تازہ ترینشیر محمد اعوانکالم

21دسمبر 2012 قیامت ؟؟؟؟؟

sher muhammad awanکائنات کو خالق حقیقی نے انتہائی خوبصورت بنایا ہے اور اسکا کوئی ذرہ تک رائیگاں نہیں ہے۔ہر ایک شے کی کوئی خاص ترتیب اورمقصد ہے۔انسان چونکہ عقل و شعور میں تمام مخلوقات سے ممتاز ہے اسی لیے وہ کائنات کی خوبصورتی سے زیادہ مسحور کن اور سحر زدہ نظر آتا ہے۔لیکن تخلیق کائنات کے ساتھ ساتھ خالق حقیقی نے ایک ایسی چیز بھی رکھ دی جس کے تصور سے ہی کائنات کی رنگینی اور حسن پھیکا پڑ جاتا ہے۔اور وہ ہے موت ۔اسکے ساتھ ساتھ یوم حساب مقرر کر دیا گیا ہے جسے عام لفظوں میں قیامت کہا جاتا ہے۔قیامت پر یقین رکھنا اک مسلمان کے ایمان کا حصہ ہے۔دوسرے مذاہب میں قیامت سے متعلق مختلف نطریات ہیں۔بحرحال تقریبا تمام مذاہب کے پیروکار قیامت کو ایک ہولناک اور لرزا دینے والی تباہی سمجھتے ہیں۔
کچھ عرسہ پہلے سائنس فکشن کا بدترین خیال سے جانی گئی فلم دی اینڈ آف دی یونیورس ” THE END OF THE UNIVERSE 2012 "ریلیز ہوئی اور اسے دیکھنے والے قیامت کی تباہ کاریوں اور ہولناکیوں سے اور زیادہ خوفزدہ ہو گئے۔ آج دنیا بھر میں لوگوں کی بڑی تعداد اس خوف میں مبتلاہیں کہ 21 دسمبر 2012 کو رؤے زمین پر خوفناک تباہی سے کائنات نیست و نابود ہونے والی ہے۔الیکٹرونک اور پرنٹ میڈیا نے جلتی پر تیل والا کام کیا اور پچھلے چند ماہ میں اس موضوع پر مختلف بیانات اور بحث مباحثوں نے وہم و یقین کے درمیان بھٹکتے لوگوں کو اور زیادہ خوفزدہ کر دیا۔ کچھ ممالک میں تو بہت سے لوگ اپنی نجی اور کاروباری مصروفیات ترک کر کے خود کو محفوز کرنے کے ذرائع ڈھونڈنے میں مشغول ہو گئے۔
21 دسمبر 2012 کی حقیقت کیا ہے اور ایسا کیوں کہا جا رہا ہے یہ جاننا ضروری ہے۔ہندو ؤں کے چند ماہرنجوم کے مطابق 21 دسمبر 2012 کے بعد کا دور کلجگ ہے۔یعنی اندھیر نگری ہے۔انکے مطابق ایک بہت بڑی تباہی ہو گی لیکن اس کے بعد کیا ہو گا وہ یہ بتانے سے قاصر ہیں۔اسکے علاوہ کمپیوٹر کی دنیا میں ایک سافٹ وئیر ویب بوٹ ہے جو کئی سال سے انٹر نیٹ پر مختلف واقعات اور حادثات کا تجزیہ کرتا ہے اسکے حساب کتاب کے مطابق بھی اسی تاریخ کو ایک بہت بڑی تباہی کا عندیہ دیا گیا ہے۔جب کہ اس یقین کو سب سے زیادہ تقویت مایا تہذیب کے کیلنڈروں سے ملی۔یہ میکسیکو کی بہت پرانی تہذیب تھی اور مایا لوگ علم نجوم میں اپنا ثانی نہیں رکھتے تھے۔انہوں نے کائنات کو سات ادوار میں تقسیم کیا تھا اور انکے مطابق ہر دور کے اختتام پر ایک ہولناک تباہی منتظرہے۔انکے مطابق یہ دیوتاؤں کا قہر ہوتا ہے ۔اور پچھلے تمام ادوار میں ایسا ہی ہوا ہے۔اگر مایا کیلنڈر کو بنیاد بنایا جائے تو پانچویں دور کا اختتام 21 دسمبر 2012 (بعض ماہریں کے مطابق 23 دسمبر) کو ہو رہا ہے۔اور لوگوں کا خوف اس لیے بھی زیادہ ہے کہ کی آج تک تمام پیش گوئیاں سچ ثابت ہوئی۔سورج گرہن ،چاند گرہن حتی کہ پہلی اور دوسری جنگ عظیم بھی انکی پیش گوئیان ہی تھی جو کہ من عن سچ ثابت ہوئی۔باقی دو ادور کے متعق مایا کیلنڈر کچھ نہیں بتاتے کیونکہ انکے مطانق کائنات کا اختتام اسی دور پر ہو گا۔
چندمسلمان سائنسدانوں نے بھی ایسی ہی پیش گوئی کی ہیں۔پاکستان کے ایک نامور سائنسدان نے بھی 2005 میں اپنی کتاب میں لکھا ہے کہ دسمبر 2012 میں زمین پر بہت بڑی تبدیلی آنے والی ہے اور 2012 سے پہلے اسکے آثار نظر آنے ہونگے۔جاپان اور امریکہ میں آنے والے حالیہ سمندری طوفان بھی اسی پیش گوئی کا حصہ تھا۔کچھ ماہرین کے مطابق زمین پر بہت بڑی تبدیلی آئے گی۔اور دنیا میں امن و امان ہو گا ۔خیر یہ بات تو گونگے کے خواب جیسی ہے۔
اگر اس بارے میں اسلامی نظریات کو مدنظر رکھتے ہوے جائزہ لیا جائے تو بھی قیامت کی بہت سی نشانیاں پوری ہو چکی ہیں۔اور 21 دسمبر 2012 جمعہ کا دن بھی ہے لیکن چند احادیث میں دس محرم بروز جمعہ کا ذکر ہے لیکن اب شوال شروع ہو چکا ہے۔بحرحال ان تمام باتوں کے علاوہ چند بڑی نشانیاں ابھی باقی ہیں اور ان میں سب سے بڑی نشانی حضرت عیسیؑ کی آمد اور دجال کا خاتمہ ہے اور عیسائیت کا بھی یہی یقین ہے کہ انکا مسیحا آئے گا اسکے باوجود بہت سے ممالک میں ہر طرف پھیلا موت کا بھیانک خوف سمجھ سے بالا تر ہے۔ویسے موت کا خوف بھی ایک نعمت ہے جو انسان کو بہت سی برائیوں سے بچائے رکھتا ہے۔بحرحال ان تمام باتوں سے مطلب یہ نہیں کہ قیامت دور ہے۔لیکن کم از کم 21 دسمبر 2012 کو نہیں ہے۔یہاں یہ بھی گماں ہوتا ہے کہ شاید یہ سب کسی کاروباری مہم کا حصہ ہو اسی لیے اس وہم کو بہت بڑے پیمانے پر پھیلایا گیا اور لوگوں میں خوف و ہراس پھیلا کر اپنے پروڈکٹس کی فروخت کی راہ ہموار کی گئی ہو۔اسکی ایک مثال لائف سیونگ جیکٹس ہیں جو کہ لاکھوں کی تعدادمیں فروختکی گئی۔اور اس خوف کی مدمیں ایک بہت بڑا بزنس کیا گیا۔اگر اس طرح موت سے بچا جاتا تو آج دنیا پر سارے رئیس زندہ ہوتے۔
اگر پاکستان کی بات کی جائے تویہاں پچھتر فیصد لوگوں کو ایسی کسی خبر سے آگاہی ہی نہیں ہے۔اور جو اس خوفناک خبر سے باخبر ہیں وہ ویسے ہی بے فکر ہیں اسکی ایک وجہ تو یہ ہے کہ انکے عقائد کے مطابق قیامت کی ساری نشانیاں پوری نہیں ہوئی اور دوسری اہم وجہ یہ ہے کہ وہ پاکستان میں ہر روز برپا قیامت صغرٰی سے اتنے پریشان اور تباہ حال ہیں کہ انہیں کسی نئی تباہی کے بارے میں سوچنے کی فر صت ہی نہیں۔اگرچہ قیامت بہت خطرناک اور تباہ کن ہو گی اس لیے پاکستان کے حالات کو قیامت سے تشبیہ نہیں دی جا رہی لیکن جس ملک میں سڑکوں پر ہرروز درجنوں لاشیں ظلم و بربریت کی داستانیں رقم کر رہی ہوں،لوگ سسک سسک کر مررہے ہوں جہاں ہنسی اورآوازیں صلب کرلی گئی ہوں جہاں پیٹ پالنے کے لیے بچے فروخت کرنے پڑیں،جہاں دھماکوں اور گولیوں کی بازگشت پیچھا نہ چھوڑ رہی ہو اور ضروریات زندگی کے لیے پورا دن قطاریں بنانی پڑے وہاں اتنی فرصت کسے نصیب کہ وہ سوچے کہ کل کیا ہو گا۔ویسے عوام کو چاہیے کہ حاکم وقت کا تہہ دل سے شکرگزار ہو کیونکہدنیا خوف سے مر رہی ہے لیکن پاکستانی عوام کو حکومت نے بنیادی ضروریات زندگی کے حصول کے لیے ایسا الجھا کر اس خوف سے بچائے رکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  ایس ایم ایس کا رجحان

یہ بھی پڑھیے :

One Comment

  1. اعوان صاحب بہت اچھا لگا۔ برائے مہربانی باقاعدگی سے لکھا کریں آپ کے بہت سارے فین ہیں جو ہم سے آپ کے بارے میں پوچھتے ہیں جب آپ غائب ہو جاتے ہیں

  2. اعوان صاحب بہت اچھا لگا۔ برائے مہربانی باقاعدگی سے لکھا کریں آپ کے بہت سارے فین ہیں جو ہم سے آپ کے بارے میں پوچھتے ہیں جب آپ غائب ہو جاتے ہیں

  3. اعوان صاحب بہت اچھا لگا۔ برائے مہربانی باقاعدگی سے لکھا کریں آپ کے بہت سارے فین ہیں جو ہم سے آپ کے بارے میں پوچھتے ہیں جب آپ غائب ہو جاتے ہیں

  4. اعوان صاحب بہت اچھا لگا۔ برائے مہربانی باقاعدگی سے لکھا کریں آپ کے بہت سارے فین ہیں جو ہم سے آپ کے بارے میں پوچھتے ہیں جب آپ غائب ہو جاتے ہیں

  5. YAR BOHAT ACHA LOKHA HAY .ALFAAZ B ACHAY ISTMAAL KIY HAIN.BAS PROOF READING BOHAT ZROORI HAY.OR LAFZ”BAHER HAAL” PE GOOR KRO YE KUCH ZYADA HI ISTMAL KER RAHAY HO .BOHAT ALA.OR LAGATAR LIKHNAY KI KOSHISH KRO BROTHER .LOVE U

  6. YAR BOHAT ACHA LOKHA HAY .ALFAAZ B ACHAY ISTMAAL KIY HAIN.BAS PROOF READING BOHAT ZROORI HAY.OR LAFZ”BAHER HAAL” PE GOOR KRO YE KUCH ZYADA HI ISTMAL KER RAHAY HO .BOHAT ALA.OR LAGATAR LIKHNAY KI KOSHISH KRO BROTHER .LOVE U

  7. great .moka ke munasbat sa lika ha.like it very much.time nkala kra log apka column ka wait kerta rahta han.goooooooooooooooooddddddddddddddddddddddd……………….

  8. great .moka ke munasbat sa lika ha.like it very much.time nkala kra log apka column ka wait kerta rahta han.goooooooooooooooooddddddddddddddddddddddd……………….

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker