجہ نہیں ۔مہاجرآبادیوں کا محاصرہ ہوتا رہا،گورنرنے کچھ نہیں کیا،گرفتارکارکنوں پربہیمانہ تشدد اور نارواسلوک کا بھی نوٹس نہ لیا،گورنرسندھ کراچی آپریشن پرغیرجانبدار،آزاد مانیٹرنگ کمیٹی نہ بنواسکے،عشرت العباد ایم کیو ایم کے خیر خواہ اور ایم کیوایم کا حصہ نہیں رہے،سیاسی کارکن مسائل کے حل کے لیے دفاتر میں کیسے بیٹھیں؟ایم کیوایم کو گورنرشپ رکھنے کا شوق نہیں تھا۔ فاروق ستار نے کہا کہ گورنرسندھ مظالم پرچپ رہے اورظلم بندکرانے میں اپنا کردار ادا نہ کرسکے، 11 مارچ 2015ء کودرجنوں ذمے داروں اور کارکنوں کی گرفتاریوں پر چپ رہے، اگرعشرت العباد کی جگہ باضمیر شخص ہوتا تو اپنے منصب سے استعفیٰ دے چکا ہوتا، وہ خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ واضح رہے کہ ڈاکٹر عشرت العباد نے 27دسمبر 2002ءکو گورنر سندھ کے عہدے کا حلف اٹھایاتھا،ڈاکٹر عشرت العباد کو گورنر سندھ کے عہدے پر فائر ہوئے 14سال 4ماہ 15دن ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  انسانی سوچ سے چلنے والے ٹی وی تیار

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker