پاکستانتازہ ترین

قومی اسمبلی میں اسرائیلی جارحیت کیخلاف مذمتی قرارداد منظور

اسلام آباد(بیورویچیف) قومی اسمبلی نے ملک کواسلحہ سے پاک کرنے اوراسرائیلی جارحیت کے خلاف مذمتی قرارداد کی منظوری دے دی ۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں ڈاکٹر فاروق ستار نے ملک کو اسلحہ سے پاک کرنے کی قرارداد پیش کی ۔ قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ ملک کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہے حکومت غیر قانونی اسلحہ برآمد کر کے اسلحہ کے استعمال پر پابندی لگانے کے اقدامات کر ے اور ملک کو اسلحہ سے پاک کیا جائے ۔ جے یو آئی کے مولانا فضل الرحمٰن نے قرارداد کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ملک حالت جنگ میں ہے خون کا کھیل کھیلا جارہا ہے ادارے عوام کو تحفظ دینے میں ناکام ہوچکے ہیں اگرعام آدمی سے اسلحہ چھینا گیا تو وہ اپنا تحفظ کیسے کرے گا۔ لوگوں کو اپنے تحفظ کیلئے اسلحہ رکھنے کا حق ہونا چاہیئے۔ ن لیگ جے یو آئی اور عوامی نیشنل پارٹی نے قرارداد کو ایک فضول مشق قراردیا اور کہا کہ ملک کو اسلحہ سے پاک کرنا ممکن نہیں ۔ سکیورٹی ادارے اپنی ذمہ داری پوری کریں۔ غزہ پر اسرائیلی جارحیت کے خلاف ایم کیو ایم اور ن لیگ کی الگ الگ قراردادوں کی بھی منظوری دی گئی ۔ن لیگ کے بیرسٹر زاہد حامد نے قرارداد پیش کرتے ہوئے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیاکہ وہ اسرائیلی فوجی جارحیت کو روکنے کیلئے اقدامات کر ے۔قرارداد میں اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں سینکڑوں فلسطینیوں کی شہادت کی مذمت کی گئی اور اسے ریاستی دہشت گردی اور یک طرفہ کارروائی قرار دیا گیا ۔ قرارداد میں عالمی برادری سے اسرائیلی بربریت کے خاتمے کا مطالبہ کیا گیا ۔ قرارداد میں میانمر میں مسلمانوں کے قتل عام کی بھی مذمت کی گئی ۔پیپلز پارٹی کے نور عالم خان کاکہناتھا کہ ڈاکٹر فاروق ستار نے پختون قوم کو دہشت گرد کہا وہ اس پر معافی مانگیں ۔ انھوں نے کہا کہ ملک کو اسلحہ سے پاک کرنے کی قرارداد کی حمایت نہیں کر تے اس قرارداد کو ایوان میں یکطرفہ کارروائی کے زریعے بل ڈوز کیا گیا ہے اور ووٹنگ نہیں کروائی گئی۔

یہ بھی پڑھیں  عامر خان کے خلاف بغاوت کا مقدمہ درج

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker