تازہ ترینعلاقائی

پشین:عوام کے جان ومال کی تحفظ کو یقینی بنانے کیلئےپولیس موبائل گشت میں اضافہ کردیا ہے، ڈپٹی کمشنر

پشین(بیوروچیف ملک سعداللہ ترین سے)ڈپٹی کمشنر پشین عبدالواحد کاکڑ نے کہا کہ پشین کے عوام کے جان ومال کی تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے پولیس ولیویز موبائل گشت میں اضافہ کردیا ہے عیدگاہوں پر سیکورٹی تعینات کرنیکا پلان تیار کر لیا گیا ہے حاکم نہیں خادم ہو پشین پرامن ضلع ہے باہر سے آنیوالوں کو علاقے کا پرامن ماحول خراب کرنے کی ہر گز اجازت نہیں دی جائیگی عوام کے تعاون سے جرم وجرائم کی آخر حد تک پہنچ سکتے ہیں اساتذہ اور ڈاکٹروں کی غیر حاضری کسی صورت قبول نہیں تعلیمی معیار میں مزید بہتری لانے کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں وہ پشین ریسٹ ہاوس میں مقامی اخبار آواز پشین کے ایڈیٹر انچیف ملک سعد اللہ جان ترین کی قیادت میں ملنے والی صحافیوں کے ایک وفد کی اعزاز میں دی گئی افطار پارٹی کے موقع پر خطاب کررہے تھے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت قیام امن کی صورتحال میں مزید بہتری لانے کیلئے ہر صف اول دستے کا کردار اد ا کررہے ہیں پشین میں ہر مشکوک شخص پر نظر ہے عوام کے توقعات اور امیدوں کو کسی صورت ٹھیس نہیں پہنچائینگے سماج دشمن قوتیں چائیے جو بھی ہو انکے خلاف ہر حال میں کارروائی کرتے رہیں گے انہوں نے کہا کہ دکان اور فلیٹ مالکان کو چائیے کہ وہ دوسروں صوبوں سے آنیوالوں کی اچھی طرح چان بین کے بعد انہیں کرایے پر دکان یا فلیٹ دیا جائے تاکہ پاکستانی و ایک شہری ہونے کے ناطے ہم اپنا یہ فرض نبھا سکیں عوام اور انتظامیہ لازم وملزوم ہیں عید الفطر کی آمد پر سینکڑوں نفری شہر اور مضافات میں تعینات کردئیے ہیں انہوں نے کہا کہ انتہائی آفسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ پشین کا واحدسول ہسپتال میں ڈاکٹروں کی عدم موجودگی اور صفائی کی ابتر صورتحال اور مریضوں کا ہسپتال میں بے یارومددگار مایوسی پر حکام بالا کو مراسلہ بھیجوادیا گیا ہے آفسران حاکم نہیں خادم ہیں ڈیوٹی میں غفلت برتنے پر ملازمین کیخلاف سخت ایکشن لیا جائیگا انہوں نے کہا کہ تعلیمی معیار کو بہتر سے بہتر بنانے اور معماران قوم کی روشن مستقبل کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جارہے ہیں کھوکھلے اور بلندوبانگ دعووں پر یقین نہیں رکھتے عوامی مسائل کو جڑ سے اکھاڑنے کا تہیہ کررکھا ہے پشین میں آباد تمام قبائل سماج دشمن عناصر کیخلاف ہماراساتھ دیں

یہ بھی پڑھیں  ہمارے تمام مسائل کا حل اللہ اور اس کے رسولﷺ کی اطاعت میں ہے،مولانا طارق جمیل

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker