تازہ ترینعلاقائی

سٹی ٹریفک پولیس کی ناقص منصوبہ بندی کے باعث شہر بھر میں ٹریفک کا نطام درہم برہم ہو گیا

راولپنڈی (ڈپٹی بیورو چیف)سٹی ٹریفک پولیس کی ناقص منصوبہ بندی کے باعث شہر بھر میں ٹریفک کا نطام درہم برہم ہو گیا،ٹریفک مسائل سے اعلی حکام کی عدم توجہی پر شہری سراپا احتجاج بن گئے بند کمرے میں بیٹھے ٹریفک پولیس حکام سے نوٹس لینے کی اپیل کر دی ۔تفصیلات کے مطابق سٹی ٹریفک پولیس راولپنڈی کے وارڈنز کی جانب سے جابجا غیر ضروری ڈائیورژن لگانے سے شہر بھر خصوصاً کینٹ میں ٹریفک نظام مفلوج ہو کر رہ گیا ۔بغیر منصوبہ بندی ٹریفک کو متبادل راستوں پر چلانے سے شہری ذہنی امراض کا شکار ہونے لگے ہیں ،شہریوں کا کہنا ہے کہ وارڈنز بلاسوچے سمجھے سڑکوں کو بند کر کے ٹریفک کو دو کلومیٹر دور سے مڑنے پر مجبور کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے سفر طویل ہونے کے ساتھ ساتھ کسی ایک مقام پر ٹریفک کا رش ہو جاتا ہے ۔ہفتہ کو شہریوں نے مال روڈ چوک کو صدر سے آر اے بازار اور آر اے بازار سے صدر کی جانب جانے والے راستوں کو بند کیا جس سے کارسواروں اور موٹر سائیکل سواروں کو شدید مشکلات پیش آئیں اور آر اے بازار یا پشاور روڈ پر جانے والوں کو ٹی ایم چوک سے مڑ کر واپس آنا پڑا ۔اس صورتحال سے شہریوں نے تنگ آکر موقع پر موجود وارڈنز کو برا بھلا کہا اور ان سے اس کی وجہ پوچھی تو وہ جواب دینے کی بجائے غصہ کرنے لگے اور اپنے حکام سے رابطہ کیی ہدایت کی ۔شہریوں نے وارڈنز کی جانب سے روڈز پر غیر ضروری ڈائیورژن لگانے کے عمل پر شدید تنقید کی اور سٹی ٹریفک پولیس کے خلاف بھرپور احتجاج کرتے ہوئے سی ٹی او خرم شعیب جانباز سے مطالبہ کیا کہ وہ ٹریفک مسائل کے حل کے لیے عملی اقدامات کریں بصورت دیگر اگر انہیں اپنے اس عہدہ سے دلچسپی نہیں ہے تو وہ کسی حقدار کو اس سیٹ پر آنے دیں ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button