تازہ ترینعلاقائی

پھول نگر:کڑوروں روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے پھول ٹراما سنٹر نے ایک اور زخمی کو موت کی نیند سُلا دیا

پھول نگر(حسن نظامی سے)کڑوروں روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے پھول ٹراما سنٹر نے ایک اور زخمی کو طبی سہولت نہ ملنے پہ موت کی نیند سُلا دیا۔مقامی فیکٹری کا سیکیورٹی گارڈ کو ریسکیو1122والے لے کر گئے مگر ڈاکٹر نہ موجود ہونے سے زخمی نے تڑپ تڑپ کر جان دے دی ۔ سماجی حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ یا تو ٹراما سنٹر کو ختم کر دیا جائے یا اس کو24گھنٹوں ایمرجنسی کے لئے ڈاکٹرز کو موجود رہنے کا پابند کیا جائے ۔ تفصیلات کے مطابق پھول نگر جمبر کے قریب مقامی پیپر ملز کے سامنے نامعلوم کار نے سائیکل سوار کو ٹکر ماری جس سے سائیکل سوار سیکیورٹی گارڈمحمد عاشق شدید زخمی ہو گیا ۔ حادثے کی اطلا ع ملتے ہیں ریسکیو 1122نے مو قع پر پہنچ کر مریض کو پھول ٹراما سنٹر پھول نگر منتقل کیا مگر کروڑوں روپے سے بننے والے پھول ٹراما سنٹر میں ایک بھی ڈاکٹر مو جود نہ تھا جس کی وجہ سے زخمی عاشق نے تڑپ تڑپ کر جان دے دی، متوفی گھر کا واحد کفیل تھا۔50سالہ عاشق ولد عمر دین جو کہ جھلاراں ،بہڑوال پتو کی کا رہا ئشی تھا ۔ یہاں یہ بات قا بل ذکر ہے کہ پھول ٹراما سنٹر ایمرجنسی کے لئے بنایا گیا مگر چھو ٹے چھوٹے ایکسیڈنٹ پر مریضوں کو لا ہور ریفر کردیا جا تا ہے ۔ سماجی رہنماؤں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ کڑوروں روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے پھول ٹراما سنٹر کو یا تو بند کر دیا جائے تاکہ یہاں لانے والے زخمی طبی سہولیات نہ ملنے پہ موت کی وادی میں نہ چلے جائیں یا اسے 24گھنٹے ایمرجنسی کے لئے ڈاکٹرز کو موجود رہنے کا پابند کیا جائے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button