ایس ایم عرفان طا ہرتازہ ترینکالم

پا کستان میں بگڑتی ہو ئی صورتحال

بلا شعبہ جتنا نقصان پاکستانی قوم کو پا کستان پیپلزپارٹی نے پہنچا یا ہے اس سے کہیں درجے کم نقصان پا کستان مسلم لیگ ( ن) نے بھی پہنچا یا ہے ۔ تا ریخ گواہ ہے ذوالفقا ر بھٹو کی موجودگی میں مجیب رحمن شامی نے ایک تحریک چلائی اور محض ذاتی مفادات اور اقتدارکی ہوس نے پاکستان کو دو لخت کردیا ہا ں آرپا ر دونو ں کا ہی کسی نہ کسی حد تک قصور ضرور تھا آج پھر وہی تا ریخ بھٹو کے سجا دہ نشین آصف علی زرادری کے دور میں سردار اختر مینگل نے مجیب الر حمن شامی کا کردار ادا کرتے ہو ئے ۶ نکا ت پیش کرکے دوہرا نے کی کوشش کی ہے ۔ وفا ق اور صو بو ں کی جنگ نے ہمیں جس قدر نقصان پہنچا یا ہے اس قدر ڈرون حملو ں اور نیٹو سپلا ئی کی بحالی نے بھی نہیں پہنچا یا ہے ۔ صو با ئی تعصب ، لسانی تفریق ، نئے صوبوں کا قیام یہ سب مسائل اپنی جگہ جو ں کے توں قائم و دائم ضرور ہیں لیکن ملک میں زمینی تغیر و تبدل اور انا کی جنگ شاید ہمیں ترقی کی راہو ں سے بہت پیچھے ماضی کے عبرتناک موڑپر دھکیل رہی ہے ۔ وفا ق اور پنجا ب حکومت کی ساس بہو کی جنگ نے ہمیں کہیں کا نہیں چھوڑ ا کبھی لو ڈ شیڈنگ کا رونا ایک دوسرے پر الزامات لگا کر رویا جا رہا ہے تو کبھی سپریم کو رٹ کو دونو ں جما عتوں کے کیسز کے حوالہ سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ غر ضیکہ دونو ں طرف ہے آگ برابر لگی ہوئی عدلیہ کے ساتھ تصادم کا معاملہ ہو یا گستا خانہ فلم کے خلا ف بین الا قوامی احتجا ج ، لا پتہ افراد کا معاملہ ہو یا بلا ول بھٹو اور حنا ربانی کھر کی لو سٹوری قوم کو بہت سے معاملا ت اور سا نحا ت و حا دثات میں مبتلا کر کے شاید ایک انو کھا کھیل کھیلنے کی کوشش بیرونی ایجنسیا ں اور ان کے پالتو ایجنٹ بخوبی سرانجام دے رہے ہیں ۔ قوم کی غربت ، بے بسی ، مجبوری اور لا علمی کا یہ عالم ہے کہ انہیں محض بینظیر انکم سپورٹ پر وگرام کا پیسہ ، مالیا تی فنڈ ز، زکو ٰ ۃ و عشر کی رقوم ، پیلی ٹیکسیا ں ، فری لیپ ٹا پ اور سستی روٹی تو دکھائی دے رہی ہے لیکن جو اہم ماحول ہما رے ملک میں سیاسی مداری پیدا کررہے ہیں اس کی کسی کو کوئی خبرنہیں ہے ۔ ہر کوئی اپنی تعمیر و ترقی اور پر و جیکٹس کے جھنڈے گا ڑھنا چا ہتا ہے اور یہ خبر ہی نہیں ہے کہ آپ کے نام کی تختیا ں یہیں پر سجی رہیں گی اور پا کستان کے نام کی تختی کوئی اتار لے جا ئے گا ۔ یہ پر نم ہو ائیں ، یہ خا موش آندھیاں اور یہ طلسمی سکو ت اس با ت کی خبر دے رہا ہے ملک میں کچھ ہو نے کو جا رہا ہے ۔ کچھ بھی بے سبب نہیں ہو تا ہے جب سورج کسی مقصد کے لیے طلو ع ہو تا ہے جب چاند کسی مقصد کے تحت چمکتا ہے جب پھول کسی مقصد کے تحت کھلتے ہیں جب رات دن کسی مقصد کیلیے بدلتے ہیں تو یہ سب رونما ہو نے والی تبدیلیا ں اور سرسراہٹ بھی کوئی نہ کوئی اپنے اندر خفیہ پیغام سمو ئے ابھر رہی ہے ۔ وفا ق اور صو بے محض ایک دوسرے پر الزام تر اشی کر نے میں مصروف ہیں لیکن جو الزام ان پر بین الاقوامی دنیا لگا نے جا رہی ہے اس کی کسی کو کانو ں کان خبر نہ ہے ۔ اپنے وطن اور اسکی آب و ہوا میں اڑنے والی بے چینی و بے قراری اور اضطرابی کیفیا ت کو کہیں بھی پر کھنے والا کوئی نہیں ہے ۔ کشمیر سے لیکر بلو چستان ، کر اچی سے لیکر خیبر تک اور پنجاب سے لیکر گلگت بلتستان تک مغربی قوتیں مسلسل اور پو ری قوت کے ساتھ کئی کئی بہا نو ں اور سا زشو ں سے اس ملک کی اکا ئی کو تقسیم کر نے کی سوچ رہی ہیں یہیں کبھی گلگت بلتستان میں جنگی صورتحال اور فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دی جا تی ہے تو کبھی بلو چستان کے اند ر آزاد بلو چستان کی تحریک متحرک کر دی جا تی ہے ۔ کبھی وزیر ستان اور صوات کے علاقو ں میں دہشتگردی کے واقعا ت رونما کیے جا تے ہیں سندھ کے اندر ٹا رگٹ کلنگ اور بگڑتی ہوئی صورتحال سب کے سامنے ہے تو کبھی کشمیر کے اندر خود مختا ر کشمیرکے نعرو ں کو پر مو ٹ کیا جا تا ہے اور یہ سب نقل و حرکت محض کسی ایک علاقے کسی ایک قصبے کسی ایک شہر یا کسی ایک ضلع یا کسی ایک صو بے کا ما حول خراب کر نے کا سبب نہیں ہیں بلکہ پیش خیمہ ہیں ملک پا کستان کو تقسیم در تقسیم کر نے کا ۔ قوم کو چا ہیے کہ اپنے خوابو ں خیالو ں سے سر اٹھا ئیں اور اپنی ملکی سلامتی اور سا لمیت اور اتحاد و یگا نگت کو زنگ آلو د ہو نے سے بچا ئیں آج ضرورت ہے ہمیں تجد ید عہد وفا کی اور خود کو مٹا کر وطن کو عزیز کرنے کی ہما را وقا ر ہما ری عز ت ہما را پیا ر سندھی، سرحدی ، پنجابی ، بلو چی اور کشمیری ہو نے سے نہیں ہے بلکہ سب سے پہلے پاکستانی ہو نے سے ہے ۔ مخالفین کا ٹا رگٹ کوئی ایک ضلع کوئی ایک صو بہ اور کوئی ایک نسل نہیں بلکہ ان کی نظر ہے پو رے پاکستان پر اور پاکستان کو لا حق خطرہ یعنی پو رے عالم اسلام کو خطرے میں مبتلا کر نے کے مترادف ہے ۔ جب محفوظ قلعہ ہی پناہ گاہ ثا بت نہ ہوا تو پھر بقا ء اور تحفظ کیلیے ڈھال کون بنے گا ۔ اس لیے اے وطن کے مجا ہدو اور غا زیو ہوش کرو اپنی عزت و آبر و کا خیال کر و اپنے جسم و جان سے قیمتی اپنے مال ومتا ع سے قیمتی اپنے وطن کا احترام کرو اور اگر آج بھی یہ زندہ دل قوم اخلا ص اور اتفاق و اتحا د سے خوا ب غفلت سے سر اٹھا لے تو ہما را مستقبل محفوظ ہو سکتا ہے ۔
تری خودی میں اگر انقلا ب ہو پیدا عجب نہیں ہے کہ یہ چا رسو بدل جا ئے

یہ بھی پڑھیں  اداکار عابد علی کی نماز جنازہ ادا کردی گئی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker