تازہ ترینعلاقائی

حکومت پنجاب نےسپیشل ایجوکیشن سنٹر کیلئے جگہ کی الاٹمنٹ کی منظوری دے دی

بھائی پھیرو(نامہ نگار) امید فاؤنڈیشن کی مسلسل کوششوں سے سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ حکومت پنجاب نے تحصیل پتوکی کے معذور بچوں کے سپیشل ایجوکیشن سنٹر کے لیے جگہ کی الاٹمنٹ کی منظوری دیکرباقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا۔اس سے قبل سپیشل ایجوکیشن سنٹر کی عمارت چالیس ہزار روپے ماہانہ کرایہ پر حاصل کی ہوئی تھی جگہ کی فراہمی پر حکومت پنجاب کے مشکور ہیں۔ تفصیلات کے مطابق معذور افراد کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم امید فاؤنڈیشن کے چیئرمین محمد عمراور ان کے ساتھیوں نے تین سال قبل وزیر اعلیٰ پنجاب ، ریونیو ڈیپارٹمنٹ اور سپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کو درخواستیں ارسال کی تھیں کہ پتوکی میں سپیشل ایجوکیشن سنٹر کرائے کی بلڈنگ میں چل رہا ہے اور اس کا ماہانہ کرایہ چالیس ہزار روپے ہے اور سالانہ پانچ لاکھ روپے بنتا ہے جو حکومتی خزانے پر بڑا بوجھ ہے اس بوجھ کو ہلکا کرنے کی ضرورت ہے اور یہی لاکھوں روپے معذوروں کی فلاح و بہبود پر خرچ کیے جاسکتے ہیں۔جبکہ پتوکی اور اس کے گردونواح میں سینکڑوں ایکڑ سرکاری اراضی بیکار پڑی ہے کیوں نہ اسے استعمال میں لایا جائے اور اس میں سے معذور بچوں کے سپیشل ایجوکیشن سنٹر کے لیے اراضی فراہم جائے تاکہ معاشرے کے معذور بچے کھلی جگہ ،اچھی عمارت اور صاف ستھرے ماحول میں بیٹھ کر بہتر طریقے سے تعلیم حاصل کر سکیں۔ امید فاؤنڈیشن نے تین سال کے عرصہ میں متعدد بار کوششیں کیں بالآخر حکومت پنجاب نے ملانوالہ بائی پاس پتوکی کے قریب 29 کنال جگہ الاٹ کرکے دیرینہ مسئلے کو حل کردیا ہے جس پر تعمیر کا کام بھی جلد شروع ہوجائے گا۔ امید فاؤنڈیشن کے چیئرمین محمد عمر سیکرٹری نشرواشاعت محمد یوسف ندیم نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ معاشرے کے معذور افراد کی تعلیم اور ان کی فلاح و بہبود کے لیے حکومت پنجاب نے 29 کنال جگہ فراہم کرکے معذور بچوں سے ہمدردی کا ثبوت دیا ہے جس کے لیے ہم وزیر اعلیٰ پنجاب ، سیکرٹری سپیشل ایجوکیشن اور سیکرٹری ریونیو ڈیپارٹمنٹ کے بے حد مشکور ہیں جنہوں نے اراضی فراہم کرکے علاقے کا دیرینہ مسئلہ حل کردیا ہے۔اب ہم گذارش کرتے ہیں کہ اس کی تعمیر کے لیے جلد از جلد فنڈز جاری کیے جائیں۔یہ بھی مطالبہ ہے کہ پھول نگر میں بھی معذور بچوں کی ابتدائی تعلیم کے لئے سکول منظورکیا جائے

یہ بھی پڑھیں  سعودی شاہ کے سامنے جھکنے کی تصویر پر امریکا میں ہنگامہ کھڑا ہو گیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker