پاکستانتازہ ترین

چناب نگرکے علاقے چھنی قریشیاں میں قادیانیوں کی جانب سے مسلمانوں کو دھمکیاں دینے کاانکشاف

چنیوٹ (بیورورپورٹ)چناب نگرکے علاقے چھنی قریشیاں میں قادیانیوں کی جانب سے مسلمانوں کو دھمکیاں دینے کاانکشاف ہونے پر جامع مسجد احرار کے خطیب مولانا محمد مغیرہ نے کہا کہ قادیانی ایسی حرکتیں اس لئے کر رہے ہیں کہ قانون کے رکھوالوں نے قادیانیوں کو فری ہینڈ دے رکھا ہے اگر قادیانیوں کو قانون او ر آئین کے دائرے میں رکھا جائے اور امتناع قادیانیت ایکٹ پر پورا عمل درآمد کرایا جائے تو قادیانیوں کو اس قسم کی جرأت نہ ہو ۔انہوں نے کہا کہ قادیانیوں نے چھنی قریشیاں میں مسلمانوں کی زندگی اجیرن بنا رکھی ہے ان کے خلاف قانونی کاروائی ضروری ہے ،مہراظہر حسین وینس نے کہا کہ ان قانون کے رکھوالوں کی قادیانیت نوازی سے مسلمان اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھنے لگے ہیں قادیانی ہر سرکاری محکمہ میں بلاروک ٹوک مداخلت کررہے ہیں جو کہ غیر قانونی اور غیر اخلاقی ہے تھانہ میں قادیانیوں کی عزت افزائی اس طرح کی جاتی ہے کہ ان کو کرسی پر بٹھایا جاتا ہے اور مسلمانوں کو نیچے بیٹھنے کا حکم صادر فرمایا جاتا ہے ایسا رویہ مسلمانوں کے ساتھ کیوں اختیار کیا جارہا ہے کیا مسلمان کو چناب نگر میں شہری حقوق نہیں مل سکتے ؟انہوں نے کہا کہ چھنی قریشیاں کے غریب محنت کش مرد وخواتین کی داد رسی ہونی چاہئے اور وزیر اعلیٰ پنجاب کو خود اس کا نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت قادیانیوں کو امتناع قادیانیت ایکٹ کا پابند بنائے ۔

یہ بھی پڑھیں  عمران خان مرد کے بچے بنیں اور چوبیس اپریل کو رائے ونڈ کا گھیراؤ کرکے دکھائیں، رانا ثناءاللہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker