تازہ ترینعلاقائی

تحصیل پتوکی میں دونمبرسرخ مرچ اور بیسن بنانےکا دھندہ عروج پر

پتوکی(نامہ نگار) پتوکی اور گردونواح میں دو نمبر سرخ مرچ اور بیسن بنانے کا دھندہ عروج پر۔مافیا راتوں رات امیر ہونے کے چکر میں لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنے لگا۔ بچے اور شہری مختلف بیماریوں کا شکار ہونے لگے۔تفصیلات کے مطابق پتوکی اور گردونواح میں دو نمبرمرچ اور بیسن بنانے کا دھندہ عروج پرہے بااثر مافیا مرچوں میں بھوسا اور بیسن میں رنگ ملا کر دونوں چیزیں تیار کر رہا ہے۔ اس دھندہ میں ملوث لوگ راتوں رات امیر ہونے کے چکر میں شہریوں کی زندگیوں سے کھیل رہے ہیں یہی وجہ ہے کہ لوگ مختلف بیماریوں کا شکار ہورہے ہیں۔موت کے ان سوداگروں کو کوئی پوچھنے والا نہیں۔مختلف محکموں کے لوگ جو کاروائی کا پورا اختیار رکھتے ہیں حقائق کا علم ہونے کے باوجود انہوں نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں جس کی وجہ سے ان کے حوصلے بلند ہورہے ہیں۔ اور وہ دن رات اس مکروہ دھندے میں مصروف ہیں۔ پتوکی کے مختلف علاقوں شادمان کالونی ، پتوکی کہنہ روڈ، ہلہ روڈ، میگھہ روڈ، قصور والا اڈا ، انور کالونی وغیرہ میں ملاوٹ مافیا نے مختلف مقاما ت پر اپنی چکیاں لگا کر دو نمبرمرچ اور بیسن بنانا شروع کر رکھا ہے یہ دھندہ کرنے والے لوگ لوگوں کی زندگیوں سے کھیل کر خودکروڑ پتی بن چکے ہیں جس کی وجہ سے شہری موذی بیماریوں میں مبتلا ہوچکے ہیں۔مختلف محکموں کے افراد کا ان چکی مالکان سے مسلسل رابطہ ہے جس کی وجہ سے ابھی تک ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہوسکی۔ہیومن رائٹس کمیٹی تحصیل پتوکی کے صدر ندیم رضا خاں ایڈووکیٹ، شہر بچاؤ تحریک کے جنرل سیکرٹری حاجی محمد اسلم، انجمن تاجران نشاط روڈ کے جنرل سیکرٹری میاں ظہیر عباس ، پریس کلب پتوکی کے سیکرٹری اطلاعات ملک محمد سلیم نے وزیر اعلیٰ پنجاب، ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی اور ڈی سی قصور سے مطالبہ کیا ہے کہ ان مافیا کے خلاف فوری طور پر کاروائی کر کے مقدمات درج کئے جائیں اور یہ دھندہ کرنے والوں کی چکیوں کو سیل کیا جائے۔تاکہ لوگوں کی جانوں سے کھیلنے والے کا محاسبہ ہوسکے۔

یہ بھی پڑھیں  سپریم کورٹ نے آکسیجن سلنڈر کی قیمت مقرر کرنے کا حکم دیدیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker