پاکستانتازہ ترین

پرویز مشرف کودوروز کے ٹرانزٹ ریمانڈ پر بھیج دیاگیا

mushrafاسلام آباد(بیوروچیف) جوڈیشل مجسٹریٹ نے سابق صدر اور سابق آرمی چیف جنرل(ر) پرویزمشرف کی ایف آئی آر میں انسداد دہشتگردی کی دفعات شامل کرنے کا حکم دیتے ہوئے انہیں دو روزکے ٹرانزٹ ریمانڈ پربھیج دیا۔ سابق صدرپرویزمشرف کو آج صبح گرفتارکرکے انتہائی سخت سیکورٹی میں جوڈیشل مجسٹریٹ محمد عباس شاہ کی عدالت میں پیش کیاگیا۔ پرویزمشرف کے وکیل نے جوڈیشل مجسٹریٹ سےاستدعا کی کہ سابق صدرکی سیکورٹی بہت اہم ہے، ان کی جان کو خطرہ ہے۔ جوڈیشل مجسٹریٹ نے جوڈیشل ریمانڈ پر فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔ بعدازاں جوڈیشل مجسٹریٹ نےاپنے فیصلے میں ان کے خلاف درج ایف آئی آر میں انسداد دہشتگردی کی دفعات شامل کرنے کا حکم دیتے ہوئے انہیں دو روزہ ٹرانزٹ ریمانڈ پر بھیج دیا۔ جوڈیشل مجسٹریٹ کے حکم میں انسداد دہشتگردی ایکٹ کی سیکشن 6 استعمال کی گئی۔ عدالت نے حکم دیا کہ پرویز مشرف کو دوروز بعد انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش کیا جائے۔ پرویز مشرف کے چک شہزاد میں واقع فارم ہاؤس کو سب جیل قراردے کرانہیں وہاں منتقل کردیاگیا، انہیں دوروز بعد انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش کیا جائےگا۔ واضح رہے کہ ٹرانزٹ ریمانڈ پرملزم کواس وقت بھیجاجاتاہے جب اسےایک عدالت میں پیش کیاجائےلیکن اس کی ایف آئی آر میں متعلقہ دفعات شامل نہ ہوں، ایف آئی آر میں نئی دفعات شامل کرنے کے بعد ملزم کومتعلقہ عدالت میں پیش کیاجاتا ہے جہاں مزید تفتیش کیلئے انہیں اصل ریمانڈ پر بھیجاجاتاہے۔ یاد رہے کہ پرویز مشرف مدعی مقدمہ چوہدری محمد اسلم گھمن کی جانب سے درج کرائی گئی ایف آئی آر میں کہاگیا تھا کہ 3 نومبر 2007ء کے پرویز مشرف کے غیر قانونی اور غیر آئینی اقدامات کی وجہ سے پاکستان کا عدالتی نظام تباہ ہوا جس سے نہ صرف وکلاء برادری اور عوام الناس کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا بلکہ دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی بھی ہوئی۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button