تازہ ترینعلاقائی

اوکاڑہ : لاہور ہائی کورٹ نے ملک کی پانچوں سکل ڈویلپمنٹ کونسلوں کے چیئرمینوں کو تاحکم ثانی کام کرنے سے روک دیا . حافظ عتیق الرحمن

اوکاڑہ(بیورورپورٹ )سکل ڈیویلپمنٹ کونسل انسٹیٹیوٹس ایسوسی ایشن پاکستان کے جنرل سکرٹری حافظ عتیق الرحمن نے اوکاڑہ سٹی پریس کلب اوکاڑہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ لاہور ہائی کورٹ نے ملک کی پانچوں سکل ڈویلپمنٹ کونسلوں کے چیئرمینوں کو تاحکم ثانی کام کرنے سے روک دیا ہے۔عدالت نے یہ عبوری حکم امتناعی اے سی ٹی ایم اے کالج کے ڈائریکٹر شکیل احمد کی درخواست پر جاری کیا۔فاضل جج نے ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان سمیت دیگر مدعا علیہان کو بھی نوٹسز جاری کردیئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد، لاہور، کوئٹہ، پشاوراور کراچی میں کام کرنے والی سکل ڈویلپمنٹ کونسلوں کے چیئرمینوں اور ارکان کی معیاد ملازمت 30ستمبر 2013سے ختم ہوچکی ہے۔ اس حوالے سے نیشنل ٹریننگ بورڈ کے 10فروری2014کو ہونے والے اجلاس کی رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی گئی جس میں نئے چیئرمینوں اور ارکان کے تقرر کے لئے چیمبر زآف کامرس لاہور ،کراچی ،اسلام آباد ،پشاور اورکوئٹہ کے علاوہ ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان سے نامزدگی طلب کی گئی تھیں تاہم تاحال یہ تقرریاں عمل میں نہیں لائی جاسکی ہیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا ہے کہ سابق چیئرمین ایس ڈی سی لاہور کی عہدے کی معیاد ختم ہونے کے باوجود خالد رحمان کام کررہا ہے جبکہ فاضل جج نے دلائل سننے کے بعد چیئرمین جن کی مدت ملازمت 30ستمبر2013کو ختم ہوچکی ہے انہیں رٹ درخواست کے حتمی فیصلے تک کام کرنے سے روک دیا ہے۔عدالت عالیہ کے حکم کی روشنی میں اب صرف سکل ڈیویلپمنٹ کونسل397-A-Iکے پاس ہی طلباء اور اداروں کو ڈپلومہ جاری کرنے کا اختیار رہ گیا ہے

یہ بھی پڑھیں  بھائی پھیرو:ایک ہی دن میں گن پوائنٹ پر تین جواں سالہ لڑکیاں اغوا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker