تازہ ترینعلاقائی

سانگھڑ: اب ریکستانی علاقے کے بچے بھی روشنی میں پڑھیں گے

سانگھڑ(بیورو رپورٹ) اب ریکستانی علاقے کے بچے بھی روشنی میں پڑھیں گے اور علاقہ کو بھی تعلیم سے منور کریں گے۔ تفصیل کے مطابق سانگھڑ کے نوجوان مجید منگریو کی دن رات کی کاوشوں سے اچھرو تھر کے مشکل ترین علاقوں میں اسکول تعمیر ہوگے 1182بچے تعلیم یافتہ ہوگے ان کی کاوشوں سے اچھڑو تھر کے ہونہار طلباء کے لئے اسکول میں سولر سسٹم نافذ ہوگا اور تمام طلباء کو گھروں میں بیٹھ کر روشنی میں تعلیم حاصل کرنے اور گھروں کو روشن کرنے کے لئے سولر اسٹیڈی لائٹ فراہم کی جائیں گی اسی حوالے سے مقامی ہوٹل میں ایک پر وقار تقریب کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی اے ڈی سی ٹو جاوید ڈاھری تھے جبکہ لطیف حیدر منصور میمن سمیت دیگر معززین نے بھی شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مجید منگریو کا کہنا تھا کہ انھوں نے تھر کے مشکل ترین علاقے میں پانچ اسکول تعمیر کئے ہیں جن کی تعمیر کے لئے ان کو مشکل ترین حالات کا سامنا کرنا پڑا مگر اس کے باوجود بھی انھوں نے ہمت نہیں ہاری اور اچھڑو تھر کے والدین کو راضی کرکے اسکول قائم کئے مگر اب بھی علاقے میں بہت ساری مشکلات درپیش ہیں کیونکہ بچے دور دراز علاقوں سے آتے ہیں علاقے میں روڈ راستے نہیں ہیں اس وقت 1182بچے اسکولوں میں زیر تعلیم ہیں انھوں نے شکایت کی کہ منتخب نمائندوں کو دعوت دی گی مگر اس کے باوجود انھوں نے شرکت نہیں کی جس سے ان کی علاقے کے مسائل کو حل کرنے میں دلچسپی کا اندازہ کیا جاسکتا ہے پروفیسر میر حسن سریوال کا کہنا تھا کہ اس وقت پورے سندھ میں ڈیرہ لاکھ سے زائد ٹیچر بچوں کو تعلیم دینے کے لئے رکھے گے ہیں مگر اس کے باوجود بھی سرکاری اسکولوں کی صورت حال پر افسوس کیا جاسکتا ہے اے ڈی سی ٹو جاوید ڈاھری نے اچھڑو تھر کے اسکولوں کو درپیش مسائل کو جلد حل کروانے کا یعقین دلایا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button