شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / پی ایس ایل4کا تاج کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے سر

پی ایس ایل4کا تاج کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے سر

روشنیوں کے شہر اور عروس البلاد کراچی کے نیشنل سٹیڈیم میں پی ایس ایل فور کے فائنل میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے حسب توقع پشاور زلمی کویکطرفہ میچ میں شکست سے دوچار کرنے کے بعد بعدچمچماتی ٹرافی اور پاکستان میں کرکٹ کا سب سے بڑا میلہ پنے نام کرتے ہوئے تاریخ بدل ڈالی ،اس فتح کو سرفراز احمد کی ورلڈ کپ سے پہلے بڑی کامیابی قرار دیا گیا ہے ، پشاور زلمی کے خوابوں کو چکنا چور کر دیااس میچ میں پشاور زلمی کی بیٹنگ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی تباہ کن باؤلنگ کے سامنے بری طرح لڑ کھڑا گئی اور وہ مخالف ٹیم کو بڑا ٹوٹل دینے میں مکمل ناکام رہی ،ماہرین کرکٹ نے بھی میچ سے قبل ہی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کواس سیزن کی اعصاب شکن جنگ میں ثابت قدمی کی وجہ فیورٹ قرار دے رکھا تھا اور وہی ہواحالانکہ دونوں ٹیموں میں بڑے بڑے نامور کھلاڑی شامل تھے جو میچ کا پانسہ پلٹنے کی صلاحیت سے مالا مال ہیں مگر فائنل میچ صرف چند میچوں کی طرح یکطرفہ ہوا جبکہ مجموعی طور پر میچوں میں دلوں کی دھڑکنیں بے ترتیب ہوتی رہیں کہ پتا نہیں کیا ہو گا کئی بار تو ایسا بھی ہوا کہ یقینی جیت شکست میں اور شکست فتح میں تبدیل ہو گئی ، ٹاس کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے سرفراز احمد نے جیت کر ڈیرن سیمی کو بیٹنگ کی دعوت دی تھی،پی ایس ایل 4کے میلے کے آخری روزاپنی اپنی فیورٹ ٹیموں کی شرٹس پہنے شائقین کرکٹ جوق در جوق نیشنل سٹیڈیم امڈ آئے،پشاور زلمی کے سپورٹرز تو300میٹر لمبا پاکستانی پرچم لے کر سٹیڈیم پہنچے میچ دیکھنے کے لئے کراچی،لاہور،اسلام آباد،پشاور،کوئٹہ ،فیصل آباد سمیت تمام بڑے شہروں میں میچ دیکھنے اور دکھانے کے لئے بڑی بڑی سکرینیں لگائی گئیں، اختتام پر شاندار میوزیکل تقریب کا اہتمام کیا گیا تھا جسے شہداء کرائسٹ چرچ نیوزی لینڈ کی وجہ سے نہ صرف محدود کیا گیا بلکہ ان کی یاد میں تقریب کے آغاز پر تمام شرکاء سٹیڈیم نے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی، فائنل میچ کی سیکیورٹی کو پہلے میچوں کی نسبت مزید سخت کیا گیایہ فرائض 20ہزار سے زائد سیکیورٹی اہلکاروں و افسران نے انجام دئیے دلچسپ میچ کو دیکھنے کے لئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی ، چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باوجوہ،ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر لیفٹیننٹ جنرل آصف غفور، نیول چیف ظفر محمود،وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ،وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال ،وزیر مملکت برائے داخلہ امور شہر یار آفریدی،وفاقی ریلوے وزیر شیخ رشید احمد،گورنر سندھ عمران اسماعیل،بلاول بھٹو زرداری، سعید غنی،مشیر وزیر اعظم عثمان ڈار اور وزرائے خیبر پی کے عاطف خان اور شوکت یوسف زئی سٹیڈیم پہنچے ،اختتامی تقریب میں چیر مین پی سی بی احسان مانی نے کہا پی ایس ایل کو کامیاب بنانے میں نہ صرف کراچی بلکہ پوری قوم کے شکر گذار ہیں اگلے سیزن میں تمام میچ پاکستان میں ہی کرائیں گے،وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہاہم نے وعدہ کے مطابق کراچی میں پی ایس ایل کے میچ کرائے ہیں ہم چاہ رہے ہیں کہ انٹرنیشنل کرکٹ ملک میں واپس آئے جس کا آغاز بھی کراچی کے نیشنل سٹیڈیم سے ہی ہو،افتتاحی تقریب میں ہسپانوی فٹ بل اسٹارکارلوس پائیول نے بھی شرکت کی اور کہا شاندار میزبانی پر پاکستانیوں کا شکر گذار ہوں،پشاور زلمی کے کپتان ڈیرن نے مرد بحران کامران اکمل جو اس وقت بھی پی ایس ایل کی تاریخ میں سب سے زیادہ رنز اوردو سینچریاں جوڑنے والے کھلاڑی ہیں کو گذشتہ میچ میں کراچی کنگز کو پی ایس ایل کے فائنل سے باہر کرنے میں کلیدی کردار ادا کرنے والے بیٹسمین امام الحق کو بھیجامگر اس نے پی ایس ایل کے فائنل میں اپنی ٹیم اور سپورٹرز کو بری طرح مایوس کرتے ہوئے صرف 3رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہو کر پشاور زلمی کی شکست کی بنیاد رکھ دی،گلیڈی ایٹرز کی نپی تلی باؤلنگ کے آگے زلمی کی بیٹنگ لائن ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور وقفے وقفے سے وکٹیں جھڑنے کا سلسلہ تھم نہ سکا15اوور ز میں زلمی کی آدھی ٹیم صرف96رنز پر پویلین واپس جا چکی تھی،کامران اکمل بھی ڈرے ڈرے اور پہلے کی نسبت انتہائی محتاط نظر آئے مگر انہوں نے محمد نواز کو ایک ہی اوور میں پہلے چھکا اور دو چوکے لگا کر 18سکور داغے تو میچ میں جان آئی مگر اسی اوور کی آخری گیند پر21کے ذاتی سکور اور ٹیم کے مجموعی 31رنز پر کامران اکمل نے بولڈ ہو کر پویلین کی راہ لی یوں دونوں اوپنرزچوتھے اوور میں صرف31رنز پر ٹیم کو مشکلات میں ڈال کر گھر کی راہ لے کر چکے تھے،پشاور ابتدائی 8اوور میں50اور 16اوور کی پہلی گیند پر100رنز بنا پائی،دوسرے ،چوتھے اورر کے بعد 10ویں اوور میں صہیب مقصود 62کے مجموعے پر20رنز بنا کر کیچ دے بیٹھے، عمر امین نے جارحانہ انداز میں سکور بڑھانے کی کوشش کی مگرچودھویں اوور کی پہلی گیند پر38کے ذاتی سکور پر وکٹ گنوا دی عمر امین ہی پشاور زلمی کے فائنل میچ میں ٹاپ سکورر رہے اگلے ہی اوور میں نبی گل9 پر فواد احمد کا شکار بنے،کیرن پولارڈ7وہاب ریاض12(رن آؤٹ)اورڈیرن سیمی 20ویں اووور کی آخری گیند پر بڑی ہٹ لگانے کی کوشش میں 18رنز پر باؤنڈری کے قریب کیچ آؤٹ ہوئے اس میچ میں پشاور زلمی بیٹنگ میں بری طرح کام رہتے ہوئے مقررہ اوورز میں138کا مجموعہ کھڑا کر پائی اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو ٹرافی کے حصول کے لئے صرف139رنز کا ہدف دیا تیز رفتار باؤلر محمد حسنین نے عمر امین اور کیرن پولارڈ کی اہم وکٹیں حاصل کیں اسی وجہ سے 18سالہ نوجوان نے فائنل میچ میں مین آف دی میچ کا ایوارڈ حاصل کیا پی ایس ایل میں شاندار باؤلنگ پر آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں قومی ٹیم میں بھی شامل کر لیا گیا ہے، جبکہ ڈیون براوو، محمد نواز نے 2.2اور فواد احمد نے ایک وکٹ حاصل کی، ہدف کے تعاقب میں سٹار آل راؤنڈر شین واٹسن اوراحمد شہزاد میدان میں اترے مگر اس میچ میں قسمت نے شین واٹسن کا ساتھ نہ دیا اور وہ19کے مجموعی 7ذاتی سکور پر رن آؤٹ ہو گئے پی یس ایل میچز کی وجہ سے پہلی مرتبہ پاکستان آنے والے واٹسن جب دلبرداشتہ ہو کر پویلین واپس لوٹے توان کے چاہنے والے بھی ان کی جاندار Hitsکو دیکھنے سے محروم رہے دوسرے آؤٹ ہونے والے بیٹسمین احسن علی نے25رنز بنائے ،ان کے بعد ریلی روسو آئے اور احمد شہزاد کے ساتھ ڈٹ گئے دونوں بیٹسمینوں نے73رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو بآسانی فتح سے ہمکنار کیا،احمد شہزاد نے فائنل میچ میں واحد بننے والی ففٹی اپنے نام کی،بہترین کھلاڑی آف ٹورنامنت اور بہترین بیٹسمین کا ایوارڈ شین واٹسن ،بہترین باؤلر کا اعزاز حسن علی ،پلئیر آف ایمرجنگ کراچی کنگز کے عمر خان ،اسپرٹ آف دی کرکٹ محمد آصف اور بہترین وکٹ کیپر کا ایوارڈ اسلام آباد کے لیونک رونکی کے نام رہا،پی ایس ایل فور کی ٹرافی ڈاکٹر عارف علوی،احسان مانیہ اور سلاطان علی الانہ نے مشرکہ طور پر کامیاب کپتان کو دی،ساس میچ کی خاص بات یہ بھی کہ فائنل تک رسائی حاصل کرنے والی دونوں ٹیموں میں دو حقیقی بھائی کامران اکمل اور عمر اکمل ایک دوسرے کی مد مقابل تھے، رواں سیزن میں پشاور زلمی فائنل سمیت 4مرتبہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مد مقابل آئی مگر ہر بار شکست اس کا مقدر ٹھہرا،گروپ میچوں میں 6اور8جبکہ فائنل میچ میں بھی8وکٹوں سے ہی شکست تھمائی،کوالیفائر میچ میں بھی زلمی کو 10رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا،فائنل میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے اسکواڈ میں سرفرازاحمد،احمد شہزاد،شین واٹسن،احسن علی،ریلی روسو،عمر اکمل،ڈیون براوو،محمد نواز،سہیل تنویر،محمد حسنین اور فواد احمد پشاور زلمی الیون میں ڈیرن سیمی،کامران اکمل،امام الحق،صہیب مقصود،کیرن پولارڈ،وہاب ریاض،حسن علی،ٹائمل ملز،کرس جارڈن،عمر امین اور نبی گل شامل تھے،پی ایس ایل کے تمام سیزن میں پشاور زلمی اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے درمیان میچوں میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا پلڑا بھاری رہا،دونوں ٹیمیں اس سے قبل دو مرتبہ فائنل کھیل چکی ہیں، 2016میں اسلام آباد یونائٹیڈ اور2017میں پشاور زلمی نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو ہرایا، 2018میں اسی سٹیڈیم میں اسلام آباد یونائٹیڈ نے پشاور زلمی سے ٹرافی چھین لی،رواں سال شین واٹس کی عمدہ ترین کارکردگی نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز فیورٹ ٹیم بنی شین واٹسن نے اس سیزن میں چار بار ففٹی سے زائد سکور کیا ہے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے پشاور زلمی کو ہرا کر ہی سب سے پہلے فائنل تک پہنچی ،پشاور زلمی نے دوسرے ایلمینیٹر میں گذشتہ سال کی فاتح اسلام آباد یونائٹیڈ کو48رنز کے واضح مارجن سے چت کیا اور فائنل تک پہنچی یہاں پھر اس کا جوڑ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز سے پڑ گیا جس نے گروپ میچز اور کوالیفائر میچ میں پشاور زلمی کی ایک نہ چلنے دی اس سیزن میں پشاور زلمی کے لئے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کسی ڈراؤنے خواب کی طرح ثابت ہوئے اور اس کی خواہشات کو روند ڈالا،ڈیرن سیمی کے نزدیک فائنل میں 180رنز سے زیادہ کا مجموعہ کھڑا کر کے مخالف ٹیم کو دباؤ میں لے آئیں گے مگربد قسمتی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی شکل میں ان کے سامنے چوتھی بار سامنے آن کھڑی ہوئی ،اس بات سے انکار ممکن نہیں کہ پی ایس ایل میں شامل غیر ملکی کھلاڑیوں میں اصل کردار ویسٹ انڈین کھلاڑیوں کا ہے جن میں سے ڈیرن سیمی تو پاکستانی قوم کا دل جیت چکے ہیں ڈرین سیمی نے جیت پر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو مبارکباد دی جبکہ کامیاب کپتان سرفراز احمد نے جیت پر پوری قوم ،اور سیکیورٹی اداروں کا شکریہ ادا کیا ،انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ رچرڈسن نے کراچی میں کہا پاکستان میں کرکٹ کی بحالی صحیح سمت میں گامزن ہے پی ایس ایل جیسے اقدامات قابل تعریف ہیں،چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باوجوہ نے پی ایس ایل کے کامیاب پر پوری قوم کو مبارکباد دی ہے،میچ کے دوران ISPRکے ڈائریکٹر جنرل آصف غفور نے کہا کہ وزیر اعطم عمران خان نے کہا ہے کہ آئندہ پی ایس ایل کے تمام میچز پپاکستان میں ہوں گے میری اس حوالے سے چیر مین کرکٹ بورڈ سے بھی بات ہوئی ہے آئندہ سال نہ صرف بڑے شہروں بلکہ یونس خان سٹیڈیم میراں شاہ،شاہد آ فریدی سٹیڈیم خیبر اور مظفر آباد میں بھی میچ ہوں گے پاکستان میں کھیلوں اور دیگر معمول کی سرگرمیاں بحال ہو چکی ہیں،وزیر اعظم عمران خان نے سیکویرٹی فورسز ،پی سی بی ،نئی پی ایس ایل چیمپئین اور ویون رچرڈ کو مبارکباد دیپی ایس ایل 4اپنی تمام تر خوبصورتیوں رعنائیوں اور جوش و خروش کے بعد اختتام پذیر ہو چکا ہے مگر کئی ینگ اسٹار اور دلچسپیاں انمٹ ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  پریس کلب بھائی پھیرو کا تعزیتی اجلاس