علاقائی

پشین:حکومت تعلیم کے فروغ اورترقی کیلئے ہرممکن اقدامات کررہی ہے،صوبائی وزیرتعلیم ناصرخان جمالی

پشین﴿بیوروچیف /ملک سعداللہ جان ترین﴾صوبائی وزیر تعلیم ناصر خان جمالی نے کہا ہے کہ حکومت تعلیم کے فروغ اور ترقی کیلئے ہر ممکن اقدامات کررہی ہے 114مڈل سکولز کو اپ گریڈ کردیا ہے تعلیم کی بہتری پر کروڑوں روپے خرچ کی جارہی ہے تعلیم کے سلسلے میں کسی کے ساتھ کوئی رعائب نہیں کی جائیگی۔اساتذہ بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کریں ضلع پشین کے 82سکولز میں ریفرنگ کا کام کراچکے ہے ماڈل ہائی سکول پرنسپل اور گرلز ہائی سکول کی ہیڈ مسٹریس کا مسئلہ جلد حل کیا جائیگا۔ علاے کے تعلیمی اداروں کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی کوششیں کرینگے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مڈل سکول خوشاب مڈل سکول یوسف کچھ صوبائی وزیر تعلیم کالجز طاہر محمود صوبائی وزیر خوراک اسفندیار خان کاکڑ نے بھی خطاب کیا اس موقع پر ای ڈی او ایجوکیشن عبدالرشید ترین ڈی او کاریزات محمد ایوب تاج محمد سجاد حیدر نصیب اللہ ملک سرور محمد صادق عبدالرحیم فدا محمد اور دیگر بھی موجود تھے صوبائی وزیر تعلیم ناصر خان جمالی نے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے کہ تعلیم کے بغیر ترقی ممکن نہیں ہے موجودہ حکومت نے تعلیم کے فروغ اور ترقی کیلئے جتنے اقدامات کررہے ہیں اسے پہلے کبھی نہیں ہوئے تھے پیچھلے ایک سال میں مختلف علاقوں میں114مڈل سکولز کو اپ گریڈ کرکے ہائی سکولز کا درہ دیا گیا ہے برشور اور کاریزات میں صوبائی وزیر خوراک اسفندیار خان کاکڑ کے کاوشوں سے چھ مڈل سکولز کو اپ گریڈ کرکے ہائی کا درجہ دیا گیا ہے علاقے کے عوام پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ تعلیم کی بہتری کیلئے کام کریں اور اپنی تعلیم ادارں پر کھڑی نگاہ رکھیںتاکہ صوبے کا تعلیمی حالت مزید بہتربنائی جاسکیں۔علاوہ ازیں سابق ضلعی ناظم پشین ڈاکٹر گوہر اعجاز خان کاکڑ نے ریسٹ ہاؤس پشین میں صوبائی وزیر تعلیم کو پشین کے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پشین شہر کے واحد ماشل ہائی سکول پشین پیچھلے دو سالوں سے پرنسپل اور وائس پرنسپل کی پوسٹیں خالی ہے اور دیگر 17ہائی سکولز کے ہیڈ ماسٹر نہیں ہے گرلز ہائی سکول پشین کی ہیڈ مسٹریس کا مسئلہ حل کیا جائے اس موقع پر ملک محمد شاہ کاکڑ ڈسٹرکٹ زکواۃ چیئرمین سعداللہ کاکڑ اور دیگر قبائلی عمائدین بھی موجود تھے۔

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ : یونیورسٹی آف اوکاڑہ کے پہلے سالانہ سپورٹس فیسٹو ل کا کامیاب انعقاد

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker