پاکستانتازہ ترین

سوئس کیس کوٹھپ نہیں ہونا چاہیے، پرویزمشرف

لندن (نمائندہ خصوصی) پاکستان کے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ سوئس کیس ہمارے دور سے چل رہا ہے، اس کیس کو ٹھپ نہیں ہونا چاہیے۔ سابق صدر نے کہا کہ سپریم کورٹ بڑی عدالت ہے اس کے فیصلوں پر عملدرآمد ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیشہ ملکی مفاد میں فیصلے کرنے چاہئیں، امریکا سمیت دوسرے ممالک سے اچھے تعلقات رکھے جائیں جذباتی فیصلے نہیں کرنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ سلالہ حملہ پر امریکا کو ایک دو دن میں معافی مانگ لینی چاہیے تھی اگر وہ نہیں مانگ رہے تھے تو حکومت کو انہیں معافی مانگنے پر مجبور کرنا چاہیے تھا۔ ایک سوال پر سابق صدر نے کہا کہ الیکشن کی تاریخ کے اعلان اور نگران حکومت کے قیام کے بعد پاکستان آؤں گا فی الحال اپنی پارٹی کو متحرک کر رہا ہوں،الیکشن وقت پر ہوئے تو ضرور حصہ لوں گا ابھی تک یہ کلیئر نہیں کہ انتخابات کب ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنے دور اقتدار میں ایمرجنسی لگا کر کوئی غلط نہیں کی تھی بلکہ پاکستان کو بچایا۔انہوںنےدعوی کیا کہ اپنے نو سالہ دور اقتدار میں پاکستان کی معیشت کو مضبوط کیا۔ سابق صدر نے کہا کہ اسامہ بن لادن کی پاکستان میں موجودگی کا انہیں علم نہیں تھا۔ اپنے اداروں پر الزام تراشی نہیں کرنی چاہیے جب نائن الیون ہوا تو سی آئی اے کو بھی نہیں پتا چل سکا۔

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ:سیٹھ کالونی اوکاڑہ میں گندے پانی کے گٹر ابل پڑئے، پانی مکینوں کے گھروں میں داخل ہو گیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker