تازہ ترینعلاقائی

پھولنگر:بلدیہ کے تمام ذمہ دران عملہ کے خلاف نوٹس لیاجائےاورنوکریوں سے فارغ کیاجائے

بھائی پھیرو(نامہ نگار)گزشتہ روز جامع مسجدانوار غوثیہ کے مفتی علامہ غلام حسن نورانی صاحب نے ایک اجتماع سے خطاب کرتے چیف آفیسر بلدیہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ شخص عرصہ دراز سے لاوارث نعشوں کو بغیر کفن و غسل کے اپنے ماتحت کرسچن عملہ کے ذریعے مقامی قبرستان میں گڑھے کھدوا کر دفن کروا رہا ہے جو کہ اسلامی و مذہبی لحاظ سے سراسر ظلم ہے جبکہ ایک مسلمان کی نماز جنازہ فرض ہے جو کہ بلدیہ آفیسر چند ٹکوں کی خاطر اللہ تعالیٰ کو بھی بھول چکا ہے مزید انہوں نے کہا کہ ہمارا علاقہ بھائی پھیرو سراب گوٹھ کی شکل اختیار کر چکا ہے جس کی وجہ سے آئے دن کوئی نہ کوئی نشئی مر رہا ہے اور بلدیہ والے اُسے جانوروں کی طرح گڑھے کھود کر دفن کر رہے ہیں جبکہ بلدیہ بھائی پھیر ومیں نامعلوم نعشوں کے کفن ،دفن کے لیے باقاعدہ فنڈز رکھے جاتے ہیں مگر بلدیہ آفیسر چند ٹکوں کو ہضم کرنے کی خاطر لاوارث مسلمان نعشوں کے ساتھ یہ سلوک کرہا ہے، جامع مسجدٹینکی والی کے امام مولانا علامہ محمد جمیل سعیدی صاحب نے دوران خطبہ کہا کہ ایسا شخص مسلمان کہلوانے کے قابل نہیں جس کی نگرانی میں اتنا بڑا ظلم ہورہا ہو اور وہ صرف چند ٹکوں کی خاطر خاموش رہے۔اس سلسلہ میں عوامی پریس کلب پھولنگرکا ایک ہنگامی اجلاس بلایا گیا جس کی صدارت رانا افتخار علی خاں نے کی بعدازاں اجلاس میں ایک پُر زور مذمتی قرار داد منظور کی گئی جس میں کہا گیاکہ ایسے شخص کو سولی پر لٹکا دیا جائے جو نامعلوم نعشوں کے ساتھ ایسا سلوک کر رہا ہے آخر میں علماء کرام ،عوامی و سماجی لوگوں کے علاوہ صدر عوامی پریس کلب پھولنگر نے ڈی سی او قصور سے پُر زور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ایسے چیف آفیسر سمیت بلدیہ بھائی پھیر و کے تمام ذمہ دران عملہ کے خلاف سخت سے نوٹس سخت لیتے ہوئے انہیں نوکریوں سے فارغ کردیا جائے اور لا وارث نعشوں کے لئے رکھے جانے والے فنڈ زکی اعلیٰ سطح پرتحقیقات کرائی جائیں

یہ بھی پڑھیں  جاپان کی یونیورسٹی میں سگریٹ نوش اساتذہ کی بھرتیوں پر پابندی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker