تازہ ترینعلاقائی

حکومت ملکی زراعت کو ترقی دے کر کثیر زرمبادلہ بچا سکتی ہے: کسان بورڈ پاکستان

kissan boardلاہور (پریس ریلز) مرکزی صدر کسان بورڈ پاکستان سردار ظفر حسین خان نے اسلام آباد چیمبر آف کامرس ممبر ٹریڈ کمیٹی کے اس بیان پر اپنے شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے کہ حکومت پاکستان نے گزشتہ سال بھارت سے 39ارب روپے کی سبزیاں درآمد کیں اور بھارت سے مجموعی درآمدات کا 38فیصد حصہ تازہ سبزیوں پر مشتمل ہے۔ انھوں نے کہا کہ زرعی ماہرین، پالیسی ساز اداروں اور حکومتی اکابرین کے لیے یہ لمحہ فکریہ ہے کہ ایک زرعی ملک ہونے کے ناطے ہم نے ایک کثیر رقم صرف سبزیوں کی درآمدات پر اڑا دی۔ اگر اس رقم کا نصف بھی زرعی شعبے کی بہتری اور کسانوں کو سہولیات مہیا کرنے پر خرچ کر دیا جاتا تو ناصرف زرعی شعبہ میں بہتری آتی بلکہ کسان کو بھی خوش حالی نصیب ہوتی اور قیمتی زرمبادلہ کی بچت بھی ہوتی۔ زراعت کی ترقی سے پاکستان کی خوش حالی وابستہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کسان کی بہتری کے لیے پالیسیاں بنائے نہ کہ زراعت کی تباہی کے لیے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button