تازہ ترینعلاقائی

قصور:نوجوان پرتشدد پرایس ایچ او الہ آباد سمیت 7پو لیس ملازمین کےخلا ف مقدمہ درج

Police Tashadad 12الہ آباد (محمد سرور زاہد 27) جو ڈیشنل مجسٹریٹ چو نیا ں کے حکم پر الہ آبا د پو لیس کے ہا تھو ں تشدد کا نشا نہ بننے والے نو جوان کا ڈی ایچ کیو ہسپتال کے میڈیکو لیگل بو رڈ سے تشدد ثا بت غیر قا نو نی حراست کے دوران تشدد جسم کے مختلف حصو ں پر 10ضربات کے نشا نا ت ایس ایچ او الہ آباد سمیت 7پو لیس ملازمین کے خلا ف مقدمہ کے اندراج کے لئے آئی جی پنجاب سے نو ٹس لینے کی اپیل۔ تفصیلات کے مطا بق وارڈ نمبر 10الہ آباد کے رہا ئشی غریب محنت کش محمد مبین نے جو ڈیشل مجسٹریٹ چو نیا ں جنا ب شا ہد نصیب کو درخواست گزاری کہ ایس ایچ او الہ آباد میا ں معظم علی اور دیگر پولیس ملا زمین نے تین دن تک تھا نہ الہ آباد میں غیر قا نو نی حرا ست میں رکھ کر شدید تشدد کا نشانہ بنا یا جس پر جو ڈیشل مجسٹریٹ چو نیا ں نے ڈی ایچ کیو قصور کے میڈیکل بو رڈ سے انکوا ئری کر وانے کا حکم دیا دو ران میڈیکل بو رڈ چا ر رکنی ڈا کٹرو ں کی ٹیم نے محمد مبین کے جسم کے مختلف حصو ں پر 10ضربات کی نشا ندہی کر دی ۔محمد مبین نے آئی جی پنجاب سے اپیل کی ہے کہ تین دن تک تھا نہ الہ آباد میں غیر قا نو نی حراست میں رکھنے اور جسم کے مختلف حصوں پر تشدد کر نے پر ایس ایچ او الہ آباد اور دیگر ملا زمین کے خلاف مقدمہ درج کر کے مجھے تحفظ فراہم کیا جا ئے ۔ایس ایچ او الہ آباد میا ں معظم علی نے اپنے مو قف میں بتا یا کہ محمد مبین سے تھا نہ میں پو چھ گچھ کی تھی لیکن بعد میں سا بقہ تحصیل نائب نا ظم اصغر علی مٹھو کے حوالے کر دیا گیا تھا جبکہ محمد مبین نے اپنے مو قف میں کہا کہ دوران حراست پو لیس مجھ پر لو ہے کے پا ئپ پھیرتی رہی ،ڈا نگ اور چھترول کر نے کے علاوہ رسہ پر بھی لٹکا ئے رکھا گیا اور بعد ازاں را حیل اے ایس آئی نے 5ہزار روپے رشوت لیکررہا کیا تھا ۔

یہ بھی پڑھیں  شیرکی سیاسی خودکشی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker