پاکستانتازہ ترین

سانحہ کوئٹہ کوایک سال مکمل ملزمان گرفتار نہ ہوسکے

سبی(نمائندہ خصوصی ) سانحہ کوئٹہ کوایک سال مکمل ملزمان گرفتار نہ ہوسکے سانحہ کوئٹہ میں شہیدہونے والوں کی پہلی برسی کے موقع پر سبی بھر میں مکمل شٹرڈان ہرتال تمام کاروباری مراکز بندپویس کا گشت جاری رہا عدالتوں کا بھی بائی کاٹ. تفصیلات کے مطابق سانحہ کوئٹہ کے ایک سال مکمل ہونے ملزماں کی عدم گرفتاری تحقیقات کا مکمل نہ ہونا اور شہدائے سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے سبی بھر میں مکمل یوم سوگ منایا گیا اس مناسبت سے شہر میں عوامی نیشنل پارٹی کی کال پر بی این پی اور انجمن تاجران کی حمایت میں مکمل شٹرڈان ہرتال کی گئی سبی کے تمام کاروباری مراکز بینک ہوٹلز میڈیکل اسٹور سارا دن بند رہے جس کے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اے این پی اور بی این پی کے کارکناں نے یوم سیاہ کی مناسبت سے سیاہ پٹیاں باندھ رکھیں تھی اس موقع پر اے این پی سینٹرل کمیٹی کے ممبر سعید احمد خجک نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں کا کوئی قوم قبیلہ مذہب نہیں یہ ہم سب کے مشترکہ دشمن ہیں حکومت کو چاہیے کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرتے ہوئے واقعہ میں ملوث عناصر کو قانون کے کٹہرائے میں لائے تاکہ شہیدوں کے خون سے انصاف ہوسکے حکومت کی ناہلی ہے کہ ایک سال مکمل ہونے کے باوجود کوئی ملزم گرفتار نہ ہوسکا سانحہ کوئٹہ میں کئی نامور وکلاء اور صحافیوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا جن کی شہادت ہم سب کیلئے المیہ سے کم نہیں ہم سب اللہ تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ شہداء سانحہ کوئٹہ کے لواحقین کو غم برادشت کرنے کا حوصلہ دے اور شہداء کو جوار رحمت میں جگہ عطاء فرمائیں ہمیں ہمت دے تاکہ ہم اپنے وکلاء کی قربانیوں کو رائیگان نہیں جانے دیں اس موقع پر انہوں نے کہا کہ صحافیوں کی شہادت پر بھی افسوس ہے اس موقع پر پولیس سیکورٹی فورسز کی جانب سے گشت کا سلسلہ دن بھر جاری رہا اہم شاہراہوں پر پولیس کی بھاری نفری موجود رہی سانحہ کوئٹہ کے خلاف سبی میں بھی عدالتوں کو وکلاء برادری نے مکمل بائی کاٹ کیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!