تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو:محکمہ انہار کی لاپرواہی سے ہیڈ بلوکی کے خفاظتی بند وں میں دراڑیں

بھائی پھیرو(نامہ نگار)محکمہ انہار کی لاپرواہی سے ہیڈ بلوکی کے خفاظتی بند وں میں دراڑیں ۔لومڑیوں ، خار پشتوں ، اور دیگر جانوروں نے حفاظتی بندوں میں سوراخ بنا کر انہیں کمزور کر دیا ۔گزشتہ سال سیلاب سے تباہ ہونے والے بندوں کو بھی مرمت نہیں کیا گیا۔اربوں کی پانڈ ایریا،آبی گزرگاہوں،بندوں پر ناجائز قابضین کے ڈیرے، حفاظتی پشتوں کی مضبوطی جانچنے والے کروڑوں روپے سے لگائے گئے ٹیوب ویل کی مشینری بیچ کر کرپٹ افسران نے تجوریاں بھر لیں ۔بندوں کو مضبوط کرنے کے فنڈ ہڑپ ، حفاظتی انتظامات کی غیر موجودگی میں سیلاب سے ہیڈ بلوکی اور ارد گرد کے دیہات کی بڑی تباہی کا خطرہ ۔ایمر جنسی فنڈز میں خرد برد کی تحقیقات کروانے کرانے کا مطالبہ ،ڈی سی او ناجائز قبضے واگزار کرانے میں ناکام ۔تفصیلات کے مطابق کسان بورڈ کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات حاجی محمد رمضان نے دریائے راوی پر واقع ہیڈ بلوکی کے خفاظتی پشتوں پر محکمہ انہار اوردیگرمحکموں کی طرف سے حفاظتی انتظامات کا جائزہ لینے کے بعد صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہیڈ بلوکی کے ارد گرد حفاظتی پشتوں کی حالت نہایت نا گفتہ بہ ہے ، ان پشتو ں پر لومڑیوں ، گیدڑوں اور خار پشتوں نے سوراخ کر دئیے ہیں اور اپنے گھر بنا دئیے ہیں ، بندوں کو مضبوط کرنے کے لئے آنے والے لاکھوں روپے کے فنڈ زمحکمہ انہار اور انکے چہیتے افسران نے ہڑپ کر لئے ہیں ،خفاظتی بندوں کی مضبوطی کا جانچنے کے لئے لگائے گئے ٹیوب ویلوں کا نام و نشان بھی نہیں ہے ۔ انکی مشینری اور انکے لئے بنائے گئے پختہ کمروں کی اینٹیں اور دروازے تک محکمہ انہارکے کرپٹ افسران اور دوسرے لوگ اکھاڑ کر لے جا چکے ہیں ۔ حفاظتی انتظامات کی عدم موجودگی اور محکمہ انہار کی عدم توجیہی کی وجہ سے سیلاب کی صورت میں ایک تہائی پنجاب کو سیلاب کرنے والے ہیڈ بلوکی کو شدید خطرہ لاحق ہے ،سیلاب سے کمزور حفاظتی بندوں کے ٹوٹ جانے سے وسیع رقبہ بڑی تباہی سے دو چار ہو سکتا ہے ۔ گزشتہ سال سیلاب سے تباہ حال حفاظتی بندوں کو ابھی تک مرمت نہیں کیا گیا۔حفاظتی بندوں ،آبی گزگاہوں پر ناجائز قابضین نے قبضے کر رکھے ہیں اور سیلاب سے بچاؤ کیلیے رکھی گئی ہزاروں ایکڑ زمین پر با اثر افرادنے ناجائز قبضہ کر رکھا ہے اور اگر سیلاب آگیاتو بڑی تباہی کا خطرہ ہے۔ حاجی محمد رمضان نے کہا ہے کہ کسان بورڈ کے کئے گئے سروے کے مطابق پورے پاکستان کے دریاؤں پر بنائے گئے حفاظتی پشتوں کو مضبوط کرنے کے لئے رکھے گئے کروڑوں روپے کے فنڈز بندوں کی مضبوطی کی بجائے محکمہ انہار کے افسران اپنی مالی پوزیشن مضبوط بنانے کے لئے استعمال کر رہے ہیں ۔اور کہیں بھی سیلاب سے بچاؤ کے لئے حفاظتی انتظامات نہیں کئے گئے ۔ضلع قصور کے ڈی سی او اور ہیڈ بلوکی کے محکمہ انہار نے اعلی حکام کو بندوں کی ،،اوکے رپورٹ ،، دے کر ان کی آنکھوں میں دھول جھونکی ہے جبکہ بندوں پر جگہ جگہ پڑی دراڑیں محکمہ کی نا اہلی کا منہ بولتاثبوت ہیں ۔سیلاب کے زمانے میں ایمر جنسی فنڈزسے بندوں اور پشتوں کی مرمت کے نام پر کروڑوں روپے ہڑپ کر نے کیلیے افسران نے پشتوں کی مرمت میں جان بوجھ کر تاخیر کی ہے کیونکہ ایمرجنسی فنڈز کا کوئی آڈٹ نہیں ہوتا۔ ۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ہیڈ بلوکی سمیت پورے پاکستان میں محکمہ انہار کے فنڈز کی خرد برد کی تحقیقات کروائی جائیں اور حفا ظتی پشتوں کو مضبوط بنایا جائے تاکہ مزید نقصان سے بچا جا سکے

یہ بھی پڑھیں  آج امریکہ نا اہل حکمرانوں کی وجہ سے ہمیں آنکھیں دکھا رہا ہے: قمرالزمان کائرہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker