پاکستانتازہ ترین

گستاخانہ مواد شائع کرنے پر قادیانی ویب سائیٹ بلاک

آپ کو معلوم ہوگا کہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نازیبا اور فحش ویب سائیٹس بلاک کرنے کے حوالے سے کافی شہرت رکھتی ہے۔ اتھارٹی کی جانب سے حال ہی میں قادیانی کمیونٹی کی ویب سائیٹ alislam.org پر پاکستان بھر میں بین لگا دیا گیا ہے۔ ذراع کے مطابق اس ویب سائیٹ پر نبی آخرالزماں حضرت محمدﷺ کے خلاف گستاخانہ مواد شائع کیا جارہا تھا۔ویب سائیٹ بلاک کیے جانے کی اطلاع آج فراہم کی گئی ہے، ویب سائیٹ کھولنے پر صارف کو مطلع کیا جاتا ہے کہ ویب سائیٹ کو پی ٹی اے کی جانب سے بلاک کر دیا گیا ہے،رابطہ کے لیے اتھارٹی کا ای میل پتہ بھی شائع کیا گیا ہے۔

گو کہ اس ویب سائیٹ کا بین ہٹنے کے کوئی آثار تو نہیں ، لیکن سابق اسمبلی ممبر فرح ناز اصفھانی(زوجہ حسین حقانی) کی جانب سے ٹوئیٹر پر پیغام دیا گیا ہے کہ انہوں نے قادیانیوں کی اس ویب سائیٹ کو بلاک کرنے کے خلاف اعلی حکام سے رابطہ کر لیا ہے۔

یہاں یہ بات توجہ طلب ہے کہ کسی بھی ویب سائیٹ کو بلاک کرنے کا عمل شفاف ہونا چاہیے اور عوام کو اسکی تمام تر تفصیلات سے آگاہ کرنا چاہیے۔ اگر کسی ویب سائیٹ پر فحش، نازیبا یا گستاخانہ مواد موجود ہے تو اسے بلاک ضرور کرنا چاہیے لیکن تمام حقائق کو عوام کے سامنے بھی پیش کرنا چاہیےجیسے :
پی ٹی اے کو چاہیے کہ وہ تمام تر بلاکڈ ویب سائیٹس کی فہرست جاری کرے جس میں بتایا جائے کہ انہیں مستقل طور پر بلاک کیا گیا ہے یاعارضی طور پر۔
پی ٹی اے کو چاہیے کہ وہ ویب سائیٹ بلاک کرنے کی وجہ بیان کرے۔
کسی بھی ویب سائیٹ کے بلاک ہونے پر کوئی ایسا طریقہ کار ہونا چاہیے جس کے ذریعے متنازعہ مواد ختم کرکے اسے ان بلاک کروایا جاسکے۔
پی ٹی اے کو چاہیے کہ وہ کوئی ایسا نظام وضح کرے جس کے ذریعے صارفین نازیبا ویب سائیٹس کی نشاندہی کرسکیں۔

خیال ہے کہ پی ٹی اے کی اس فیصلہ پر قادیانی کمیونٹی کی جانب سے کافی احتجاج کیا جائے گا۔ لہذا اتھارٹی کو چاہیے کہ وہ اس بین کی مکمل تفصیلات میڈیا پر جاری کرے جس میں گستاخانہ مواد کی نشاندہی کی جائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker