پاکستان

فیصل آباد:مسلم لیگ ﴿ن﴾اقتدار میں ہوتی تو آج عوام کو لوڈشیڈنگ و مہنگائی کے عذاب جھیلنے نہ پڑتے ،رانا ثنا اللہ

فیصل آباد ﴿ بیوروچیف ﴾ زرداری اور اسکی کرپٹ ٹیم نے ریلوے ‘ سٹیل ملز ‘ پی آئی اے سمیت دیگر قومی اداروں کوتاہی کے دہانے تک پہنچا دیا ہے اور بے شرمی کی انتہا ہے کہ آئے روز پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافے اور بدترین لوڈشیڈنگ سے عوام کا جینا مشکل کر دیا گیا ہے ۔صوبائی وزیر قانون نے کہا کہ ملک میں بجلی کی کمی نہیں اور 17 ہزار میگاواٹ طلب کے مقابلے میں 22 ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی گنجائش موجود ہے لیکن حکمرانوں کی کرپشن و نااہلی کی وجہ سے پی ایس او کا 200 ارب روپے کا قرضہ بڑھ کر 800 ارب روپے ہو گیا ہے جبکہ رینٹل پاور پلانٹس کے منصوبوں میں سپریم کورٹ کے فیصلے سے بھی وفاقی وزرائ کے کرتوت سامنے آگئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کباڑ خان آمر پرویز مشرف اور کرپٹ زرداری کے حواریوں کو ساتھ ملا کر کس تبدیلی کی بات کرتے ہیں جبکہ اس کے دائیں بائیں جنرل پرویز مشرف کے دور اقتدار اور اس کی پالیسیوں کو جاری رکھنے والے وزرائ خارجہ بیٹھے ہیں جنہوں نے ملک کو ڈورن حملوں‘ امریکی غلامی اور تسلط میں دے رکھا ہے ۔ان خیا لات کا اظہار صوبائی وزیر قانون رانا ثنائ اﷲ خاں نے حمانیہ ٹائون میں پاکستان مسلم لیگ ﴿ن﴾کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہو ں نے مذید کہا ۔ کہ اگر پاکستان مسلم لیگ ﴿ن﴾اقتدار میں ہوتی تو آج عوام کو لوڈشیڈنگ و مہنگائی کے عذاب جھیلنے نہ پڑتے اور اگر وفاقی حکمران میاں محمد نواز شریف کے 10 نکاتی ایجنڈے کو تسلیم کرکے اس پر عملدرآمد کرتے تو بھی آج حالات بہتر ہو سکتے تھے لیکن ان حکمرانوں نے ہوس زر میں عوام کو بے حال اور ملک کو اندھیروں میں ڈبو دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ کے ہر سکول میں نئی عمارتیں ‘ پارکس کی ترقی ‘کاٹن ملز روڈ ‘کالج روڈ ‘ نواباں والا ‘مظفر کالونی روڈ ‘ رحمانیہ روڈ ‘گرلز ڈگری کالج ‘جنرل ہسپتال کی تعمیر اور سرسید ٹائون میں سیوریج منصوبے کی تکمیل سمیت گلیوں کی پختگی ان کے ترقیاتی پروگرام میں نمایاں ہیں جبکہ کچی آبادیوں کے مکینوں کو مالکانہ حقوق کی تیز رفتار فراہمی کا کام بھی جاری ہے ۔ انہوں نے حلقہ کے کارکنوں کی مضبوط اور متحرک ٹیم کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کی اجتماعی قوت کی بدولت کوئی انکے مقابلے میں نہیں ٹھہر سکے گا ۔ کنونشن سے شاہد محمود بیگ ‘ شیخ اعظم یاسین ‘ رانا محبوب عالم ‘ ڈاکٹر مسعود و دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker