تازہ ترینعلاقائی

پھولنگر:گاڑیوں کے دھویں،فیکٹریوں سے نکلنے والے گندےپانی سےلوگ اپاہج

بھائی پھیرو ﴿ نامہ نگار﴾محکمہ ماحولیات و صحت بھائی پھیرو کے عملہ کی مجرمانہ خاموشی کے نتیجہ میں کھٹارہ گاڑیوں سے نکلنے والے دھویں اورفیکٹریوں سے نکلنے والے گندے اور زہر آلودپانی سے ہزاروں افراد اپاہج اور مختلف جان لیوا بیماریوں میں مبتلا ، زہر آلود پانی کے استعمال سے کئی افراد وسینکڑوں جانور مرنے لگے، محکمہ صحت و محکمہ ماحولیات اس مسئلہ کے تدارک کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدام اٹھانے کی بجائے خاموش؟ شہریوں نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ذمہ دار محکمے یہاںبھائی پھیرو میں اپنی ٹیمیں بھیج کر پانی کی ٹیسٹینگ اورمقامی لوگوں کا چیک اپ کر کے ان کی ٹریٹمنٹ کرے تاکہ غریب لوگ سسک سسک کر مرنے کی بجائے ُسکھ کا سانس لے سکے کیونکہ بھائی پھیرو کا ایریا فری زون ہونے کی وجہ سے چاروں اطرف سے فیکٹریوں سے گھرا ہوا ہے اور بااثر فیکٹری مالکان نے زہریلے پانی کی مناسب طریقے سے فلٹریشن کرنے کی بجائے انتہائی ڈھٹائی سے اسے گہرا بور کر کے گندے اور زہر آلود پانی کو زیر زمین چھوڑ رکھا ہے جس سے بھائی پھیرو شہر اور گردونواح کے دیہاتوں کا پانی گندا اور زہر آلود ہو چکا ہے جس کے پینے سے متعدد افراد اپاہج و سینکڑوں جانور مر رہے ہیں اور شہری مختلف جان لیوا بیماریوں میںمبتلا ہورہے ہیں اور رہی سہی کسر دھواں چھوڑنے والی کھٹارہ گاڑیوں نے پوری کردی ہے جبکہ محکمہ ماحولیات و صحت بھائی پھیرو کا نااہل عملہ دہاڑی لگائو مال کمائو کی پالیسی پر عمل پیرا ہوکر اپنا فرض منصبی ادا کر رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  حیدرآباد : سندھ کے ساتھ لاوارثوں جیسا سلوک بند کیا جائے، مولا بخش چانڈیو حکومت پر برس پڑے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker