تازہ ترینکھیل

پاکستان کرکٹ بورڈکے آئین میں خامیاں ہیں ، راشد لطیف

rashid latifکراچی(نمائندہ سپورٹس)سابق کپتان اور ٹیسٹ وکٹ کیپر راشد لطیف نے کہا ہے کہ پی سی بی آئین کے خلاف میری پہلی پٹیشن کے بعد پی سی بی نے اپنے آئین میں کچھ ترامیم کیں۔ لیکن آئین اب بھی اس طرح جمہوری نہیں ہے۔جس طرح ہونا چاہئے تھا۔ آئین میں جو خامیاں ہیں انہیں دور کرنے کی ضرورت ہے۔ میں کسی فردواحد کے خلاف نہیں ہوں۔ میں چاہتا ہوں کہ نظام فیئر انداز میں کام کرے۔ یادر ہے کہ بدھ کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے نئے آئین کے تحت چوہدری ذکا اشرف اگلے چار سال کے لئے بورڈکے چیئرمین منتخب کیاگیاتھا۔ وہ پی سی بی کی تاریخ میں جمہوری اندازمیں پہلے منتخب چیئرمین ہیں۔ بدھ کو اسلام آباد میں ہونے والے گورننگ بورڈ کے اجلاس میں چوہدری محمد ذکا اشرف کو متفقہ طور پر 2017 تک چیئرمین منتخب کرلیا گیا۔ چیئرمین کے عہدے کے لئے سرپرست اعلی نے دو امیدواروں ذکا اشرف اور ایف سی اے اور لاہور اسٹاک ایکسچینج کے سابق چیئرمین آفتاب احمد خان کو نامزد کیا تھا۔ گورننگ بورڈ کے اراکین نے پیٹرن کے نامزد کردہ اور نامزد کمیٹی کے امیدوار ذکا اشرف کو متفقہ طور پر منتخب کرلیا۔ اس سے قبل پیٹرن نے جسٹس(ر) مولوی انوار الحق جو ایوان صدر سیکرٹریٹ کے لیگل مشیر ہیں اورسیکرٹری ایجوکیشن اینڈ ٹریننگ چوہدری قمر زمان کو نامزد کمیٹی کے لئے رکھا تھا۔ انتخاب سے قبل ذکا اشرف اور آفتاب احمد خان کے انٹرویوز کئے گئے۔ پی سی بی گورننگ بورڈ کے اجلاس میں ذکا اشرف کے علاوہ اراکین نویداکرم چیمہ، شکیل احمد شیخ، محمد رفیق بھگیو، وصال محمد درانی، قیصر خان جمالی، علی مستنصر، مسعود انوار حمید، ہارون رشید، اقبال قاسم، چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد اور چیف فنانشل آفیسر بدر منظور خان نے شرکت کی۔ گزشتہ ماہ آئی سی سی کے صدر ایلن آئزک نے پی سی بی کی آئینی اصلاحات کو سراہا تھا۔ آئی سی سی کی ہدایت پر وزارت قانون نے 13فروری کو پی سی بی کا نیا آئین منظور کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں  پھولنگر:لٹیرے سیاستدانوں نےقومی خزانے کودونوں ہاتھوں سےلوٹا، حاجی محمد رمضان

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker