پاکستانتازہ ترین

کمیشن رپورٹ میں لفظ بوگس نکلا تو ایاز صادق سے استعفیٰ لوں گا، پرویز رشید کا چیلنج

اسلام آباد (مانیٹرنگ سیل) پرویز رشید کہتے ہیں کہ عمران خان سچ بولنا کب سیکھیں گے، رپورٹ میں کہیں لفظ  بوگس لکھا ہوا تو ایاز صادق سے استعفیٰ لوں گا، بیلٹ پیپرز کے فرانزک ٹیسٹ کروانے کو تیار ہیں، ووٹ درست نہ نکلے تو کپتان کی فتح تسلیم کرلوں گا، جوڈیشل کمیشن میں رکاوٹ عمران خان خود ہیں، پی ٹی آئی دہشت گردوں کی اسٹریٹیجک پارٹنر ہے۔ عمران خان کی پریس کانفرنس کا بھرپور جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کہا کہ عمران خان سچ بولنا کب شروع کریں گے، وہ  قوم کو گمراہ کرتے ہیں، پی ٹی آئی سربراہ بولتے کے کاغذ پر کچھ لکھا ہوتا ہے وہ بولتے کچھ ہیں، عمران خان کے پاس پڑھنے کا وقت نہیں تو حامد خان سے پڑھوالیں۔ انہوں نے چیلنج کیا کہ رپورٹ میں کہیں لفظ بوگس لکھا ہو تو ایاز صادق سے استعفیٰ لوں گا، کسی ووٹ کیلئے کمیشن رپورٹ میں بوگس لفظ استعمال نہیں ہوا، عمران خان کے پاس کوئی سچ نہیں، ان کا کہنا ہے کہ عمران خان پہلے سے زیادہ اکثریتی ووٹ سے الیکشن ہارے، ایاز صادق کیلئے نکلے بیلٹ پیپرز کا فرانزک ٹیسٹ کروانے کو بھی تیار ہیں، بیلٹ پیپرز سرکاری نہ نکلے تو عمران کی جیت تسلیم کرونگا، میں خود اپنے ہاتھ سے آپ کے گلے میں ہار ڈالوں گا۔ وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ عمران خان آئیں جوڈیشل کمیشن کے پاس چلتے ہیں، تحریک انصاف خود جوڈیشل کمیشن نہیں بنوانا چاہتی، جہانگیر ترین کے حلقے میں تھیلے کھلے، 400 ووٹ مزید کم ہوئے، تم جتنے تھیلے کھولو گے ہر تھیلے سے شیر نکلے گا، ہمارا کیا قصور جہانگیر ترین نے 2 کروڑ کا وکیل لیا، صدیق بلوچ 2 لاکھ کا وکیل کرکے انتخابات جیت گئے، سعد رفیق کے حلقے میں سماعت کی تاریخییں حامد خان آگے لے جاتے ہیں۔ پرویز رشید نے تحریک انصاف کو دہشتگردوں کا اسٹرٹیجک پارٹنر قرار دیتے ہوئے کہا کہ آپریشن ضرب عضب شروع ہوا تو عمران خان نے دھرنا شروع کردیا، آج تخریب کاروں کو انجام تک پہنچانے کیلئے ملٹری کورٹس بنیں تو نیا مسئلہ لے آئے، تحریک انصاف کبھی کہتی تھی دہشتگردی کیخلاف جنگ ہماری نہیں، خان صاحب اور دہشتگردوں کی پسندیدہ تاریخ ایک کیوں ہوتی ہے، خان صاحب 16 دسمبر کو پاکستان بند کرانا چاہتے تھے، دہشت گردوں نے اسی روز اسکول پر حملہ کیا۔ پی ٹی آئی سربراہ کی پریس کانفرنس کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کہا ہے کہ عمران خان کی درخواست پر دوبارہ گنتی کرائی گئی، خان صاحب کو سمجھ نہیں آرہا ہار پر شرمندگی سے کیسے بچا جائے، پی ٹی آئی رہنماء کو تکنیکی تفصیل کا خود پتہ نہیں، ہار تسلیم کرلیں، ورنہ شرمندگی ہوگی۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button