تازہ ترینعلاقائی

سانگھڑ پولیس نے بااثر افراد کے کہنے پرچادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کرتے ہوئے گھروں کو آگ لگا کر لوٹ مار کی

سانگھڑ(بیورو رپورٹ) سانگھڑ پولیس نے بااثر افراد کے کہنے پرگاؤں جمعہ خان بگٹی پر چڑھائی کر کے چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کرتے ہوئے گھروں کو آگ لگا کر لوٹ مار کی خواتین اور بچوں کومزاحمت کی پاداش میں سخت تشدد  کا نشانہ بنا یا جس سے تین خواتین زخمی ہو گئیں .حاتم علی بگٹی۔ پیرومل تھانے کی حدود  گاؤں جمعہ خان بگٹی میں سانگھڑ پولیس نے بااثر افراد کی ایماء پر آٹھ موبائلوں  سمیت  گاؤں جمعہ خان بگٹی پر دھاوا بول دیا سول کپڑوں اور پولیس کی وردی میں ملبوس اہلکاروں نےپہلے ہمارے گھر وں کوآگ لگائی جب کہ ہماری خواتین اور بچوں کو سخت تشدد کا نشانہ بنایا گیا گاؤں کے مکینوں حاتم بگٹی و دیگر اپنے قبیلے کے ہمراہ پولیس گردی کے خلاف سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ سانگھڑ اور پیرو مل پولیس کے ایس ایچ او نے چادر اور چاردیواری کے تقدس کو پامال کرتے ہوئے ہمیں ہمارے گھروں میں گھس کر ہمیں دھمکیاں دینے کے ساتھ ساتھ گھروں کا سارا سامان نکال کر اتھل پتھل کر دیا جب کہ  27 من گندم .سونا زیور اور ہمارے لائسنس یافتہ ہتھیار ساتھ لے گئی اس کے علاوہ نو افراد کو اپنے ساتھ لے گئی حاتم بگٹی کا کہنا تھا کہ ہم پاکستانی ہے مگر ہمیں زبردستی جمہوری وطن پارٹی میں میں شامل ہونے پر مجبور کیا جارہا ہے جبکہ ایسا نہ  کرنے پر بلوچ لبریشن آرمی میں شامل  ہونے کے الزامات کی دھکیاں دی گئی ہیں انھوں نے کہا ہے کہ ہم نے ہائی کورٹ سے بھی رجوع کیا ہے مگر سانگھڑ پولیس نے ہائی کورٹ کے احکامات کو ہوا میں اڑا دیا ہے انھوں نے چیف آف آرمی سٹاف چیف جسٹس سپریم کورٹ اور آئی جی سندھ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے.
یہ بھی پڑھیں  سانگھڑ: نوسرباز دیہاتیوں سے 2 کروڑ سے زائد رقم کی گندم کی فصل کی جنس خرید کر فرار

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker