تازہ ترینعلاقائی

عاصمہ جہانگیر کی آج چوتھی برسی منائی جارہی ہے

لاہور(نمائندہ خصوصی) انسانی حقوق کی علمبردار عاصمہ جہانگیر کی آج چوتھی برسی ہے، عاصمہ جہانگیر کی تمام زندگی آئین کی حکمرانی، جمہوریت کے قیام اور انسانیت کے فروغ میں گزری۔ سابق صدر سپریم کورٹ بار عاصمہ جہانگیر نے ملک میں مرد و خواتین کے حقوق کے تحفظ، آزادی رائے، جمہوریت کے فروغ اور آمریت کیخلاف بے مثال کردار ادا کیا, ان کا نام ملکی سیاست کے افق پر کم عمری میں اُس وقت اُبھرا جب انہوں نے اپنے والد ملک غلام جیلانی کی رہائی کیلئے عدالت سے رجوع کیا، مرحومہ نے1980میں اپنی بہن اور دیگر خواتین کیساتھ ملکر خواتین کے تحفظ کیلئے خواتین کی وکالت کے پہلے ادارے کی بنیاد رکھی۔جنرل ضیاءالحق کے مارشل لاء میں عاصمہ جہانگیر نے بھرپور احتجاج کیا،1983میں مال روڈ پر حدود قوانین کیخلاف انکا احتجاج ملک کے تاریخی احتجاج میں سے ایک ہے۔ عاصمہ جہانگیر کو آمریت کیخلاف جدوجہد کرنے پرغداری جیسے الزام کا بھی سامنا رہا، ان کے گھر پر بھی کئی حملے کیے گئے، آمریت کیخلاف آواز اٹھانے کی پاداش میں انہیں کئی مرتبہ جیل بھی ہوئی، لیکن وہ چٹان کی طرح اپنے موقف پر ڈٹی رہیں۔عاصمہ جہانگیر انسانی حقوق کمیشن کی سربراہ رہنے کیساتھ سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی صدر منتخب ہونیوالی پہلی خاتون وکیل بھی تھیں، عاصمہ جہانگیر کوان کی کاوشوں کی بنا پر دنیا بھر میں انسانی حقوق کے اعزازات سے نوازا جاتا رہا۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button