شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / پی ایس ایل 4کا میلہ آج سجے گا

پی ایس ایل 4کا میلہ آج سجے گا

شائقین کرکٹ کے انتظار کی گھڑیاں ختم آج صحرائی علاقے متحدہ عرب امارات کے شہر دوبئی میں مقامی وقت کے مطابق رات 8بجے پی ایس ایل کے چوتھے ایڈیشن کی رنگا رنگ تقریب کا آغاز ہو گا جس کاکھلاڑیوں اور شائقین کو بے صبری سے انتظار تھا، تقریب کو یاد گار بنانے کے لئے پاکستان کرکٹ بورڈ نے خصوصی اہتمام کر رکھا ہے افتتاحی تقریب میں مقامی و بین الاقوامی اسٹارز جن میں 13سال بعد اکٹھا ہونے والا پاکستان کا مشہور بینڈ۔جنون۔امریکی ریپر،اور سنگر پٹ ہل ،غیر ملکی بینڈبونیم،فواد خان،عائمہ بیگ،شجاع حیدر بھی اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے،افتتاحی تقریب کے بعد رات دس بجے دفاحی چیمپئن اسلام آباد یونائٹیڈ اور اور لاہور قلندر کے درمیان کانٹے دار مقابلہ ہو گا ،پورے ایڈیشن کے دوران سنسی خیزی ،ہلہ گلا ،دما دم مست قلندر،چوکوں چھکوں کی برسات اور دلوں کی دھڑکنیں بے ترتیب ہوتی رہیں گی ،گذشتہ سال کی طرح اس بار بھی 6ٹیمیں اسلام آباد یونائٹیڈ ،پشاور زلمی ،کراچی کنگز،کوئٹہ گلیڈی ایٹرز،لاہور قلندر اور ملتان سلطان حصہ لے رہی ہیں تاہم ان میں بڑے پیمانے پر ردو بدل کیا گیا ہے پہلے کی نسبت انتہائی اب زیادہ جوش و خروش نظر آ رہا ہے جس کی بنیادی وجہ 8میچز کا انعقاد پاکستان میں ہے جس پر جہاں شائقین میں جوش عروج پر وہیں ہر ٹیم کی بھی یہ خواہش ہے کہ وہ اپنی سر زمین پر ہوم گراؤنڈ میں زیادہ سے زیادہ میچ جیتے اس لئے تمام کھلاڑی جیت کے لئے مزید جانکاری کریں گے،پی ایس ایل کے موجودہ ایڈیشن کے لئے ٹرافی کی تقریب رونمائی دو روز قبل ہوئی جس میں چیرمین پی سی بی احسان مانی،ڈائریکٹر محمد وسیم اور تمام ٹیموں کے کپتانوں ،فرنچائز مالکان ،آفیشلز اور دیگر مہمانوں نے شرکت کی ،پی ایس ایل 4لے ؛لئے بنائی گئی ٹرافی میں 50ہزار کرسٹلز لگائے گئے ہیں اسیبنانے میں 4ماہ لگے قومی پرچم کے سبز اور سفید رنگوں کے ساتھ ساتھ چاند اور ستارہ بھی بنایا گیا ہے اس موقع پر بہترین بیٹسمین،باؤلر،وکٹ کیپر،فیلڈر اور ٹورنامنٹ میں بہترین نظم و ضبط کا مظاہرہ کرنے والی ٹیم کو اسپرٹ آف کرکٹ ایوراڈ کی بھی رونمائی کی گئی، احسان مانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ پی ایس ایل اس وقت دنیا میں ایک معروف ترین اور قابل فخر برانڈ بن چکا ہے اس ایونٹ کی کامیابی میں فرنچائز کھلاڑی اور اسپانسرز شامل ہیں جس میں نوجوان کھلاڑیوں کے لئے صلاحیتیں دکھانے کا بہترین موقع ہے سیزن فور کی ٹرافی پاکستانی ثقافت کے رنگوں کی ترجمانی کرتی ہے ،کراچی کنگز کے کپتان عماد وسیم نے کہاجیت اور ہار اللہ کے ہاتھ میں ہے ساری ٹیمیں مضبوط ہیں جیتنے کی بھرپور کوشش کریں گے PSLنے پاکستان کرکٹ کی ترقی میں اہم کردار ادا کیامیری دعا ہے کہ جلد پوری پی ایس ایل پاکستان آئے،کوئٹہ گلیڈی ایٹرزکے کپتان سرفراز احمد نے کہابد قسمتی سے ہم پی ایس ایل نہیں جیت سکے تاہم تمام ایونٹس میں مجموعی طور پر ہماری کارکردگی بہت اچھی رہی اور ہم دو مرتبہ فائنل تک پہنچے ،اس ایونٹ نے قومی ٹیم کو اچھے کھلاڑی دیئے ہمااری کوشش ہو گی کہ اس مرتبہ یہ سیزن ہمارے نام ہو،ملتان سلطان کے کپتان شعیب ملک نے کہا گذشتہ برس پلے آف کے لئے ہم کوالیفائی نہیں کر سکے ہم کوشش کریں گے کہ تسلسل کے ساتھ اچھی کارکردگی دکھا سکیں،لاہور قلندر کے کپتان محمد حفیظ نے کہاہم نے غلطیوں سے بہت سیکھا ہے اس مرتبہ بھی ہم چیلنج لینے کو تیار ہیں ٹیم مینجمنٹ نے اچھی ٹیم کا انتخاب کیا ہے آخری نمبر پر رہنے کا داغ دور کرنے کی کوشش کریں گے،پشاور زلمی کے ڈیرن سیمی نے کہا پشاور زلمی اس بار بھی شاندار کاکردگی کے تسلسل کو برقرار رکھے گی اصل ہدف صرف جیت ہو گی، پی ایس ایل فور میں فیصل آفریدی ،مائیکل ،رچرڈ ورتھ،رین مورسے،طارق رشید،احسن رضا،شاہ زیب رضا،راشد ریاض اور آصف یعقوب ایمپائرنگ جبکہ محمد امین ،روشن ماہنامہ اور جاوید ملک ریفری کے فرائض انجام دیں گے،عالمی شہرت یافتہ پاکستانی ایمپائر علیم ڈار اس بار پی ایس ایل میں ایک میچ بھی سپر وائز نہیں کر سکیں گے وہ 7فروری کو جنوبی افریقہ سیریز کے لئے جا چکے ہیں،کمنٹری کے لئے گراہم اسمتھ،میتھو ہیڈن،ڈینی موریسن ،مائیکل سیلز،بازید خان،ایلن وکنز،کیپلرویسلز اور رمیض راجہ کو منتخب کیا گیا ہے براڈ کاسٹنگ کے لئے دنیا کی معروف سپورٹس پروگرامنگ اور پروڈکشن کمپنی آی ایم جی ریلائنس نے پی سی بی کے ساتھ شراکت داری کی ہے، پی ایس ایل کے اس ایڈیشن کے دوران مصروف بین الاقوامی شیڈول کے باوجود بڑے ناموں کو لانے میں کامیاب رہی ہے،اس ایڈیشن میں کھلاڑیوں کی زیادہ تعداد وہی ہے جو ماضی میں نظر آئی تاہم اس بار کئی کھلاڑی بدلتی ٹیموں کے ساتھ ایکشن میں نظر آئیں گے شاہد آفریدی دو مرتبہ پشاور زلمی ایک دفعہ کراچی کنگز اور اب ملتان سلطان ،پی ایس ایل کے سب سے عمر رسیدہ کھلاڑی مصباح الحق اسلام آباد یونائٹیڈ کو خیر باد کہتے ہوئے پشاور زلمی اور تین بار ہی پشاور زلمی کا حصہ رہنے والے محمد حفیظ اس بار لاہور قلندر کے کپتان ہیں محمد حفیظ نے گذشتہ سیزن میں 4نصف سینچریاں جوڑنے کے ساتھ 7وکٹ بھی حاصل کئے تھے اسلام آباد یونائٹیڈ نے مصباح الحق کی جگہ محمد سمیع کو اپنی ٹیم کی کمان سونپ دی ہے،محمد سمیع اب تک27مییچوں میں 37وکٹیں بکھیر کر اس ٹورنامنٹ کے کامیاب باؤلر اور شروع سے اسی ٹیم کے ساتھ ہیں تاہم پشاور زلمی کے وہاب ریاض 32میچوں میں 48وکٹ حاصل کر کے پہلے نمبر پر ہیں شعبہ بیٹنگ میں بھی پشاور زلمی کے کامران اکمل 929رنز جن میں وہ2سینچریاں بنانے والے واحد بیٹسمین ہیں بھی پہلے نمبر پر ہیں، زلمی میں مصباح کی شمولیت کو بھی اہم قرار دیا جا رہا ہے اب تک مجموعی طور سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی کا اعزاز پشاور زلمی کے کامران اکمل کے پاس ہی ہے بابر اعظم زیادہ رنز کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں،کسی ایک میچ میں انفرادی زیادہ117 سکور بنانے کا اعزاز شرجیل خان کے پاس ہے یہ ریکارڈ پہلے ایڈیشن میں بنا ،گذشتہ ایڈیشن میں جارحانہ بلے بازی کرنے والے لیونک رونچی نے 435رنز بنا کر کسی ایک ایڈیشن میں سب سے زیادہ رنز بنانے کا ریکارڈ بنایاتیز ترین ففٹی کا اعزاز بھی لیونک کے پاس ہی ہے،بہترین وکٹ کیپنگ میں کامران اکمل نے 30اور محمد رضوان نے 24 شکار کے ساتھ سر فہرست ہیں ،کسی ایک سیزن میں وہاب ریاض 13اور فہیم اشرف12وکٹیں حاصل کرنے کے ساتھ پہلے اور دوسرے نمبر پر ہیں،ایک میچ میں کفایتی باؤلنگ میں پہلے نمبر پر روی بوپارہ نے 16اور عمر گل نے 24رنز دے کر 6/6وکٹیں حاصل کیں،میچ میں زیادہ سکور 203 بنانے کا اعزاز کوئٹہ گلیڈی ایٹرزاور کم سکور59بنانے کا ریکارڈ ملتان سلطان کے پاس ہے پی ایس ایل میں پانچ مرتبہ سکور نے دو سو کا ہندسہ عبور کیا اتفاق یہ کہ دو مرتبہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے لاہور قلندر کے خلاف اور دو مرتبہ ہی لاہور قلندر نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے خلاف ڈبل سینچری سکور بنائے تاہم لاہور قلندر تو ٹارگٹ حاصل نہ کر سکی مگر اس کے دئیے گئے ہدف کو عبور کر لیا گیا،200 رنز بنانے والی پانچویں ٹیم پشاور زلمی ہے،پہلے سیزن کے فائنل میچ میں مین آف دی میچ ڈیون سمتھ دوسرے میں ڈیرن سیمی جبکہ تیسرے میں لیونک رونچی رہے، پی ایس ایل کے اس سیزن میں شامل دو پاکستانی بیٹسمین بابر اعظم اور عماد وسیم T20عالمی رینکنگ میں بالترتیب تیسرے اور چھٹے نمبر پر ،باؤلنگ میں شاداب خان ،عماد وسیم اور فہیم اشرف تیسری ،چوتھی اور نویں پوزیشن پر ہیں ان پانچوں کھلاڑیوں کے علاوہ پی ایس ایل میں شامل کوئی بھی کھلاڑی ٹاپ ٹین کا حصہ نہیں،پی ایس ایل 4میں پشاور زلمی کی جانب سے کم ترین عمر کے حامل15سالہ وقار سلام خیلی کو بھی شامل کیا گیا تھا تاہم بعد میں ان کی جگہ آندرے فلیچر کو شامل کر لیا گیا وقار سلام خیلی کھیل تو نہیں سکے مگر اتنی کم عمر میں ان کی سلیکشن ہی بہت بڑا اعزاز ہے،اس بار سب سے زیادہ نئے چہرے ملتان سلطان کے ساتھ ہیں شاہد آفریدی کے ساتھ شہرت یافتہ آل راؤنڈرآندرے رسل بھی اسکواڈ میں شامل ہیں پی ایس میں ان کی شہرت اسلام آباد اورلاہور قلندر کے درمیان میچ میں سپر اوور میں ایک چھکا اور چوکا شامل ہے جس کے باعث لاہور قلندر کو شکست کا ذائقہ چکھنا پڑا تھا، ،پی ایس ایل 4کے پہلے 7میچ 14سے 17فروری تک دوبئی،دو روز آرام کے بعد رواں ماہ 20سے24 تک8میچ شارجہ ،26فروری سے یکم مارچ تک 7میچ دو بئی اورUEAمیں آخری 4میچ 4سے 5مارچ تک ابوظہبی میں کھیلیں جائیں گے اس کے کرکٹ اسٹارزپاکستان پہنچ کر 3مارچ سے لاہورکے قذافی سٹیڈیم اور کراچی کے نیشنل سٹیڈیم کو آباد کریں گے فائنل کراچی میں ہو گا،قسمت کی دیوی کس ٹیم کے ساتھ ہوتی ہے اس کا فیصلہ 17مارچ کو ہو گااس ایڈیشن میں 6ٹیمیں گروپ مرحلہ میں 10.10 میچ کھیلے گی گروپ مرحلہ کے بعد پہلی چار ٹیمیں پلے آفز کے لئے کوالیفائی کریں گی جبکہ دو ٹیموں کو گھر جانا پڑے گا،اسلام آباد یونائٹیڈ پی ایس ایل کی کامیاب ترین ٹیم ہے جس نے پہلے اورتیسرے ایڈیشن کو اپنے نام کیا دوسری بار اس کا نمبر چوتھا تھا،مجموعی طور پر بھی اسلام آباد یونائٹیڈ نے 32میں سے20میچوں میں فتح حاصل کی پی ایس ایل میں کامیابی کی یہ شرح سب سے زیادہ ہے ،پشاور زلمی نے 34میں سے19 ،کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے 31میں سے17،کراچی کنگز نے 31میں سے12،ملتان سلطان نے10میں سے4اور لاہور قلندر نے 26میں سے صرف 7میں کامیابی حاصل کی ،کراچی کنگز دو مرتبہ تیسرے ایک مرتبہ چوتھے ،لاہور قلندر دو بار 5ویں ایک بار چھٹے نمبر پر رہی ( ہر ایڈیشن میں آخری نمبر لاہور قلندر کا مقدر رہااور ناکام ترین ٹیم ثابت ہوئی)، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز دو بار دوسری پوزیشن پر رہی اور ایک بار چوتھی ،،پشاور زلمی ایک بار سر فہرست ایک بار دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کی،اس بار لاہور قلندر بہتر کارکردگی کے لئے بہت پر امید ہے اسے محمد حفیظ ،یاسر شاہ ،شاہین شاہ آفریدی ،فخر زمان کے ساتھ ساتھ اے ڈی بی ویلئیر ،نیوزی لینڈ کے کوری اینڈرسن اور ویسٹ انڈیز کے کارلوس بریتھ ویٹ جیسے ریکارڈ یافتہ کھلاڑیوں کی خدمات حاصل ہیں ،اے بی ڈی ویلئیر پہلی بار پی ایس ایل کا حصہ بنے ہیں وہ اب تک 114ٹیسٹ، 228ون ڈے اور78ٹی ٹونٹی کھیل چکے ہیں تیز ترین سینچری اور ففٹی کا عالمی ریکارڈ بھی ان کے پاس ہے،ماضی میں لاہور قلندر کے لئے کرس گیل،ڈیون براوو،برینڈن مکولم اور سنیل نارائن بھی بہتر کردار ادا نہ کر سکے،تیسرے ایڈیشن میں انٹری ڈالنے والی ٹیم ملتان سلطان نے اپنے پہلے ہی میچ میں پشاور زلمی کو ہرا کر سنسی پھیلا دی اس نے لاہور قلندر کو بھی پچھاڑا بعد میں اس کی بہتر کارکردگی میں تسلسل نہ رہا،ملتان سلطان مالی سطح پر پی سی بی کے ساتھ اپنے مالی معاملات کو سنبھال نہ پائی تو بورڈ نے اس کے حقوق اپنے نام کرتے ہوئے اس کا نام چھٹی ٹیم رکھ دیا تاہم جہانگیر ترین کے بیٹے علی ترین کی جانب سے اس ٹیم کی خریداری کے بعد اس کا نام پھر سے ملتان سلطان جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا اب ٹام مووس کی جگہ جوآن بوتھا اس ٹیم کے کوچ ہیں جبکہ ٹیم میں شامل کھلاڑیوں جوئے ڈینلی اسٹیون سمتھ ،نکولسن یوران اور قیس احمد کی جگہ آندرے رسل ،جیمز ولسن ،جانسن چارلس اور کرس گرین کو شامل کیا گیا ہے شہرہ آفاق آل راؤنڈر شعیب ملک ملتان سلطان کو لیڈ کر رہے ہیں،کراچی کنگز بھی عماد وسیم کی قیادت میں انتہائی پر عزم ہے اسے پاکستان کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر کی بطور کوچ خدمات حاصل ہیں ان فارم بیٹسمین بابر اعظم کے ساتھ ساتھ محمد عامر،کولن منرو ،کولن انگرام،عثمان شنواری،آران سمرز ،پشاور زلمی کو پاکستان سے پیار کرنے والے ڈیرن سیمی کی قیادت میں کیرن پورلارڈ،کامران اکمل،لمام ڈاسن،حسن علی ،ڈیوڈ میلان ،اسلام آباد یونائٹیڈ کو لیونک رونچی ،فہیم اشرف،شاداب خان،ای این بیل،رومان رئیس،سمت پٹیل،کیمرون ڈیلیواٹ جیسے کھلاڑی میسر ہیں پاکستان میں کھیلے جانے والے میچوں کے لئے ٹکٹس کی رجسٹریشن ویب سائٹ پر جاری ہے ان کی باقاعدہ فروخت کا آغاز مقرر کردہ کورئیر سروس کے تحت 17فروری سے شروع ہو گی دیگر مقررہ مقامات پر یہ25 فروری سے دستیاب ہوں گی،کراچی میں ہونے والوں میچوں کے لئے کم از کم ٹکٹ ریٹ500اور لاہور کے لئے 1000روپے رکھا گیا ہے ٹکٹوں کی یہ قیمت 12ہزار روپے تک ہو گی تاہم فائنل میچ کے لئے ریٹس مزید بڑھائے جائیں گے، دنیائے کرکٹ میں T20کی دھوم اور شائقین کی بڑھتی ہوئی دلچسپی کی وجہ سے اس فارمیٹ کو جلا بخشی تو اس فارمیٹ کے ٹورنامنٹس مقامی سطح پر مشہور ہوئے پی ایس ایل کا شمار اس وقت دنیا کی مشہور ترین لیگز میں ہوتا ہے، پاکستان میں جب سری لنکن ٹیم پر دہشت گردوں نے حملہ کیا تو انٹرنیشنل کرکٹ ہم سے روٹھ گئی اب بھی کئی ممالک کی ٹیمیں سیریز کھیلنے پاکستان آنے سے انکاری ہیں مگر کرکٹ کو پاکستان میں زندہ اور مزید جلا بخشنے کے لئے پی ایس ایل کا آغاز بہترین ثابت ہوا اسی وجہ سے ورلڈ الیون ،سری لنکا اور ویسٹ انڈیز کی ٹیموں نے پاکستان کا دورہ کیاتھا،

یہ بھی پڑھیں  بھائی پھیرو:دیناناتھ میں ملٹی نیشن کمپنی کے ورکروں کا اپنے حقوق کے لئے دھرنا