تازہ ترینعلاقائی

بہاولنگر:پاک فوج نے ہمیشہ ملک کی عزت و وقار کے لیے کام کیا ہے،بریگیڈئر ارشد خان

بہاولنگر ( رانا فیصل رحمن)قوم کے مستقبل کو سنوارنے میں خواتین اہم کردار کی حامل ہیں۔ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے خواتین بچوں کی تعلم وتربیت اور کردار سازی پر خصوصی توجہ مرکوز کریں۔ ۔ ان خیالات کا اظہار کمانڈر انٹرنل سیکورٹی 57 بریگیڈ ہیڈکوارٹر بریگیڈیر محمد ارشد خان نے ضلع کونسل بہاولنگر کے ہال میں نیشنل ایکشن پلان سے متعلق خواتین کے خصوصی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جس میں تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی خواتین، گرلز سکولزو کالجز کی طالبات واساتذہ، سول و فوجی افسران نے شرکت کی۔ بریگیڈیر محمد ارشد خان اپنے خطاب میں دہشت گردی کے معاشی، سماجی ، نفسیاتی اثرات پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ بریگیڈیر محمد ارشد خان نے کہا کہ پاک فوج نے ہمیشہ ملک کی عزت و وقار کے لیے کام کیا ہے اور ملک میں سیلاب، زلزلے یا دیگر قدرتی آفات میں ریسکیو کے کاموں اور بحالی کی سرگرمیوں میں ہمیشہ ہر اول دستہ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ افواج پاکستان نے جنوبی وزیرستان میں دہشت گردوں کا صفایا کر کے امن بحال کیا اور اب وہاں سڑکوں و ڈیمز کی تعمیر، کیڈٹ کالجز کے قیام اور دیگر ترقیاتی سرگرمیوں سے تعمیر و ترقی کی شاہراہیں کھول دی ہیں اور شمالی وزیرستان میں بھی دہشت گردی کا خاتمہ کر کے دم لیں گے۔ بریگیڈیر محمد ارشد خان نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پچاس ہزار سے زائد سویلین شہید ہوئے ہیں اور چھ ہزار فوجیوں نے جام شہادت نوش کیا جبکہ پندرہ سو فوجی وطن کی خاطر لڑتے ہوئے عمر بھر کی معذوری کا شکار ہوئے ہیں۔ لیکن ہمار ا عزم و حوصلہ پہلے سے زیادہ توانا اور بلند ہیں۔ اور ہم نے ہر حال میں یہ جنگ جیتنی ہے۔ انہوں نے کہا افواج پاکستان نے دہشت گردوں کے خلاف بالخصوص فاٹا اور خیبر پختونخواہ میں آپریشن کیے ہیں جن میں آپریشن راہ راست، راہ نجات اور اس وقت ضرب عضب ، خیبرون، خیبر ٹو جاری ہیں۔ اور دہشت گردوں کا خاتمہ کیا جا رہا ہے۔ کمانڈر انٹرنل سیکورٹی بریگیڈیر محمد ارشد خان نے نیشنل ایکشن پلان سے متعلق بتایا کہ ضلع بہاولنگر میں دو ہزار سرچ آپریشن کیے گئے ہیں اور ستر افراد کو دہشت گرد ی اور 200افراد کو نیشنل ایکشن پلان کے تحت پکٹرا گیا ہے ۔۔ انہوں نے کہا کہ 16 دسمبر 2014 کو دہشت گردوں نے علم کی روشنی حاصل کرنے والے136 معصوم بچوں کو پشاور آرمی پبلک سکول میں اپنی بربریت اور درندگی کا نشانہ بنایا اور اس واقعے کے بعد پوری قوم دہشت گردی کے خلاف اٹھ کھڑی ہوئی ہے اور ہماری سیاسی اور ملٹری قیادت نے ایک نیشنل ایکشن پلان تشکیل دیا جس پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قوم دہشت گردوں اور ان کے معاونین کے قلع قمع میں فوج کا ساتھ دیں اور نفریت اور فرقہ واریت کو رد کریں انہوں نے خواتین سے کہا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہا کہ ا نکا بچہ کسی ایسے سکول میں تعلیم حاصل نہ کرے جس میں فرقہ واریت اور نفرت کی تعلیم دی جار ی ہو۔ بچوں کو میانہ روی ،برداشت اور تحمل سکھائیں اور انتہا پسندانہ سوچ اور رویوں کی ہر سطح پر حوصلہ شکنی کریں تاکہ ہمارا معاشرہ امن اور محبت کا گہوراہ بن جائے۔

یہ بھی پڑھیں  معلومات تک رسائی کاقانون اورعوامی آگہی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker