تازہ ترینعلاقائی

قصورپنجاب حکومت کسان بھائیوں کی مشکلات سے بخوبی آگاہ ہے، رانامحمداقبال خاں

قصور(حافظ جاوید) سپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال خاں نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کسان بھائیوں کی مشکلات سے بخوبی آگاہ ہے ‘کسانوں کو سبسڈی پر گرین ٹریکٹروں کی فراہمی سے انکی پیداواری استعداد میں اضافہ ہو گا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ضلع کونسل ہال میں محکمہ زراعت قصور کے زیر اہتمام گرین ٹریکٹروں کی کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر ایم این اے ملک رشید احمد خاں ‘ایم پی ایز چوہدری احسن رضا خاں ‘نعیم صفدر انصاری ‘یعقوب ندیم سیٹھی ‘معاون برائے صحت قصور افضال حسین زین ‘ڈی سی او قصور محمد احسن وحید‘ای ڈی او زراعت چوہدری بشیر احمد اور کسانوں کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ سپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال نے کہا کہ پوری دنیا کے غیر جانبدار حلقوں نے حکومت پنجاب کے عوامی منصوبوں جن میں آشیانہ ہاؤسنگ سکیم ‘پنجاب ایجو کیشنل انڈومنٹ فنڈ‘ییلو کیپ سکیم وغیرہ شامل ہیں کی شفافیت اور غیر جانبداری کی تعریف کی ہے ۔ خادم اعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف کی خصوصی ہدایت پر گرین ٹریکٹر سکیم کی کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی ایک شفاف طریقے سے عوامی نمائندگان ‘سرکاری افسرا�آ‘میڈیااور درخواست دہندگان کی موجودگی میں مکمل کی جا رہی ہے تا کہ کوئی شخص اس پر انگلی نہ اٹھا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ زرعی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ‘زرعی آلات اور مشینری کے استعمال میں پنہا ہے ۔ حکومت پنجاب نے حالیہ سالوں میں پنجاب بھر کے کسانوں کیلئے متعدد سکیمیں جن میں زرعی آلات پر پچاس فیصد رعایت ‘پختہ کھالوں کی تعمیر ‘پانی کی بچت کیلئے ڈرپ اریگیشن سسٹم اورخاص طور پر گرین ٹریکٹر سکیم متعارف کروائی ہیں جس کے تحت پنجاب بھر میں 20ہزار ٹریکٹر ز رورل یوتھ کو سبسڈی پر دیئے جائینگے جن میں سے 10ہزار ٹریکٹر موجودہ سال میں فراہم کر دیئے جائینگے ۔ اس موقع پر ڈی سی او قصور نے بتایا کہ آج کی قرعہ اندازی کے ذریعے ضلع قصور میں مجموعی طور پر 274ٹریکٹر زخوش نصیبوں میں دیئے جا رہے ہیں جن میں تحصیل قصور میں 134‘چونیاں میں 66‘پتوکی میں51اور کوٹ رادھا کشن میں 23ٹریکٹر ز شامل ہیں ۔اس موقع پر ای ڈی او زراعت چوہدری بشیر احمد نے حکومت پنجاب کی کسانوں کیلئے گرین ٹریکٹر سکیم کی افادیت پر روشنی ڈالی ۔

یہ بھی پڑھیں  پھولوں نے بھی شعلے اگلے ہیں ۔۔اک برق پہ ہی الزام نہیں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker