تازہ ترینعلاقائی

اوکاڑہ:معاشرتی رویوں کی وجہ سے بڑھتا ہوا صنفی تشدد لمحہ فکریہ ہے۔آر پی او ساہیوال

okaraاوکاڑہ(محمد مظہر رشید)آر پی او ساہیوال صاحبزادہ شہزادہ سلطان نے کہا ہے کہ معاشرتی رویوں کی وجہ سے بڑھتا ہوا صنفی تشدد لمحہ فکریہ ہے۔خود ساختہ اور فرسودہ روایات صنفی انصاف کے حصول میں بڑی رکاوٹ ہیں ۔سماج کے کمزور طبقات بالخصوص خواتین کو اپنی ترجیحات کا حصہ نہ سمجھنا بھی سراسراناانصافی کے زمرے میں آتا ہے پولیس کی بہتر تربیت کے بعد معاشرتی اور قانونی انصاف کے ذرئیے اس میں خاطر خواہ بہتری لائی جا سکتی ہے لیکن پولیس کو بھی اپنے اختیارات میں رہتے ہوئے کام کرنے کی از حد ضروروت ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے جینڈرریفارم پروگرام کے تحت صنفی تشدد کی روک تھام کے سلسلہ میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب سے ڈی پی او اوکاڑہ راجہ بشارت،جینڈر اسپشلسٹ رانا شاہد،عمر فاروق ملک،ایس پی لیگل مشتاق حسین،عمر چوہدری،مس روہین رفیق اور پروجیکٹ کوارڈینٹر نے بھی خطاب کیا صاحبزادہ شہزادہ سلطان نے کہا کہ جس معاشرے میں صنفی تشدد عام ہو جائے وہاں انصاف اور قانون کی حکمرانی یکسر ختم ہو کے رہ جاتی ہے ۔انہوں نے کہا پولیس افسران اور اہلکار تفتیش کا دائرہ کار درست سمت میں رکھیں تو صنفی تشدد ختم کرنے میں خاصی مدد مل سکتی ہے پولیس درست تفتیش کے ذرئیے گنگار اور بے گناہ میں فرق رکھنے میں اپنا کلیدی رول پلے کرے انہوں نے کہا کے صنف کی بنیاد پر امتیازی سلوک انسانی حقوق کی پامالی کی بدترین شکل ہے ۔آر پی او شہزادہ سلطان نے کہا معاشرے کے فرسودہ اور خود ساختہ رویوں میں تبدیلی لا نا وقت کی انتہائی اہم ضرورت ہے ۔تقریب کے اختتام پر جینڈر ریفارم کے تحت ٹریننگ میں حصہ لینے والے پولیس ملازمین اور افسران کو خصوصی شیلڈز اور اسناد بھی تقسیم کی گئیں ۔آر پی او نے اس سلسلہ میں میڈیا کے مثبت کردارکو بھی سراہتے ہوئے خراج تحسین پیش کیا بعد ازاں آر پی او کے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا ۔

یہ بھی پڑھیں  لوگ جھوٹ کیسے بول لیتے ہیں۔۔۔؟؟؟

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker