پاکستانتازہ ترین

چترال میں بارشوں اور سیلاب سے تباہی پھیل گئی۔

چترال(نمائندہ خصوصی)چترال میں بارشوں اور سیلاب سے تباہی پھیل گئی۔سب ڈویژن مستوج کو چترال سے ملانے والے کوشٹ پل سمیت 35رابطہ پل بہہ گئے،اس صورت حال کے بعد ضلع بھر میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فوج نے 8ٹن اشیائے خورونوش چترال پہنچادیں۔ چترال میں سیلاب کے باعث مختلف وادیوں میں رابطہ سڑکیں بہہ گئی ہیں،جس سے امدادی اور بحالی کے کاموں میں مشکلات درپیش ہیں۔ چترال اور گردونواح میں جاری بارشوں نے ضلع بھر میں تباہی مچادی ہے ۔چترال اور مستوج کو ملانے والے چھوٹے بڑے 35 رابطہ پل پانی کی نذر ہوگئے، جس کے نتیجے میں ہزاروں افراد مختلف علاقوں میں پھنس کر رہ گئے۔ متاثرہ علاقوں میں کریم آباد، مُردان ، کیلاش، گرم چشمہ، بروز، شیشی، دروش، کُراغ، ریشم اور دیگر علاقے شامل ہیں۔ ڈپٹی کمشنر چترال امین الحق نے ضلع بھر میں فلڈایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے صوبائی اور وفاقی حکومتوں اور مختلف سماجی تنظیموں سے بحالی کے کاموں میں تعاون کی اپیل کی ہے۔ چترال کے مختلف علاقوں میں دواؤں اور کھانے پینے کی اشیاء کی قلت پیدا ہوگئی۔ دوتحصیلوں گرم چشمہ اورکیلاش کا شہر سے رابطہ منقطع ہوگیا، بونی چترال روڈبھی متاثر ہوا ہے۔ گرم چشمہ اور بمبوریت میں ڈیڑھ سو سے زائد گھر متاثر ہوئے ہیں جبکہ سڑکوں اور فصلوں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ ریشون پاورہاؤس بھی سیلاب کی زدمیں آگیا، نیشنل گرڈسے بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی۔ ضلعی انتظامیہ اور پاک فوج متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیوں میں مصروف ہیں۔ پاک فوج نے 8ٹن اشیائے خورونوش چترال پہنچادیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق گرم چشمہ، کیلاش ویلی اور اپرچترال کے متاثرین میں امداد تقسیم کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں  بھارت کا پاک سرحدی حدودمیں حملہ،پاک فوج نے ناکام بنا دیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker