تازہ ترینعلاقائی

ٹیکسلا:سیمی گورنمنٹ کے زیر انتظام چلنے والی ہیوی مکینکل کمپلیکس حطارفیکٹری کی تالہ بندی کے خلاف مزدوروں کا احتجاج ج

ٹیکسلا(ڈاکٹر سید صابر علی /نامہ نگار)سیمی گورنمنٹ کے زیر انتظام چلنے والی ہیوی مکینکل کمپلیکس حطارفیکٹری کی تالہ بندی کے خلاف مزدوروں کا احتجاج جاری،تنخواہ اور اوورٹائم کی عدم ادائیگیوں پر مزدوروں نے فیکٹری کے باہر دھرنہ دے دیا، فیکٹری انتظامیہ کے ساتھ مذاکرات کا سلسلہ جاری،جمعہ کے روز ایچ ای سی حطار فیکٹری کی انتظامیہ نے نوٹس بورڈ پر اطلاع چپساں کی جس پر مزدوروں کو متنبہ کیا گیا کہ انتظامی وجوہات کی بنا پر فیکٹری بند کی جارہی ہے،دوبارہ کھلنے پر اطلاع نوٹس بورڈ پر آو یزاں کردی جائے گی، جس پر سینکڑوں مزدوروں نے انتظامیہ کی ہٹ دھرمی کے خلاف اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا تاہم انتظامیہ کاکوئی افسر مزدوروں سے مذاکرات کے لئے آ مادہ نہ ہوا الٹا فیکٹری سے ایم ڈی سمیت تمام انتظامی عملہ غائب ہوگیا ، ادہر ہفتہ کے روز بھی فیکٹری کی تالہ بندی کے خلاف مزدوروں نے دھرنہ دیا ، مزدوروں کا کہنا تھا کہ جب سے نئے ایم ڈی نے فیکٹری کا چارج سنھبالا ہے مزدوروں کے ساتھ زیاتیوں کا سلسلہ جاری ہے، نہ ایم ڈی ورکروں کو تنخواہ وقت پر دیتا ہے اور نہ اووڑ ٹائم کی ادائیگی کی جاتی ہے مزدوروں نے الزام لگایا کہ ایم ڈی اپنے بندوں کو نوازنے کے لئے مزدوروں کونکال رہا ہے ، جس سے مزدوروں کا معاشی قتل شروع ہوجائے گا، مزدوروں نے مطالبہ کیا کہ کرپٹ ایم ڈی کو فوری طور پر یہاں سے فارغ کیا جائے ،اور مزدوروں کے جائز حقوق انھیں دلائے جائیں،مزدوروں کی نمائندگی عارف شاہ، راشد جمشید المعروف کامی بٹ،اور محمد آصف کر رہے تھے،جن کا کہنا تھا کہ اگر انتظامیہ نے ہوش کے ناخن نہ لئے تو ہم انتہائی احتجاج پر مجبورہونگے ،ورکرز کا کہنا تھا کہ جب سے نئے ایم ڈی آئے اس وقت سے پروڈکشن بند پڑی ہے تاہم حال ہی میں ٹرانسفارمرز کی تیاری کا نیا آرڈر ملا جسے مزدوروں نے اضافی وقت لگا کر پورا کیا مگر انتظامیہ کروڑوں روپے کمانے کے باوجود چند لاکھ روپے جو کہ مزدوروں کے اوور ٹائم کی اجرت بنتی ہے دینے سے گریزاں ہے،اور مسلسل لیت و لعل سے کام لیا جارہا ہے،مزدوروں کا کہنا تھا کہ انھیں کام سے روکا جارہا ہے دانستہ بغیر کسی وجہ اور کسی باقائدہ آرڈر کے فیکٹری کو تالہ لگا دیا گیا ہے ،بتایا جاتا ہے کہ ایچ ای سی حطار فیکٹری میں اس وقت تین سو کے لگ بھگ مزدور کام کر رہے ہیں ،جو فیکٹری کی تالہ بندی پر معاشی حالات سے دوچار ہیں،یہاں یہ امر قابل زکر ہے کہ علاقہ کی اہم سیاسی شخصیات میں سے کسی نے بھی مزدوروں کے ساتھ اظہار یکجتی کرنا گوارہ نہ کیا، اور ٹیلیفونز پر طفل تسلیاں اور جلدپہنچنے کا عندیہ دیتے رہے،ہفتہ کے روز ڈیوٹی ٹائم ختم ہونے کے بعد معلوم ہوا ہے کہ مزدوروں کے نمائندہ وفد سے ایچ ای سی نتظامیہ کی جانب سے مذاکرات کا عندیہ دیا گیا ہے تاہم تالہ بندی کو ختم کرنے کے لئے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا جاسکا،

یہ بھی پڑھیں  اولاد کی بہترین تربیت۔۔۔!

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker