تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو: جانوروں میں پر اسرار بیماری پھیل جانے سے لاکھوں روپے کے سینکڑوں مویشی ہلاک

بھائی پھیرو(نامہ نگار) جانوروں میں پر اسرار بیماری پھیل جانے سے لاکھوں روپے کے سینکڑوں مویشی ہلاک۔کسانوں کا مرے مویشیوں کے اوپر کھڑے ہوکر انوکھا احتجاجی مظاہرہ ۔مسئلہ حل نہ ہوا تو تو مردہ جانوروں کو وزیر اعلی پنجاب اور ویٹنری ڈاکٹروں کے گھر وں کے باہر پھینک کر احتجاج کریں گے کسان بورڈ کی دھمکی۔حکومت کی ہیلپ لائن اور مقامی ڈاکٹروں کو اطلاع کے باوجود محکمہ لایؤ سٹاک بیماری کا علاج کرنے سے قاصر۔کاشتکاروں میں خوف ہراس۔تفصیلات کے مطابق بھائی پھیرو اور گردونواح کے دیہاتوں گگہ سرائے ،کامونگل ،نتھے جاگیر،دیناتھ ،سمیت درجنوں دیہات میں جانوروں میں پر اسرار بیماری پھیل چکی ہے ۔اس بیماری سے لاکھوں روپے کے کسانوں کے سینکڑوں مویشی مر چکے ہیں اور اب یہ بیماری کئی دیہات میں پھیل چکی ہے۔گزشتہ چند دنوں میں نواحی گاؤں گگہ سرائے میں پندرہ سے زاید بھینسین اور گائے مر چکے ہیں مگر محکمہ لائیو سٹاک کے ذمہ داران لمبی تان کے سوئے ہوئے ہیں۔گزشتہ روز موضع گگہ سرائے کے درجنوں افراد نے رانا رفاقت انتظار کی قیادت میں مرے ہوئے مویشیوں کے اوپر کھڑے ہوکر محکمہ ویٹرنری ڈاکٹروں اورذمہ داران کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا،سینہ کوبی کی اور محکمہ لائیوسٹاک کی بے حسی کا ماتم کیا۔مظاہرین کے لیڈر رانا رفاقت نے بتایا کہ اس پر اسرار بیماری میں پہلے مویشی کی پچھلی ٹانگیں سوج جاتی ہیں ،ایک آدھ گھنٹہ میں متاثرہ جانور زمین پر گر جاتا ہے اور اسکے منہ سے جھاگ بہنا شروع ہو جاتی ہے۔بیمار جانور ایڑیاں رگڑ رگڑ کر منہ سے عجیب و غریب آوازیں نکالنا شروع کر دیتا ہے اور صرف تین گھنٹے کے اندر اندر مر جاتا ہے۔مظاہرہ میں شانل سردار محمدصادق نے کہاتوہم پرست اور ان پڑھ کاشتکار اس بیماری کو ہوائی چیزوں یعنی جنوں اور چڑیلوں کی کاروائی قرار دیکر جعلی پیروں اور عطائی ڈاکڑوں کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں انہوں نے کہا اسکی ایک گائے ،حاجی یعقوب کی ایک گائے،اور ایک بچھڑا،رانا روٹو کے دو بچھڑے ،حاجی امانت بھٹی کی دوگائیں اور دیگر کئی زمینداروں کے مویشی مر چکے ہیں۔جبکہ رانا رفاقت نے بتایا کہ اس نے اس بیماری کے بارے بھائی پھیرو،لمبے جاگیر اور دیناتھ ویٹنری ہسپتال کے ڈاکٹروں کو بتایا مگر انہوں نے یہ کہہ کر جان چھڑالی کہ یہ ایک نیا وائرس ہے اوراسکا کوئی علاج نہیں۔مظاہرین نے بتایا کہ انہوں نے مقامی بے حس ڈاکٹروں سے مایوس ہوکر حکومت پنجاب کی مویشیوں کے علاج کیلیے دی گئی ہیلپ لائین080009211 پر بار بارفون کیا تو وہاں پر موجود ایک افسر نے کئی بارماہرین کی ٹیم بھیجنے کا وعدہ کیا لیکن ابھی تک کسی ٹیم نے بھی متاثرہ علاقے کا دورہ نہیں کیا۔مویشی مر رہے ہیں،کسان کنگال ہو رہے ہیں مگر بے حس حکمہ حیوانات کے افسران کسانوں کے کنگال اور مویشیوں کے مرنے کا تماشہ دیکھ رہے ہیں۔متاثرین نے کہا کہ ایک طرف حکومت پنجاب سرکاری خزانے سے کروڑوں روپے کے اشتہارات دیکر کسانوں کو ہیلپ لائین کے ذریعے علاج مہیا کرنے کے جبلند بانگ دعوے کرتی ہے مگر دوسری طرف پورا محکمہ پہلے تو فون ہیء نہیں سنتا اور اگر خوش قسمتی سے فون مل بھی جائے تو ذمہ داران جھوٹے وعدے کرکے کسانوں کو ٹرخا دیتے ہیں۔اس موقع پر موجود کسان بورڈ ضلع قصور کے صدر رائے محمد افضل کھرل نے خادم اعلی پنجاب سے مطالبہ کیا کہ جلد از جلد اس پر اسرار بیماری کے علاج کیلیے ہنگامی اقدامات کیے جائیں وگرنہ متاثرہ کسان مردہ جانوروں کو وزیر اعلی پنجاب اورویٹرنری ڈاکٹروں کے گھروں کے باہر پھینک کر احتجاج کریں گے

یہ بھی پڑھیں  محکمہ موسمیات کی خیبر پختونخوا، بالائی پنجاب میں بارش کی پیشگوئی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker